فوج کا اعلامیہ حکومت کے لئے ڈھکے چھپے الفاظ میں واضح پیغام ہے، خورشید شاہ
تازہ ترین : 1
فوج کا اعلامیہ حکومت کے لئے ڈھکے چھپے الفاظ میں واضح پیغام ہے، خورشید ..

فوج کا اعلامیہ حکومت کے لئے ڈھکے چھپے الفاظ میں واضح پیغام ہے، خورشید شاہ

اسلام آباد(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔11 نومبر۔2015ء)قومی اسمبلی میں اپوزیشن لیڈر سید خورشید شاہ نے حکومت پر شدید تنقید کرتے ہوئے کہاہے کہ فوج کا اعلامیہ حکومت کیلئے ڈھکے چھپے الفاظ میں واضح پیغام ہے ‘ امید ہے وزیراعظم اشارہ سمجھ کر کابینہ کو ٹھیک کرینگے جبکہ پختون خوا ملی عوامی پارٹی کے سربراہ محمود خان اچکزئی نے کہا ہے کہ دونوں شریف ایک پیج پر ہونگے تو غیر مشروط حمایت کرینگے ‘ کل کو کچھ ہوا تو سویلین شریف کے ساتھ ہونگے۔

بدھ کو یہاں قومی اسمبلی کا اجلاس اسپیکر سردار ایاز کی زیرصدارت شروع ہوا تو اپوزیشن نے کورم پوا نہ ہونے کی نشاندہی کی ‘ وزرا کی عدم حاضری پر محمود خان اچکزئی ایوان سے علامتی واک آوٴ ٹ کرگئے اس موقع پر اظہار خیال کرتے ہوئے اپوزیشن لیڈر خورشید شاہ نے گزشتہ روز فوج کی جانب سے جاری اعلامیئے پر تبصرہ کرتے ہوئے کہا کہ فوج کا اعلامیہ حکومت اور وزیراعظم کے لئے واضح اشارہ ہے ‘ آرمی چیف نے ڈھکے چھپے الفاظ میں پیغام دیا ہے امید ہے کہ وزیراعظم نواز شریف یہ اشارہ سمجھ کر کابینہ کو ٹھیک کریں گے۔

انہوں نے کہا کہ ڈھائی سال گزرنے کے بعد بھی حکومت نے پارلیمنٹ کوسنجیدہ نہیں لیا ‘ وزیر اعظم نے ایوان میں آنا چھوڑدیا تو وزرا کیوں آئیں گے؟وزرا کی عدم حاضری ایک طرف یہاں بیورو کریٹس بھی سوالوں کے صحیح جواب نہیں دے رہے، ہمارے دور حکومت میں ہمارے وزیراعظم ایوان میں آتے تھے تو ہمیں بھی آنا پڑتا تھا۔خورشید شاہ نے کہاکہ آج قومی اسمبلی میں صرف ایک وزیر موجود ہیں، ڈھائی سال میں حکومت نے پارلیمنٹ کو بھی سنجیدہ نہیں لیا۔

پختونخوا ملی عوامی پارٹی کے سربراہ محمود خان اچکزئی نے بھی ایوان میں اظہار خیال کرتے ہوئے کہا کہ دونوں شریف ایک پیچ پر ہوں گے تو ان کی غیرمشروط حمایت کریں گے اگر کل کچھ ہوا تو ہم سویلین شریف کے ساتھ ہوں گے اور ہم کسی بھی ایسی خارجہ پالیسی کی حمایت نہیں کریں گے جو پارلیمنٹ سے جنم نہیں لیتی۔انہوں نے کہاکہ کہا کہ آئی ایس پی آر کی گزشتہ روز جاری کی گئی پریس ریلیز آئین کی روح کے خلاف ہے اْنھوں نے کہا کہ اس بیان کے بارے میں سپریم کورٹ سے تشریح کروائی جائے۔

محمود خان اچکزئی نے کہا کہ قومی اسمبلی اجلاس میں وزراء کو وقت کا پابند کیا جائے۔محمود خان اچکزئی نے کہاکہ خطے میں جنگی ماحول ہے ’عراق اور لیبیا ختم ہوگیا ہے ادھر داعش کی باتیں ہو رہی ہیں۔اْنھوں نے کہا کہ ان حالات میں پارلیمنٹ کا مشرکہ اجلاس بلا کر اعتماد میں لیا جائے۔تحریک انصاف کے رکن قومی اسمبلی شفقت محمود نے کہا کہ آئی ایس پی آر کا بیان حکومتی نااہلی کی نشاندہی ہے۔شفقت محمود نے کہا کہ حکومت نے ڈھائی سال میں دہشت گردی کے خلاف کام نہیں کیا، حکومت کے لیے آئی ایس پی آر کا بیان لمحہ فکریہ ہے۔تحریک انصاف کے رکن نے مطالبہ کیا کہ حکومت نیشنل ایکشن پلان پر اب تک کے عملدر آمد پر ایوان کو بریفنگ دے۔

وقت اشاعت : 11/11/2015 - 14:47:54

اپنی رائے کا اظہار کریں