حکومت کا رمضان میں ’ریلیف پیکج‘ دینے کا فیصلہ
تازہ ترین : 1
حکومت کا رمضان میں ’ریلیف پیکج‘ دینے کا فیصلہ

حکومت کا رمضان میں ’ریلیف پیکج‘ دینے کا فیصلہ

اسلام آباد(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔14جون۔2015ء)حکومت نے ماہ رمضان المبارک کے دوران ملک بھر کے یوٹیلیٹی اسٹورز پر فروخت ہونے والی روز مرہ استعمال کی 18 ضروری اشیاء پر ڈیڑھ ارب روپے کی سبسڈی دینے کا فیصلہ کیا ہے۔ نجی ٹی وی کے مطابق وفاقی حکومت نے اس سبسڈی کو ’رمضان ریلیف پیکج 2015ء‘ کا نام دیا ہے جس پر پہلی رمضان المبارک یا 17 اور 18 جون سے عمل درآمد شروع ہوگا۔

یوٹیلٹی اسٹورز کارپوریشن کے حکام کا کہنا ہے کہ کابینہ کی اقتصادی رابطہ کمیٹی کی جانب سے منظور کردہ رمضان ریلیف پیکج 2015ء چاند رات تک جاری رہے گا۔ حکام کے مطابق پیکج پرعمل درآمد کیلئے تیاری آخری مراحل میں داخل ہوچکی ہے جو کہ ملک بھر کے تمام چھ ہزار یوٹیلٹی اسٹورز پر فروخت ہونے والی 18 اشیاء پرسبسڈی کی صورت میں دی جائیگی۔ حکام نے بتایا ہے کہ رمضان المبارک کے دوران یوٹیلٹی اسٹورز پر فروخت ہونے والی چینی پر فی کلو پانچ روپے کی سبسڈی دینے کا فیصلہ کیا گیا ہے۔

رمضان ریلیف پیکچ کے تحت گھی، تیل پر فی کلو آٹھ روپے، دال چنا، دال مونگ، دال مسور، سفید چنا، بیسن اور کھجور پر دس روپے فی کلو سبسڈی دی جائیگی۔ اسی طرح باستمی چاول، سہلا چاول اور ٹوٹا چاول پر فی کلو پانچ روپے سبسڈی جبکہ بلیک چائے پر فی کلو پچاس روپے اور مشروبات کے 1500 ملی لیٹر پر دس روپے سبسڈی دی جارہی ہے۔ پیکچ کے تحت فی لیٹر دودھ پر دس روپے اور مصالحہ جات پر دس فیصد سبسڈی دی جائیگی۔ حکام کا کہنا ہے کہ رمضان ریلیف پیکچ کے تحت سیل کا ہدف بیس ارب روپے مقرر کیا گیا ہے تاہم مجموعی سیل 15 سے 18 ارب روپے ہوسکتی ہے۔

وقت اشاعت : 14/06/2015 - 20:14:14

اپنی رائے کا اظہار کریں