دہشت گردی عوام کو نیا پاکستان بنانے سے نہیں روک سکتی، چیف جسٹس
تازہ ترین : 1
دہشت گردی عوام کو نیا پاکستان بنانے سے نہیں روک سکتی، چیف جسٹس

دہشت گردی عوام کو نیا پاکستان بنانے سے نہیں روک سکتی، چیف جسٹس

لاہور(اُردو پوائنٹ اخبار تازہ ترین۔2مارچ۔2014ء) چیف جسٹس تصدق جیلانی نے کہا ہے کہ آئین مقدس دستاویز ہے جو شہریوں کو ان کی مرضی کی زندگی گزارنے کا یقین دلاتی ہے۔ایف سی کالج لاہور کی 150 سالہ تقریبات کے سلسلے میں عشائیے سے خطاب میں انھوں نے کہا کہ آئین عوام کو اقدار اوراصول کے مطابق زندگی گزارنا سکھاتا ہے، اس وقت یہ اقدار اور اصول خطرے سے دوچار ہیں، پاکستان اس وقت مشکل دور سے گزر رہا ہے، ملک میں غیر ریاستی عناصر موت کا دھندا کررہے ہیں، مذہب اور لسانیت کے نام پر موت بانٹی جا رہی ہے، نوجوانوں کو ان چیلنجز کا سامنا کرنا ہوگا، قتل وغارت اور دہشت گردی کے واقعات عوام کو نیا پاکستان بنانے سے نہیں روک سکتے، عوام کو اپنے حق کیلیے ضرور بولنا چاہیے، اگر وہ صحیح اور حق کی بات نہیں کریںگے تو دوسرے ان پر اپنی مرضی مسلط کردیںگے، جدید تعلیم حاصل کرنے والے کھلا ذہن رکھتے ہیں، اس سے دور رہنے والے عسکریت پسندی سے متاثر ہوتے ہیں۔

ملک میں جاری تشدد کی لہر کی وجہ لبرل ایجوکیشن سے دوری ہے، عوام کو متاثر کرنے کیلیے سوشل میڈیا جمہوریت سے بھی بڑا ذریعہ ہے۔ انھوں نے ایف سی کالج سے وابستہ اپنی یادوں کا تذکرہ بھی کیا۔ تقریب سے شوکت ترین، امریکی سفارت کار نینا ماریہ، ایم ایس بابر، احمد سعید، گورنر بلوچستان محمد خان اچکزئی نے بھی خطاب کیا۔ کالج کے3 سابق طلبہ جسٹس ریٹائرڈ وجیہہ الدین احمد،لیفٹننٹ جنرل ریٹائرڈ فاروق اورمیجر جنرل ریٹائرڈ نوئبل آئی کھوکھرکو قومی خدمات انجام دینے پر ایوارڈ دیے گئے۔

مزید متعلقہ خبریں پڑھئیے‎ :

وقت اشاعت : 02/03/2014 - 23:16:13

اپنی رائے کا اظہار کریں