کہوٹہ کے شہری ٹریفک جام کی وجہ سے ذہنی مریض بن گئے
تازہ ترین : 1

کہوٹہ کے شہری ٹریفک جام کی وجہ سے ذہنی مریض بن گئے

راولپنڈی ۔ (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 21 جنوری2018ء) کہوٹہ کے شہریوں نے ٹریفک جام کی اذیت سے تنگ آکرحکام سے ٹھوس اقدامات کا مطالبہ کر دیا اور کہاکہ چوکوں ،چوراہوں میں ٹریفک وارڈنز کی تعیناتی یقینی بنائی جائے ۔کہوٹہ کے شہریوں مامون عباسی ،ماجد عباسی ،احمد ،خالد و دیگر نے اے پی پی سے بات چیت کرتے ہوئے بتایاکہ کہوٓٹہ کی اکثر سڑکوں پر ہر وقت ٹریفک جام کے مناظر دیکھنے کو ملتے ہیں جس سے نہ صرف شہریوں کا قیمتی وقت ضائع ہوتا ہے بلکہ انہیں شدید ذہنی کوفت کا بھی سامنا کرنا پڑتا ہے ۔

شہریوں نے بتایاکہ کلر چوک ،پنجاڑ چوک ،چھنی بازار ،مٹور چوک اور ملحقہ علاقوں میں ٹریفک جام کی وجہ سے شہریوں خصوصاً خواتین اور طلباء و طالبات کے لیے شدید ترین مشکلات لاحق ہیں اور ٹریفک جام کی وجہ سے ایمبولینسیں ،دفاتر جانے والے مر د و خواتین بے بس ہو کر رہ جاتے ہیں ۔ایک تاجر نے اے پی پی کو بتایاکہ تجارتی مراکز میں پارکنگ کی ناکافی سہولیات اور ٹریفک جام کی وجہ سے کاروباری سرگرمیاں تباہ ہو کر رہ گئی ہیں ۔شہریوں نے اے پی پی کو بتایاکہ چوکوں چوراہوں میں ٹریفک وارڈنز کی عدم موجودگی کی وجہ سے پبلک ٹرانسپورٹرز نے قوانین کی خلاف ورزی کو معمول بنا رکھا ہے جس سے ٹریفک جام کے مسائل سنگین تر ہو گئے ہیں اور شہری ذہنی مریض بن کر رہ گئے ہیں ۔

مزید متعلقہ خبریں پڑھئیے‎ :

وقت اشاعت : 21/01/2018 - 20:03:56

اس خبر پر آپ کی رائے‎

متعلقہ عنوان :