کراچی میں آخری دہشتگرد کی موجودگی تک آپریشن جاری رکھا جائے گا،شرجیل انعام میمن ..
تازہ ترین : 1

کراچی میں آخری دہشتگرد کی موجودگی تک آپریشن جاری رکھا جائے گا،شرجیل انعام میمن ،فورسز کے عزم جواں ہیں ،دہشتگردوں کے خلاف برسر پیکار ہیں،کسی کو کراچی میں چھپنے کی اجازت نہیں دی جائے گی ،وزیر اطلاعات سندھ،ڈی ایس پی بہاؤالدین بابر ایک نڈر، بیباک اور بہادر پولیس آفیسر تھے ،بہادری کو کبھی نہیں بھولا جائے گا،فاتحہ سوئم میں شرکت کے بعد میڈیا سے گفتگو

کراچی(اُردو پوائنٹ اخبار تازہ ترین۔2 جنوری ۔2014ء) سندھ کے وزیر اطلاعات و بلدیات شرجیل انعام میمن نے کہا ہے کہ کراچی میں دہشتگردوں کو کسی حال میں نہیں بخشا جائے گا۔ ہماری فورسز کے عزم جواں ہیں اور وہ دہشتگردوں کے خلاف برسر پیکار ہیں۔ کراچی میں آخری دہشتگرد کی موجودگی تک آپریشن جاری رکھا جائے گا اور کسی کو کراچی میں چھپنے کی جگہ نہیں دی جائے گی۔

ڈی ایس پی بہاؤالدین بابر ایک نڈر، بیباک اور بہادر پولیس آفیسر تھے اور ان کی بہادری کو کبھی نہیں بھولا جائے گا۔ وزیر اعلیٰ سندھ کی ہدایت پرشہید بہاؤالدین بابر کے دو بیٹوں کو پولیس میں اے ایس آئی کی پوسٹ، ان کے اہل خانہ کو 20لاکھ روپے اور سرکاری پلاٹ دیا جائے گا۔ شہید ڈی ایس پی کے قاتلوں کے قریب پہنچ چکے ہیں اور جلد انہیں کیفر کردار تک پہنچادیا جائے گا۔

ان خیالات کا اظہار انہوں نے گذشتہ روز میٹروول سائٹ میں دہشتگردی کے واقعہ میں شہید ہونے والے ڈی ایس پی بہاؤالدین بابر کے فاتحہ سوئم میں شرکت اور بعد ازاں میڈیا سے بات چیت کرتے ہوئے کیا۔ اس موقع پر آئی جی سندھ محمد شاہد، ایڈیشنل آئی جی کراچی شاہد حیات اور پولیس کے دیگر اعلیٰ افسران بھی ان کے ہمراہ موجود تھے۔ صوبائی وزیر نے شہید بہاؤالدین بابر کے صاحبزادوں اور ان کے رشتہ داروں سے تعزیت کی اور فاتحہ خوانی کی۔

اس موقع پر میڈیا سے بات چیت کرتے ہوئے شرجیل انعام میمن نے کہا کہ دہشتگردوں نے بزدلانہ اور شرمناک کارروائی کی ہے۔ انہوں نے کہا کہ شہید بہاؤالدین بابر ایک نڈر اور بہادر پولیس آفیسر تھے اور ان کی شہادت سے سندھ پولیس اور ایماندار اور محنتی و فرض شناش آفیسر سے محروم ہوگئی ہے اور ان کی خدمات کو کبھی نہیں بھلایا جاسکے گا۔ انہوں نے کہا کہ شہید بہاؤالدین بابرکے قاتلوں تک پولیس پہنچ چکی ہے اور جلد انہیں کیفر کردار تک پہنچا دیا جائے گا۔

انہوں نے کہا کہ کراچی میں دہشتگردوں کے خلاف شروع کئے گئے آپریشن کے بعد کراچی میں جرائم کی شرح میں خاطر خواہ کمی ہوئی ہے اور یہ آپریشن شہر میں آخری دہشتگرد کی موجودگی تک جاری رکھا جائے گا۔ ایک سوال کے جواب میں انہوں نے کہا کہ ہماری فورسزکے حوصلے پست نہیں ہیں اور وہ دہشتگردوں، بھتہ خوروں اور ٹارگٹ کلرز کے خلاف اپنی جنگ جاری رکھے ہوئے ہیں،۔

انہوں نے کہا کہ دہشتگرد فورسز کو نشانہ بنا کر ان کے حوصلے پست نہیں کرسکتی۔ انہوں نے کہا کہ وزیر اعلیٰ سندھ نے بھی شہید بہاؤالدین بابر کے واقعہ کا فوری نوٹس لیا ہے اور انہوں نے ان کے دو صاحبزادوں کو پولیس میں اے ایس آئی کی پوسٹ جبکہ اہل خانہ کو 20لاکھ روپے کی مالی معاونت اور سرکاری پلاٹ دینے کا اعلان کیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ یہ کسی کی زندگی کا بدل نہیں ہے لیکن ہم اپنی فورسز کے جوانوں کے ساتھ کھڑے ہیں اور آج ہم سب کی یہاں موجودگی اس بات کی دلیل ہے۔

ایک اور سوال کے جواب میں انہوں نے کہا کہ ہماری فورسز نے بدنام زمانہ ٹارگٹ کلرز، بھتہ خوروں اور دہشتگردوں کے خلاف ایکشن لیا ہے اور یہ ایکشن آخری دہشتگرد کی موجودگی تک جاری رہے گا۔ اس موقع پر آئی جی سندھ اور ایڈیشنل آئی جی نے کہا کہ پولیس اور فورسز کے جوان آج بھی دہشتگردوں، بھتہ خوروں اور ٹارگٹ کلرز کے خلاف برسر پیکار ہے۔ انہوں نے کہا کہ پولیس اور فورسز پر حملے آپریشن میں جرائم پیشہ افراد کے نیٹ ورک کو توڑنے کا ردعمل ہے۔

انہوں نے کہا کہ پولیس اور فورسز کے لوگ شہر کے تمام علاقوں میں رہائش پذیر ہیں اور ان کی نقل و حمل کا سلسلہ بھی جاری رہتا ہے اور اس کا فائدہ اٹھاتے ہوئے جرائم پیشہ عناصر ان کا نشانہ بناتے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ پولیس کو بلٹ پروف جیکٹس، بکتر بند گاڑیاں اور جدید اسلحہ کی فراہمی کا سلسلہ جاری ہے اور کئی منصوبے اس وقت پائپ لائن میں ہیں اور جلد انہیں مکمل کرلیا جائے گا جبکہ کراچی کے تمام اضلاع میں پولیس کی رہائشی کالونیاں بھی بنائی جائیں گی تاکہ ان کو اپنی ڈیوٹیوں تک پہنچنے میں مشکلات کا سامنا نہ کرنا پڑے اور جرائم پیشہ افراد سے انہیں بچایا جاسکے۔

وقت اشاعت : 02/01/2014 - 23:31:45

اپنی رائے کا اظہار کریں