وہ وقت چلاگیا جب مارشل لا لگتا تھا ، ڈکٹیٹر آتے تھے ، تمام اداروں کو اپنی کارکردگی ..
تازہ ترین : 1

وہ وقت چلاگیا جب مارشل لا لگتا تھا ، ڈکٹیٹر آتے تھے ، تمام اداروں کو اپنی کارکردگی پر توجہ دینی چاہیے ،خورشیدشاہ

کراچی(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔12 نومبر۔2015ء)قومی اسمبلی میں قائد حزب اختلاف سید خورشیداحمد شاہ نے کہا ہے کہ وہ وقت چلاگیا جب مارشل لا لگتا تھا ، ڈکٹیٹر آتے تھے ، تمام اداروں کو اپنی کارکردگی پر توجہ دینی چاہیے ۔ نظام تسلسل کے ساتھ چلے گا تو گورننس میں بہتری آجائے گی ۔ کراچی ایکسپوسینٹرمیں کتب میلے کی افتتاحی تقریب اور میڈیا سے بات چیت میں خورشید شاہ نے کہا کہ نے کہاکہ بہتر ہوتا کہ آرمی چیف وزیراعظم سے ملاقات میں بات کرتے ،کوکمانڈر کانفرنس کے بعد پریس ریلیز جاری ہونے سے بھارت کو بھی یہ پیغام گیا ہے کہ پاکستان میں سویلین اور عسکری قیادت ایک پیج پر نہیں ہیں۔

خورشید شاہ نے کہا کہ جمہوریت کا راستہ روکنے سے ہی ملک پیچھے رہ گیا۔ تمام ادارے اپنی کارکردگی پر توجہ دیں ، نظام میں تسلسل ہوگا تو بہتری آئے گی ۔قائدحزب اختلاف نے عمران خان کو سیاست میں نابالغ قرار دیتے ہوئے کہا کہ ایاز صادق کے مقابلے میں اسپیکر کا امیدوار اتار کر پی ٹی آئی نے ان کا انتخاب درست مان لیا ہے۔انہوں نے کہا کہ عمران خان میچور سیاست دان نہیں انہیں ابھی بہت وقت چاہئے۔قائد حزب اختلاف نے کہا کہ جمہوریت پروان چڑھ رہی ہے اور اس کے لئے تمام سیاستدانوں کو جمہوری رویہ اختیا رکرنا ہوگا۔

وقت اشاعت : 12/11/2015 - 17:00:28

اپنی رائے کا اظہار کریں