ہندوستان میں دیوالی کا تہواربھی مودی سرکار کے خلاف احتجاج بن گیا
تازہ ترین : 1

ہندوستان میں دیوالی کا تہواربھی مودی سرکار کے خلاف احتجاج بن گیا

سابق فوجیوں نے اپنے اعزازات نذرآتش کردیئے،سکھ برادری نے ”سیاہ دیوالی“ منائی

نئی دہلی(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔12 نومبر۔2015ء) ہندوستان میں دیوالی کا تہواربھی مودی سرکار کے خلاف احتجاج بن گیا،سابق فوجیوں نے اپنے اعزازات نذرآتش کردیئے تو دوسری جانب سکھ برادری نے ”سیاہ دیوالی“ منائی جبکہ کانگریس نے انوکھا احتجاج کرتے ہوئے مٹھائی کی بجائے دال بانٹی جو مہاراشٹرا کے وزیراعلیٰ کو بھی بھیجی گئی۔ بین الاقوامی میڈیا کے مطابق رواں برس مختلف احتجاج اور مظاہروں کے باعث میڈیا کی خبروں کی زینت بنا۔

دیوالی کے روز ہی سابق فوجیوں نے ون رینک ون پینشن (او آر او پی) کے خلاف احتجاج کرتے ہوئے اپنے میڈل جلانے کی کوشش کی۔ہندوستانی ٹی وی چینل زی نیوز کی رپورٹ کے مطابق دارالحکومت نئی دہلی میں احتجاج کے دوران سابق فوجیوں نے اپنے میڈل جلانے کی کوشش کی البتہ پولیس نے ان کو ایسا کرنے سے روک دیا۔سابق فوجیوں کے احتجاج کی قیادت کرنے والے میجر جنرل ریٹائرد ستبیر سنگھ نے الزام لگایا ہے کہ ہندوستان کے وزیر دفاع موہر پاریکر اس تمام صورتحال کے ذمہ دار ہیں کیونکہ انہوں نے سابق فوجیوں سے کیا گیا وعدہ پورا نہیں کیا۔

مظاہرین ایوان صدر کے قریب جنتر منتر پر جمع ہوئے تھے اورحکومت کے خلاف شدید نعرے بازی بھی کی، اس موقع پر متعدد سابق فوجیوں نے تمغوں اور اعزازات کو جلا ڈالا جو مختلف مواقع پر ان کی بہادری پر دیئے گئے تھے۔خیال رہے کہ ہندوستان کے سابق فوجی مرکزی حکومت سے پنشن میں اضافے کے حوالے سے مطالبہ کر رہے ہیں،

اسی احتجاج کے دوران سابق فوجیوں نے ستمبر میں 1965 کی جنگ کی یاد میں ہونے والی تقریب کا بھی بائیکاٹ کیا تھا۔

دیوالی کے موقع پر ہی ہندوستان کی اپوزیشن کی سب سے بڑی جماعت کانگریس نے مہنگائی کے خلاف انوکھا احتجاج کیااورلوگوں کو مٹھائی کے بجائے دالیں تقسیم کی گئیں۔ریاست مہاشٹرا کی اسمبلی کی اپوزیشن جماعت کانگریس کے رہنما رادا کرشنا نے بھی وزیر اعلیٰ دیویندرا کو دال کا تحفہ ارسال کیا تاکہ ان کو اپنا احتجاج پہنچا سکیں۔ہندوستانی ریاست مدھیا پردیش میں کانگریس کی جانب سے دیوالی کیمپ لگایا گیا۔

کانگریس کے کارکنوں نے دال کی بڑھتی ہوئی قیمتوں پر احتجاج کے لیے دیوالی پر مٹھائی کے ڈبوں میں دالیں تقسیم کیں۔مٹھائی کی جگہ دال پا کر لوگ اور زیادہ خوش ہو گئے جبکہ دال کے پیکٹس پانے کے لیے لوگوں میں چھینا چھپٹی بھی ہوئی۔ہندوستان میں مہنگائی عروج پر ہے اور دال کی قیمت 200 روپے فی کلو سے بھی تجاوز کر گئی ہے۔ہندوستان میں اقلیتوں کے ساتھ ہونے والی زیادتیوں کی خبریں اب تواتر کے ساتھ میڈیا میں آ رہی ہیں اسی لیے دیوالی پر بھی احتجاج سامنے آیا۔

رپورٹ کے مطابق ہندوستانی ریاست پنجاب میں سکھوں کی مقدس کتاب گرو گرنتھ صاحب کی بے حرمتی کے خلاف احتجاج کرتے ہوئے سکھ برادری سیاہ دیوالی منائی۔ہندووٴں کے روشنیوں کے تہوار پر چراغاں نہیں کیا گیا بلکہ اس روز سیاہ پرچم لہرائے گئے جبکہ مختلف مقامات پر احتجاج بھی کیا گیا۔

مزید متعلقہ خبریں پڑھئیے‎ :

وقت اشاعت : 12/11/2015 - 14:47:10

اپنی رائے کا اظہار کریں