پاکستان میں فضائی حادثات کی تاریخ پرانی،قیام پاکستان سے لیکر اب تک پاکستان میں ..
تازہ ترین : 1

پاکستان میں فضائی حادثات کی تاریخ پرانی،قیام پاکستان سے لیکر اب تک پاکستان میں قومی ائیرلائن سمیت نجی کمپنیوں اور فوجی طیاروں کے تقریبا 50کے قریب حادثات ہوچکے،اہم قومی شخصیات سمیت ہزاروں شہری جاں بحق ہوئے

ملتان(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 07 دسمبر2016ء)پاکستان میں فضائی حادثات کی تاریخ نئی نہیں ہے۔قیام پاکستان سے لیکر اب تک پاکستان میں قومی ائیرلائن سمیت نجی کمپنیوں اور فوجی طیاروں کے تقریبا 50کے قریب حادثات ہوچکے ہیں جن میں اہم قومی شخصیات سمیت ہزاروں شہری جاں بحق ہوئے۔تفصیلات کے مطابق20اپریل2012 کو بھوجا ایئر 737اسلام آباد کے نزدیک گرکر تباہ ہوا، حادثے میں 130افراد جاں بحق ہوئے۔

28نومبر 2010ء کو روسی ساختہ کارگو طیارہ آئی ایل 76 ٹیک آف کے دوران کراچی کے نزدیک گر کر تباہ ہوگیا جس کے نتیجے میں 12افرادجاں بحق ہوئے۔5نومبر 2010 ء کو نجی کمپنی کا طیارہ ٹیک آف کے دوران کراچی کے نزدیک گرکر تباہ ہوگیا،اس حادثے میں 21 افراد جاں بحق ہوئے۔28جولائی 2010 ء کو ایئربلوایئربس 321اسلام آباد مارگلہ کی پہاڑیوں میں گرکرتباہ ہوئی، جس کے نتیجے میں 152 افراد جاں بحق ہوئے۔

10جولائی 2006 ء کو پی آئی اے فوکر ایف 27ٹیک آف کے دوران ملتان ایئرپورٹ کے نزدیک گر کر تباہ ہوگیا، اس حادثے میں 45افراد جاں بحق ہوگئے۔ حادثے میں 2 بریگیڈیئر، وائس چانسلر زکریا یونیورسٹی، ہائی کورٹ کے 2 جج صاحبان بھی جاں بحق ہوئے۔24فروری 2003ء کو نجی سسنا402 بی طیارہ کراچی کے نزدیک بحرعرب میں گرکرتباہ ہوا جس کے نتیجے میں 8افراد جاں بحق ہوئے۔

19فروری 2003ء کو پاکستان ایئرفورس کا فوکرطیارہ کوہاٹ کے نزدیک گرکرتباہ ہوگیا، جس کے نتیجے میں ایئرچیف مارشل مصحف علی میر اور ان کی اہلیہ سمیت 17افراد جاں بحق ہوئے۔28 ستمبر 1992ء کو پی آئی اے کی ایئر بس اے 300 کٹھمنڈو ایئرپورٹ کے قریب حادثے کا شکار ہوگئی،، حادثے میں سوار تمام 167 مسافر جاں بحق ہوگئے تھے ۔یہ اب تک پاکستانی تاریخ کا سب سے بڑا حادثہ شمار کیا جاتا ہے۔

25اگست 1989ء کو پی آئی اے فوکر طیارہ گلگت سے اڑان بھرنے کے بعد حادثے کا شکار ہوا، اس حادثے میں 54 افراد جاں بحق ہوئے۔17اگست 1988ء کو امریکی ساختہ فوجی طیارہ سی 130 بہاولپور کے نزدیک گرکرتباہ ہوا جس میں جنرل ضیاء الحق سمیت 30افراد جاں بحق ہوئے۔23اکتوبر1986ء کو پی آئی اے فوکر ایف 27 پشاور کے نزدیک لینڈنگ کے دوران گرکرتباہ ہوا جس میں 13افراد جاں بحق ہوئے۔

8 6 نومبر 1979ء کو پی آئی اے کا بوئنگ 707 سعودی عرب میں طائف کے پہاڑوں میں حادثے کا شکار ہوا اور تمام 156 مسافر جاں بحق ہوگئے۔دسمبر1972ء کو پی آئی اے فوکرایف 27 راولپنڈی میں گرکر تباہ ہوگیا جس کے نتیجے میں 26افراد جاں بحق ہوئے۔6 اگست 1970ء کو پی آئی اے فوکر ایف 27 اسلام آباد میں ٹیک آف کے دوران گرکر تباہ ہوگیا، اس حادثے میں 30افراد جاں بحق ہوئے۔ 28 مئی 1965ء کو پی آئی اے کا طیارہ قاہرہ کے ہوائی اڈے پر اترنے کے دوران تباہ ہوگیا، طیارے میں 119 افراد سوار تھے جس میں سے صرف 6 افراد کو زندہ بچایاجاسکاتھا۔گزشتہ روزحولیاں کے قریب ہونے والے پی آئی اے فوکر طیارے کے حادثے میں بھی نامور مذہبی شخصیت جنید جمشید سمیت 47مسافر جاں بحق ہوئے .

مزید متعلقہ خبریں پڑھئیے‎ :

وقت اشاعت : 07/12/2016 - 23:02:52

متعلقہ عنوان :

اپنی رائے کا اظہار کریں