رکن اسمبلی اور وزیر اعلیٰ پرویز خٹک کے مشیر سورن سنگھ کو فائرنگ کر کے قتل کر دیا
تازہ ترین : 1

رکن اسمبلی اور وزیر اعلیٰ پرویز خٹک کے مشیر سورن سنگھ کو فائرنگ کر کے قتل کر دیا

صدر، وزیراعظم، چیئرمین پی ٹی آئی، وزیراعلیٰ،گورنر،امیر جماعت اسلامی سمیت دیگر سیاسی قائدین کی رکن اسمبلی کے قتل کی شدید الفاظ میں مذمت

پشاور(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔22 اپریل۔2016ء) پیر بابا کے علاقے میں تحریک انصاف کے رکن اسمبلی اور وزیر اعلیٰ پرویز خٹک کے مشیر سورن سنگھ کو فائرنگ کر کے قتل کر دیا گیا،وزیراعلیٰ،گورنر،سراج الحق ،آفتاب شیر پاؤ،امیر حیدر ہوتی سمیت دیگر سیاسی قائدین نے رکن اسمبلی کے قتل کی شدید الفاظ میں مذمت کی ہے ،پیربابا پولیس کے مطابق رکن اسمبلی اور وزیراعلیٰ پرویزخٹک کے مشیرسورن سنگھ پیربابا میں واقع اپنے گھرجارہے تھے کہ موٹر سائیکل پر سوار دو نامعلوم ملزمان نے ان پر فائرنگ کر دی جس کے نتیجے میں وہ موقع پرجاں بحق ہوگئے،پولیس کے مطابق سورن کو ایک گولی سرپرلگی،واقعہ کے بعد پولیس نے علاقے کو گھیرے میں لیتے ہوئے سرچ آپریشن شروع کردیا ہے تاہم آخری اطلاعات آنے تک کسی قسم کی گرفتارعمل میں نہیں لائی گئی،سورن سنگھ خیبرپختونخوا اسمبلی کے سرگرم رکن تھے،جبکہ اقلیتی امور کے محکمے میں وزیراعلیٰ کے معاون خصوصی بھی تھے۔

سردار سورن سنگھ کا تعلق خیبر پختونخوا کے ضلع بونیر سے تھا،، وہ 2013 کے عام انتخابات میں اقلیتوں کی مخصوص نشست پر تحریک انصاف سے ر کن صوبائی اسمبلی منتخب ہوئے تھے۔ سورن سنگھ کی صوبے کی اقلتیوں کے حقوق کی لیے بڑی خدمات تھیں۔صدرممنون حسین، وزیراعظم محمد نواز شریف، تحریک انصاف کے چیئرمین عمران خان ،وزیر اعلی خیبر پختونخوا پرویز خٹک ،گورنر خیبر پختونخوا اقبال ظفر جھگڑا ،جماعت اسلامی کے امیر سراج الحق ، قومی وطن پارٹی کے آفتاب شیر پاؤ اے این پی کے صوبائی صدر امیرحیدرخان ہوتی اور دیگر سیاسی قائدین نے سورن سنگھ کے قتل کی شدید الفاظ میں مذمت کی۔

وزیر اعلی کا کہنا تھا کہ سورن سنگھ کے قاتلوں کو کیفرکردار تک پہنچایا جائے گا۔وزیراعلیٰ نے کہا کہ سورن سنگھ کے قاتل قانون کے شکنجے سے بچ نہیں سکیں گے۔سورن سنگھ کے پسماندگان کو پورا پورا انصاف فراہم کیا جائے گااس سے قبل خیبرپختونخوا اسمبلی کے رکن اور پاکستان تحریک انصاف کے رہنما فرید خان کو ہنگو میں گولیاں مارکرہلاک کر دیا گیا تھا۔

فرید خان سال دوہزار تیراہ کے الیکشن میں صوبائی اسمبلی کے حلقہ پی کے بیالیس ہنگو سے آزاد حیثیت سے کامیاب ہوئے تھے،بعد میں تحریک انصاف میں شمولیت اختیارکی تھی۔فرید خان پر تین جون سال دوہزار تیراہ کوقاتلانہ حملہ ہوا تھا ،جس میں وہ جاں بحق ہوئے تھے خیبر پختونخوا اسمبلی کے دوسرے رکن اسمبلی اسرار اﷲ گنڈا پور سولہ اکتوبر سال دوہزار تیراہ میں خودکش حملے کے نتیجے میں جاں بحق ہوئے،وہ وزیر قانون تھے ،اسرار اﷲ گنڈا پور کلاچی میں اپنے حجرے میں لوگوں سے مل رہے تھے کہ خود کش حملہ ہوا ،حملے میں تیس افراد زخمی جبکہ نو جاں بحق ہوئے تھے ،اسرار اﷲ گنڈا صوبائی اسمبلی کے حلقہ پی کے 67ڈی آئی خان سے بحیثیت آزاد امیدوار کامیاب ہوئے اور بعد میں تحریک انصاف میں شمولیت اختیار کی تھی ۔

وقت اشاعت : 22/04/2016 - 22:24:05

اپنی رائے کا اظہار کریں