فاٹا کی آئینی حیثیت کو متنازعہ بنانا ایک سازش ہے ، عوام کی مرضی کے بغیر کوئی فیصلہ ..
تازہ ترین : 1

فاٹا کی آئینی حیثیت کو متنازعہ بنانا ایک سازش ہے ، عوام کی مرضی کے بغیر کوئی فیصلہ قابل قبول نہیں‘ مولانا سمیع الحق

آزاد قبائل کے قانونی حقوق کی مکمل حمایت کرتے ہیں، قبائل کی قانونی حیثیت پر ان سے ریفرنڈم کرایا جائے‘ سربراہ جے یو آئی (س)

لاہور ( اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔10 نومبر۔2015ء) جمعیت علماء اسلام (س) کے سربراہ مولانا سمیع الحق نے کہا ہے کہ فاٹا کی آئینی حیثیت کو متنازعہ بنانا ایک سازش ہے ، فاٹا کی عوام کی مرضی کے بغیر کوئی فیصلہ قابل قبول نہیں ،حکومت پہلے ان کی اپنے گھروں میں واپسی کو فی الفور اور باعزت طریقہ سے یقینی بنائیں، ہم آزاد قبائل کے قانونی حقوق کی مکمل حمایت کرتے ہیں، قبائل کی قانونی حیثیت پر ان سے ریفرنڈم کرایا جائے۔

ان خیالات کا اظہار انہوں نے جمعیت کی مرکزی مجلس عمومی کے اجلاس کے بعد جامع مسجد کبریٰ لاہور میں پریس کانفرنس میں اجلاس کے فیصلوں کا اعلان کرتے ہوئے کہا ۔اس موقع پر مولانا عبدالرؤف فاروقی، مولانا حامد الحق حقانی، مولانا سید محمد یوسف شاہ، مولانا شاہ عبدالعزیز ،مولانا مفتی حبیب الرحمان درخواستی، مولانا مفتی خالد، مولانا عاصم مخدوم، ظہیر الدین بابر و دیگر دیگر اراکین بھی شریک تھے ۔

اجلاس میں چاروں صوبوں میں تربیتی کنونشنوں کا فیصلہ کیا۔ 22-23-24-25نومبر کو پنجاب کے آٹھ ڈویژنوں میں کنونشن منعقد ہونگے۔ دسمبر میں صوبہ سندھ بلوچستان اور کے پی کے میں کنونشن منعقد ہونگے جسمیں مرکزی قائدین شرکت کرینگے ۔اجلاس میں مولانا ڈاکٹر سید علی شاہ ،میاں انور علی دہلوی ،مولانا عبدالبر ملتان کیلئے دعائے مغفرت کی گئی اور ان کی دینی خدمات پر ان کو خراج تحسین پیش کی گئی ۔

مولانا سمیع الحق نے کہا کہ ہم پاکستان کو سیکولر اور لبرل ریاست بننے نہیں دیں گے ،اسلامی نظام کے نفاذ کی جدوجہد ہمارا آئینی حق ہے جس سے پیچھے نہیں ہٹیں گے ،آج جہادی قوتوں کو دہشت گرد تنظیمیں قراردیا جارہا ہے اگر پاکستان پر برا وقت آیا تو یہی جہادی قوتیں پاکستان کو بچائیں گی ۔مولانا سمیع الحق نے کہا کہ سیکولر سیاسی جماعتوں نے ملک کو نازک موڑ ہر لاکھڑا کیا ہے دینی مدارس کے خلاف آپریشن ،سودی معیشت کا تحفظ ،لبرل پاکستان کا نعرہ مسلم لیگ (ن)اور اس کی اتحادی جماعتوں کی طرف سے نظریاتی ملک اور ایٹمی قوت کی توہین ہے اس کا مقابلہ کریں گے اور اس طرح کی سازشوں کو کامیاب نہیں ہونے دیں گے ،نفاذ شریعت کیلئے جدوجہد کرنے والا دنیا بھر کی قوتوں کی اخلاقی او رسیاسی حمایت جاری رکھیں گے ،آئین پاکستان کی بالادستی اور نفاذ شریعت کے لئے جدوجہد ہمارا آئینی اور قانونی حق ہے ۔

انہوں نے کہا کہ آئین پاکستان ہماری پر امن جدوجہد کی تائید میں ہے ،تمام حکومتی ادارے آئین کا احترا م کرتے ہیں ۔

وقت اشاعت : 10/11/2015 - 19:20:01

متعلقہ عنوان :

اپنی رائے کا اظہار کریں