جماعةالدعوة پاکستان کی اپیل پر بھارتی دھمکیوں کیخلاف کل ملک گیر سطح پر یوم احتجاج ..
تازہ ترین : 1

جماعةالدعوة پاکستان کی اپیل پر بھارتی دھمکیوں کیخلاف کل ملک گیر سطح پر یوم احتجاج منایا جائیگا

علماء کرام نریندر مودی کے پاکستان کو دولخت کرنے کے اعترافی بیان اور بھارتی دھمکیوں کو خطبات جمعہ کا موضوع بنائیں گے

لاہور(اُردو پوائنٹ اخبار تازہ ترین۔ 11 جون۔2015ء) جماعةالدعوة پاکستان کی اپیل پر بھارتی دھمکیوں کے خلاف جمعہ کو ملک گیر سطح پر یوم احتجاج منایا جائے گا۔لاہور، اسلام آباد، ملتان، کراچی، کوئٹہ، فیصل آباد، گوجرانوالہ اور پشاور سمیت چاروں صوبوں و آزاد کشمیر میں ضلعی سطح پر احتجاجی مظاہرے کئے جائیں گے اور ریلیاں نکالی جائیں گی۔ حافظ محمد سعید کی اپیل پر علماء کرام نریندر مودی کے پاکستان کو دولخت کرنے کے اعترافی بیان اور بھارتی دھمکیوں کو خطبات جمعہ کا موضوع بنائیں گے اور مذمتی قراردادیں پاس کی جائیں گی۔

جماعةالدعوة کی طرف سے احتجاجی مظاہروں اور ریلیوں میں ملک بھر کی دیگر مذہبی و سیاسی جماعتوں کے قائدین کو بھی شرکت کی دعوت دی گئی ہے۔امیر جماعةالدعوة پاکستان پروفیسر حافظ محمد سعید نے کہا ہے کہ بھارت پاک چین راہداری منصوبہ اور کشمیر میں تحریک آزادی کو دن بدن مضبوط ہوتا دیکھ کر سخت بوکھلاہٹ کا شکار ہے‘ یہی وجہ ہے کہ وہ پاکستان کو گیدڑبھبھکیاں لگانے میں مصروف ہے۔

آج جمعہ کے دن ملک میں ہونے والے مظاہروں اور ریلیوں سے ہم بھارتی دھمکیوں کے خلاف بھرپور تحریک کا آغاز کر رہے ہیں۔ تمام مذہبی و سیاسی جماعتوں پر مشتمل نظریہ پاکستان رابطہ کونسل بھی تشکیل دی جارہی ہے ۔ اس سلسلہ میں رابطوں کیلئے حافظ عبدالرحمن مکی کی سربراہی میں پانچ رکنی کمیٹی بھی تشکیل دے دی گئی ہے۔ انہوں نے کہاکہ بھارت نے برما میں گھس کر کارروائی کر کے دنیا کا ردعمل چیک کرنے کی کوشش کی ہے۔

حقیقت یہ ہے کہ انڈیا اس وقت سخت بوکھلاہٹ کا شکار ہے اور اس پر جنون طاری ہے۔بھارتی حکمرانوں کو کچھ سجھائی نہیں دے رہا کہ انہیں کرنا کیا ہے؟ وہ چاہتے ہیں کہ جس طرح امریکہ ڈرون حملے کرتا ہے وہ بھی ہمسایہ ملکوں میں گھس کر کاروائیاں کرناشروع کردے لیکن اسے یہ بات ضرور یاد رکھنی چاہیے کہ پاکستان اللہ کے فضل و کرم سے ایٹمی قوت ہے اور بھارتی جارحیت کامنہ توڑ جواب دینا جانتا ہے۔

حافظ محمد سعید نے کہاکہ بھارتی وزیر اعظم نریندر مودی سے پہلے ان کے وزیر دفاع اور وزیرخارجہ کے بیانات بھی پاکستان دشمنی پر مشتمل تھے۔ جب پاک چین راہداری کا منصوبہ سامنے آیا تو اسے انڈیا کی جانب سے ناقابل برداشت قرار دیا گیا۔ اسی طرح بھارت افغانستان میں بیٹھ کر پاکستان میں تخریب کاری و دہشت گردی کی آگ بھڑکا رہا ہے۔ مودی نے دورہ بنگلہ دیش کے دوران ڈھاکہ میں واجپائی کا ایوارڈ وصول کرتے وقت جو باتیں کیں انہیں کسی صورت نظر انداز نہیں کیاجاسکتا۔

انہوں نے کہاکہ ہم جلسوں، کانفرنسوں اور اجتماعات کے ذریعے عوام الناس میں زبردست بیداری کا ماحول پیدا کریں گے۔ 1972ء میں ہم نے بنگلہ دیش نامنظور تحریک چلائی اور کہا تھا کہ بھارتی فوجی قبضہ کی بنا پر بنائے جانے والے بنگلہ دیش کو تسلیم نہ کیا جائے کیونکہ یہ اس کی دہشت گردی کو جواز فراہم کرنے کے مترادف ہو گا۔ آج ایک بار پھر ملک میں اسی انداز میں تحریک اٹھانے کی ضرورت ہے۔`

وقت اشاعت : 11/06/2015 - 18:02:10

متعلقہ عنوان :

اپنی رائے کا اظہار کریں