پشاور،افغان سرحدی صوبے میں ڈرون حملہ 18 مبینہ عسکریت پسند ہلاک
تازہ ترین : 1

پشاور،افغان سرحدی صوبے میں ڈرون حملہ 18 مبینہ عسکریت پسند ہلاک

ہلاک شدت پسندوں میں 14 کا محسود اور 4 کا تعلق وزیر قبیلے سے تھا

پشاور( اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔03 فروری۔2016ء ) افغان سرحدی صوبے میں ڈرون حملے میں شدت پسند تنظیم کالعدم پاکستان تحریک طالبان کے خان سجنا گروپ کے 18 مبینہ عسکریت پسند ہلاک ہو گئے۔ مطابق جاسوس طیارے نے میزائل حملہ افغانستان کے صوبے پکتیکا میں کیا۔ میڈیا رپورٹس کے مطابق پکتیکا میں برمل کے علاقے میں طالبان کا ایک اجلاس ہونے والا تھا جب اس کو نشانہ بنایا گیا۔

ذرائع کا دعویٰ تھا کہ اس اجلاس میں تحریک طالبان پاکستان سے الگ ہونے والے شدت پسند گروہ 'سجنا گروپ' کے سربراہ خان سید سجنا نے بھی شریک ہونا تھا۔خان سید سجنا کی شرکت یا حملے میں نشانہ بننے کے حوالے سے مزید معلومات سامنے نہیں آئیں.واضح رہے کہ گزشتہ سال بھی ایسی رپورٹ سامنے آئی تھی جس میں دعویٰ کیا گیا تھا کہ خان سید سجنا میزائل حملے میں ہلاک ہو گیا، اِن اطلاعات کی اس وقت تصدیق نہ ہو سکی جبکہ خان سید سجنا کے محسود قبیلے نے بھی اطلاعات کی تردید نہیں کی تھی، اس وقت پاکستان کے دفتر خارجہ نے خان سید سجنا کی ہلاکت سے لاعلمی کا اظہار کیا تھا۔

پکتیکا کے علاقے برمل میں کیے گئے ڈرون حملے میں ہلاک ہونے والے 18 شدت پسندوں میں سے 14 کا تعلق محسود اور 4 کا وزیر قبیلے سے تھا۔ڈرون حملے میں ہلاکتوں کے حوالے سے سیکیورٹی حکام کی جانب سے کیے گئے دعوے کی آزاد ذرائع سے تصدیق نہ ہو سکی۔واضح رہے کہ تحریک طالبان پاکستان کے نائب امیر ولی الرحمن کی ہلاکت کے بعد مئی 2013 میں خان سید سجنا کو شدت پسند تنظیم کا نائب امیر بنایا گیا تھا۔

خان سید سجنا کے حوالے کہا جاتا ہے کہ وہ افغانستان میں جنگ میں شریک رہا جبکہ وہ کراچی کے نیول بیس پر حملے میں بھی ملوث تھا۔2012 میں خیبر پختونخوا کی بنوں جیل کو توڑ کر 400 قیدیوں کے فرار کا 'ماسٹر مائنڈ' بھی خان سید سجنا کو مانا جاتا ہے۔تحریک طالبان پاکستان کے سربراہ حکیم اللہ محسود کی امریکی ڈرون طیارے کے حملے میں ہلاکت کے بعد طالبان سے مئی 2014 میں الگ ہونے والے محسود قبیلے کے افراد کے گروہ کی قیادت کر رہے تھے۔یہ بھی پڑھیں : سجنا گروپ کی تحریک طالبان پاکستان سے علیحدگی طالبان سے علیحدگی کے بعد بھی اس گروہ نے شدت پسندی کی کارروائیوں میں حصہ لینے کا اعلان کیا تھا۔امریکا نے اکتوبر 2014 میں خان سید سجنا کو عالمی دہشت گرد قرار دیا تھا۔ ۔

مزید متعلقہ خبریں پڑھئیے‎ :

وقت اشاعت : 03/02/2016 - 18:42:30

اپنی رائے کا اظہار کریں