جرمن چانسلر انجیلامرکل کا کمپیوٹر سائبر حملے کی زد میں آنے کا انکشاف
تازہ ترین : 1

جرمن چانسلر انجیلامرکل کا کمپیوٹر سائبر حملے کی زد میں آنے کا انکشاف

برلن(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔14 جون۔2015ء) جرمنی کی خاتون چانسلر انجیلا مرکل کے قانون سازی بارے آفس کا کمپیوٹر بھی سائبر حملے کی زد میں آنے کا انکشاف ہوا ہے۔ یہ بات ایک جرمن اخبار نے بتائی ہے ۔ سائبر حملہ مئی میں کیا گیا جب ملک کے ایوان زیریں کو نشانہ بنایا گیا تھا۔ روزنامہ بلڈ نے اپنی رپورٹ میں ذرائع کا حوالہ نہ دیتے ہوئے کہا کہ یہ سائبر حملہ قبل ازیں توقع کئے جانے والے سے کہیں زیادہ اور وسیع تھا اور بونڈسٹک نے اسے کنٹرول کرنے کی کوشش کی۔

اس حملے نے مرکل کے بونڈسٹک دفتر میں رکھے گئے ایک کمپیوٹر کو متاثر کیا۔ بلڈ کا کہنا ہے کہ یہ کمپیوٹر ان کمپیوٹروں میں شامل تھا جن پر ٹروجن ہارس قسم کے حملے کا پتہ چلایا گیا تھا۔ جریدہ کے مطابق یہ پتہ جمعے کو لگا، حکام کو معلوم ہوا کہ بونڈسٹک میں پانچ کمپیوٹروں پر ٹروجن ہارس سافٹ ویئر پایا گیا ہے۔ مرکل کی کنزرویٹو سی ڈی یو بلاک کے ترجمان نے جریدے کو بتایا کہ وہ اس خبر کی تردید کا تصدیق نہیں کر سکتا۔ فوری طور پر یہ معلوم نہیں ہو سکا کہ سائبر اٹیک کا ذمہ دار کون ہے۔ مرکل کی سرکاری ویب سائٹ کے علاوہ حکومتی اور بنڈس کی ویب سائٹ ایک آن لائن اٹیک میں جنوری میں بلاک ہو گئی تھی، جس کی ذمہ داری روس نواز گروپ نے قبول کی تھی۔

وقت اشاعت : 14/06/2015 - 21:01:05

اپنی رائے کا اظہار کریں