چیئرمین سنی اتحاد کونسل نے 500علماء و مشائخ کے دستخطوں کے ساتھ وزیراعظم پاکستان ..
تازہ ترین : 1

چیئرمین سنی اتحاد کونسل نے 500علماء و مشائخ کے دستخطوں کے ساتھ وزیراعظم پاکستان کو خصوصی خط ارسال کر دیا،وزیراعظم دفاعی اداروں اور پاک فوج کی کردارکشی مہم پر خاموش تماشائی نہ بنائیں ،کھل کر سکیورٹی اداروں کے ساتھ کھڑے ہوں،وزیراعظم دوٹوک اعلان کریں حکومت قومی سلامتی کے اداروں کے مخالفین کے ساتھ نہیں بلکہ پاک فوج اور دفاعی اداروں کے ساتھ کھڑی ہے،حکومت فوج کے جوانوں کا مورال گرانے اور پاک فوج میں بددلی پیدا کرنے کی کوششوں کا خاتمہ کرے‘ وزیر اعظم کو بھجوائے گئے خط کا متن

لاہور (اُردو پوائنٹ اخبار تازہ ترین۔28اپریل۔2014ء)چیئرمین سنی اتحاد کونسل صاحبزادہ حامد رضا نے پانچ سو علماء و مشائخ کے دستخطوں کے ساتھ وزیراعظم پاکستان کو خصوصی خط ارسال کر دیا ۔ خط میں وزیراعظم سے کہا گیا ہے کہ وہ دفاعی اداروں اور پاک فوج کی کردارکشی مہم پر خاموش تماشائی نہ بنائیں اور کھل کر سکیورٹی اداروں کے ساتھ کھڑے ہوں۔ فوج مخالف وزراء کو کابینہ سے فارغ کیا جائے ۔

پاک فوج اور دفاعی اداروں کی کردارکشی مہم پر حکومت کی مجرمانہ غفلت عوام کے لیے اضطراب اور تشویش کا باعث ہے۔ اس لیے وزیراعظم قوم سے خطاب کر کے اپنی پوزیشن واضح کریں اور دوٹوک اعلان کریں کہ حکومت قومی سلامتی کے اداروں کے مخالفین کے ساتھ نہیں بلکہ پاک فوج اور دفاعی اداروں کے ساتھ کھڑی ہے۔ وزیراعظم پاکستان دشمن طاقتوں کی طرف سے باز میڈیاہاؤسز کو ملنے والے فنڈز کے الزامات کی تحقیقات کروائیں اور افواج پاکستان اور آئی ایس آئی کو بدنام کرنے کی عالمی سازشوں کا راستہ روکیں کیونکہ فوج اور استحکام پاکستان لازم و ملزوم ہیں۔

وزیراعظم حامد میر پر حملے کے اصل ملزمان کی تلاش کے لیے تمام ریاستی وسائل استعمال میں لائیں اور حامد میر پر حملہ کے افسوسناک واقعہ کی تحقیقات کو جلد از جلد مکمل کر کے اصل حقائق قوم کے سامنے پیش کیے جائیں۔ حکومت صحافیوں اور میڈیاہاؤسز کے تحفظ کے لیے ضروری اقدامات کرے۔ وزیراعظم پاک فوج پر عوامی اعتماد ختم کرنے کی ملکی و غیرملکی سازشوں کا نوٹس لے اور دفاعی اداروں کی کردار کشی مہم رکوانے کے لیے اپنی آئینی ذمہ داریاں پوری کرے کیونکہ افواج پاکستان کے وقار کا تحفظ حکومت کی ذمہ داری ہے۔

وزیراعظم سول ملٹری تعلقات کے تناؤ اور کھچاؤ کو ختم کرنے کے لیے خصوصی اقدامات کریں۔ ایسا نہ کیا گیا تو نتائج کے ذمہ دار وزیراعظم خود ہوں گے۔ حکومت جنگ اور جیو کو قومی سلامتی کے اداروں کی کردارکشی مہم روکنے پر مجبور کرے اور بھارت، امریکہ اور مغرب کے ہاتھوں میں کھیلنے والوں کی ملک دشمنی کے خلاف عملی اقدامات کرے۔ دفاعی اداروں پر الزام تراشی کرنے والوں کو پاک فوج اور قوم سے معافی مانگنے پر مجبور کیا جائے۔

قوم افواج پاکستان اور آئی ایس آئی کی تحقیر اور توہین برداشت نہیں کر سکتی۔ وزیراعظم دفاعی اداروں کی کردارکشی مہم سے عوام میں پھیلنے والے غم و غصے کو محسوس کریں اور عوامی جذبوں کی ترجمانی کرتے ہوئے فوج پر الزام تراشی کرنے والوں کے خلاف غداری کے مقدمات چلائے جائیں۔ پاک فوج ناموسِ ارضِ وطن کی محافظ ہے اور پاک فوج نے پاکستان کے دفاع اور پاکستان کے دشمنوں کی سرکوبی کے لیے بے مثال قربانیاں دی ہیں جس کی وجہ سے پاک فوج پاکستان دشمن طاقتوں کی آنکھوں میں کھٹکتی ہے۔

حکومت فوج کے جوانوں کا مورال گرانے اور پاک فوج میں بددلی پیدا کرنے کی کوششوں کا خاتمہ کرے۔ ملک نازک حالات سے گزر رہا ہے اور پاکستان دشمن طاقتیں ملکی سلامتی کے خلاف سازشوں میں مصروف ہیں۔ ان حالات میں ملک اداروں کے تصادم کا متحمل نہیں ہو سکتا۔

مزید متعلقہ خبریں پڑھئیے‎ :

وقت اشاعت : 28/04/2014 - 19:34:17

اپنی رائے کا اظہار کریں