ڈسکہ واقعہ ظلم کی بڑی داستان اور پولیس گردی کی واضح مثال ہے‘فرح اعجاز
تازہ ترین : 1

ڈسکہ واقعہ ظلم کی بڑی داستان اور پولیس گردی کی واضح مثال ہے‘فرح اعجاز

اقوام متحدہ اور عالمی ادارے روہنگیا مسلمانوں کو ان کے جائز حقوق دلائیں

لاہور(اُردو پوائنٹ اخبار تازہ ترین۔ 12 جون۔2015ء) پنجاب بار کونسل اور سپریم کورٹ بار کے عہدیداروں نے اپنے اعزاز میں منعقدہ استقبالیہ تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کہا ہے کہ ڈسکہ واقعہ نے لاقانونیت کے خلاف وکلاء کوایک بار پھر متحد کر دیا ہے،ملک بھر کی وکلاء برادری مظلوم روہنگیا مسلمانوں پر ظلم و تشددکی بھر پور مذمت کرتی ہے۔ چنیوٹ میں پنجاب بار کونسل کے ممبر غلام عباس نسوانہ کی جانب سے سپریم کورٹ بار اور پنجاب بار کونسل کے عہدیداروں کے اعزاز میں استقبالیہ تقریب منعقد کی گئی۔

استقبالیہ تقریب سے خطاب کرتے ہوئے پنجاب بار کونسل کی وائس چیئرمین فرح اعجاز نے کہا کہ ڈسکہ واقعہ ظلم کی بڑی داستان اور پولیس گردی کی واضح مثال ہے۔انہوں نے کہا کہ روہنگیا مسلمانوں پر ظلم و بربریت پر کسی طرح خاموش نہیں رہ سکتے۔اقوام متحدہ اور عالمی ادارے روہنگیا مسلمانوں کو ان کے جائز حقوق دلائے۔استقبالیہ تقریب سے سپریم کورٹ بار کے عہدیداروں نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ بھارتی وزیراعظم کی شرانگیزی خطے کے امن کو ثبوتاڑ کرنے کی کوشش ہے ۔

استقابلیہ تقریب سے خطاب کرتے ہوئے ڈسپلنری کمیٹی پنجاب بار کونسل کے چئیرمین غلام عباس نسوانہ نے کہا کہ ڈسکہ میں پولیس گردی کا معاملہ ہو ہو یا دنیا کے مظلوم روہنگیا مسلمانوں کا قتل عام وکلاء ایسے مظالم پر خاموش نہیں رہ سکتے۔انہوں نے کہا کہ ڈسکہ کے مقتولین کے ورثہ کو انصاف ملنے اور روہنگیا مسلمانوں پر بدھوں کے ظلم و تشدد کے خاتمے تک وکلاء چین سے نہیں بیٹھیں گے۔اس موقع پر غلام عباس نسوانہ نے وکلاء رہنماوں اور عہدیداروں کو چنیوٹ آمد پر ان کا تہہ دل سے شکریہ ادا کیا اور تمام وکلا کو خوش آمدید کہا۔

مزید متعلقہ خبریں پڑھئیے‎ :

وقت اشاعت : 12/06/2015 - 16:39:03

متعلقہ عنوان :

اپنی رائے کا اظہار کریں