ایم کیو ایم کو ا ٓرمی آرڈیننس سے اپنے کالے کرتوتوں کے سامنے آنے کا ڈر ہے، متحدہ ..
تازہ ترین : 1
ایم کیو ایم کو ا ٓرمی آرڈیننس سے اپنے کالے کرتوتوں کے سامنے آنے کا ڈر ..

ایم کیو ایم کو ا ٓرمی آرڈیننس سے اپنے کالے کرتوتوں کے سامنے آنے کا ڈر ہے، متحدہ والے فجر کے وقت بولتے ہیں ظہر کے وقت معافی مانگ لیتے ہیں، آرڈیننس میں صرف توسیع کی گئی ہے، بھارت چاہتا ہے پاک چین اقتصادی راہدار ی منصوبہ بند ہو ، دہشتگرد بلوں میں چھپے ہیں ان کا خاتمہ کرناہوگا،ملک کے خلاف بیان دینے والے ملک دشمن ہیں ، ہماری امن کی خواہش کبھی معدوم نہیں ہوگی

وزیر دفاع خواجہ محمد آصف کا قومی اسمبلی میں اظہار خیال

اسلام آباد (اُردو پوائنٹ اخبار تازہ ترین۔ 15 جون۔2015ء) وزیر دفاع خواجہ محمد آصف نے کہا ہے کہ ایم کیو ایم کو ا ٓرمی آرڈینس سے اپنے کالے کرتوتوں کے سامنے آنے کا ڈر ہے، ، متحدہ قومی موومنٹ نے گرفت سے بچنے کیلئے آرمی ترمیمی آرڈیننس میں توسیع کی مخالفت کی، متحدہ والے فجر کے وقت بولتے ہیں ظہر کے وقت معافی مانگ لیتے ہیں، آرڈیننس میں صرف توسیع کی گئی ہے، بھارت چاہتا ہے کہ پاک چین اقتصادی راہدار ی منصوبہ بند ہو ، دہشتگرد بلوں میں چھپے ہیں ان کا خاتمہ کرناہوگا،ملک کے خلاف بیان دینے والے ملک دشمن ہیں ، ہماری امن کی خواہش کبھی معدوم نہیں ہوگی ۔

پیر کو قومی اسمبلی کے اجلاس میں وزیر دفاع خواجہ محمد آصف نے آرمی ترمیمی آرڈیننس 2015 میں توسیع کی قرار داد پیش کی، جسے تمام سیاسی جماعتوں کے متفقہ طور پر منظور کرلیا لیکن متحدہ قومی موومنٹ نے اس کی مخالفت کر دیایم کیوایم کی جانب سے شدید مخالفت کرنے پر وزیر دفاع خواجہ ا ٓصف کا کہنا تھا کہ متحدہ کو پتا ہے کہ قانون کے ہاتھ ان کے گریبان تک پہنچ چکے ہیں اور اس ا ٓرڈیننس سے ان کے کالے کرتوت بھی بے نقاب ہوجائیں گے۔

اس دوران متحدہ اور حکومتی ارکان میں تلخ کلامی بھی ہوئی ۔خواجہ آصف کا کہنا تھا کہ مجھ سے معافی کی بات کرنے والے خود اپنے پاؤں پر کھڑے نہیں رہتے، یہ فجر کے وقت بات کرتے ہیں اور ظہر میں معافی مانگ لیتے ہیں اس موقع پر وزیر خزانہ اسحاق ڈار نے وضاحت کرتے ہوئے کہا کہ قرارداد پہلے پیش ہوئی تھی اب صرف توسیع کی گئی ہے۔حکومتی ارکان سے تلخ کلامی کے بعد ایم کیو ایم کے ارکان اجلاس سے واک ا ٓؤٹ کرگئے جس کے بعد پارلیمنٹ ہاؤس کے باہر میڈیا سے بات کرتے ہوئے ایم کیوایم کے رہنما رشید گوڈیل نے کہا کہ ا ٓرڈیننس میں توسیع کی وجہ نہیں بتائی گئی ہے جب کہ ایوان میں معمول کی کارروائی معطل ہے اس لیے آرڈیننس نہیں آسکتا اور میں نے صرف رولز کی بات کی تو خواجہ آصف کے اندر کا آدمی باہر آگیا، سیالکوٹ کے لوگ جانتے ہیں کون کل کیا تھا اور ا ٓج کیا ہے، ہمیں وہ وقت بھی یاد ہے جب یہ لوگ معافیاں مانگتے پھرتے تھے۔

اس موقع پر تحریک انصاف کی رہنما شیریں مزاری کا کہنا تھا کہ قومی اسمبلی کا اجلاس جاری ہے تو پھر آرڈیننس کیوں ا ٓرہے ہیں۔ جس پرخواجہ محمد آصف نے کہا کہ گرفت سے بچنے کیلئے متحدہ قومی موومنٹ نے قرار داد کی مخالفت کی ہے، انہیں معلوم ہے کہ قانون کے ہاتھ ان کے گریبانوں تک پہنچ جائیں گے، یہ فجر کے وقت بولتے ہیں اور ظہر کے وقت معافی مانگ لیتے ہیں۔

انہوں نے کہا کہ آرمی آرڈیننس میں تو صرف 120دن کی توسیع کی جا رہی ہے۔ خواجہ آصف نے کہا کہ ایم کیو ایم سیاسی بنیاد پر مخالفت کر رہی ہیں انہیں خطرہ ہے کہ ان کے کالے کرتوت سامنے آئیں گے۔ بھارت چاہتا ہے کہ پاک چین اقتصادی راہدار ی منصوبہ بند ہو ، دہشتگرد بلوں میں چھپے ہیں ان کا خاتمہ کرناہوگا،ملک کے خلاف بیان دینے والے ملک دشمن ہیں ، ہماری امن کی خواہش کبھی معدوم نہیں ہوگی

مزید متعلقہ خبریں پڑھئیے‎ :

وقت اشاعت : 15/06/2015 - 22:20:43

اپنی رائے کا اظہار کریں