صوبے میں 80 ہزار مزید سکول ٹیچرز کو بھرتی کیا جارہا ہے تاکہ پنجاب میں100 فیصد خواندگی ..
تازہ ترین : 1
صوبے میں 80 ہزار مزید سکول ٹیچرز کو بھرتی کیا جارہا ہے تاکہ پنجاب میں100 ..

صوبے میں 80 ہزار مزید سکول ٹیچرز کو بھرتی کیا جارہا ہے تاکہ پنجاب میں100 فیصد خواندگی کا ہدف حاصل کیا جاسکے‘ مجتبیٰ شجاع الرحمن

لاہور ( اُردو پوائنٹ تازہ ترین اخبار۔ 16جنوری 2014ء)وزیر ایکسائز و ٹیکسیشن ، خزانہ پنجاب مجتبیٰ شجاع الرحمن نے کہا ہے کہ صوبائی حکومت نے گزشتہ دور میں 75ہزار سکول ٹیچرز شفاف طریقے سے بھرتی کئے اور 80 ہزار مزید سکول ٹیچرز کو بھرتی کیا جارہا ہے تاکہ پنجاب میں100 فیصد خواندگی کا ہدف حاصل کیا جاسکے، برطانوی ادارے ڈی ایف آئی ڈی کی جانب سے 351ملین روپے کی امداد سے سرکاری سکولوں میں 15ہزار نئے کلاس رومز تعمیر کئے جائیں گے۔

نجی سکول کی تقریبِ تقسیم انعامات سے خطاب کرتے ہوئے مجتبیٰ شجاع الرحمن نے کہا کہ پنجاب حکومت صوبہ میں شعبہ تعلیم خصوصا ہائر ایجوکیشن کو اپ گریڈ کرنے کے لئے جامع پالیسی پر کام کر رہی ہے اور موجودہ مالی سال کے دوران 244ارب روپے تعلیم کے شعبے پر خرچ کئے جائیں گے جو کہ پنجاب کے بجٹ کا 26 فیصد ہے۔ انہوں نے کہا کہ گزشتہ پانچ سال کے دوران پنجاب میں 101نئے کالج تعمیر کئے گئے جبکہ 96کالجوں میں عدم دستیاب سہولتیں فراہم کی گئیں ۔

انہوں نے کہا کہ آئندہ پانچ برسوں میں 82نئے کالجز کے قیام کی منصو بہ بندی کرلی گئی ہے جبکہ 68مزید کالجوں میں ایک ارب47کروڑ روپے کی لاگت سے عدم دستیاب سہولتیں دی جائیں گی۔ انہوں نے کہا کہ کامرس کالجوں کے مختلف منصوبوں کے لیے 17کروڑ50لاکھ روپے جبکہ نئی یونیورسٹیوں کے لیے 26کروڑ 60لاکھ روپے مختص کئے گئے ہیں۔ مجتبیٰ شجاع الرحمن نے کہا کہ حکومت پنجاب نے صوبے کے 55ہزار سرکاری سکولوں میں بچوں کو مفت کتابیں فراہم کرنے کی بجائے کمپیوٹرائزڈ ٹیبلٹس فراہم کرے گی جن میں تمام نصابی کتب اپ لوڈ کرنے کی سہولت ہوگی اور دیہات کی سطح تک تمام سکولوں میں طلبا و طالبات کو یہ ٹیبلٹس حکومت کی جانب سے مفت فراہم کئے جائیں گے۔

انہوں نے کہا کہ موجودہ مالی سال کے دوران 12 ارب روپے کے پنجاب ایجوکیشن انڈومنٹ فنڈ سے 50 ہزارسے زائد طلباء کو وظائف دیئے جا رہے ہیں۔انہوں نے کہا کہ جہالت اور غربت کے خاتمے کے لئے معیاری و جدید تعلیم کا فروغ ضروری ہے اور وزیر اعلی پنجاب محمد شہباز شریف نے ملک کی تاریخ میں پہلی مرتبہ میرٹ پالیسی کو اپناتے ہوئے اقدامات اٹھائے ہیں۔

مزید متعلقہ خبریں پڑھئیے‎ :

وقت اشاعت : 16/01/2014 - 17:28:35

متعلقہ عنوان :

اپنی رائے کا اظہار کریں