پنجاب، بلدیاتی انتخابات دوسرے مرحلے کی تیاریا ں عروج پر

پنجاب، بلدیاتی انتخابات دوسرے مرحلے کی تیاریا ں عروج پر

۔دوسرے مرحلے ایک کروڑ 37 لاکھ 2ہزار107 مرد اور خواتین ووٹرز اپنا حق استعمال کریں گے

لاہور( اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔12 نومبر۔2015ء) صوبہ پنجاب میں دوسرے مرحلے کے لیے 12 اضلاع کے ایک کروڑ 37 لاکھ سے زائد ووٹر تین میونسپل کارپوریشنز، چونسٹھ میونسپل کمیٹیوں اور ایک ہزار سے زائد یونین کونسلز پر امیدواروں کا انتخاب کریں گے۔دوسرے مرحلے میں سرگودھا،ساہی وال،گوجرانوالا، اٹک،جہلم،چنیوٹ،منڈی بہاء الدین،حافظ آباد، میاں والی،ٹوبہ ٹیک سنگھ،شیخوپورہ اور خانیوال شامل ہیں۔

اس مرحلے میں گوجرانوالا ،ساہی و ال اور سرگودھا میں میونسپل کارپوریشنز میں 107 شہری کمیٹیاں بنائی گئیں ہیں جس کے منتخب چیئرمین کارپوریشن کے ممبر بن جائیں گے۔بارہ ڈسٹرکٹ کونسل کے قیام کے لیے 995 یونین کونسل کے چیئرمین ضلع کونسل کے رکن بن جائیں گے تمام یونین کونسل میں وارڈز کی کل تعداد 6ہزار 612 ہے شہری علاقوں میں 64 میونسپل کمیٹیوں میں ممبران کے براہ راست انتخاب کے لیے 1297 وارڈز بنائے گئے ہیں۔

دوسرے مرحلے میں میونسپل کارپوریشن میں شہری کمیٹیوں اور دیہی علاقوں میں قائم ایک ہزار 102 یونین اور شہری کونسل میں چیئر مین وائس چیئرمین کے پینل پر 4 ہزار 306 امیدوار میدان میں ہیں۔ 27 چیئرمین وائس چیئرمین کو پہلے ہی بلا مقابلہ منتخب قرار دیا گیا ہے۔ یونین کونسل اور میونسپل کمیٹیوں میں قائم 7 ہزار 909 وارڈز میں جنرل کونسلرز کو منتخب کرنے کے لیے 23 ہزار238 امیدوار میدان میں ہیں جبکہ 894 جنرل کونسلر پہلے ہی بلا مقابلہ ہو چکے ہیں۔

دوسرے مرحلے کے لیے ان اضلاع میں 11 ہزار 906 پولنگ اسٹیشنز میں 35 ہزار سے پولنگ بوتھ بنائے جائیں گے جہاں پر ایک کروڑ 37 لاکھ 2ہزار107 مرد اور خواتین ووٹرز اپنا حق استعمال کریں گے۔ پنجاب کے دیہی علاقوں میں ایک ووٹر یونین کونسل کے ممبران اورچیئرمین وائس چیئرمین کا انتخاب کریں گے جبکہ شہرمیں میونسپل کمیٹی کی سطح پر وارڈ سے کونسلر کو منتخب کریں گے۔

وقت اشاعت : 12/11/2015 - 19:39:31

متعلقہ عنوان :

اپنی رائے کا اظہار کریں