اسلامی ممالک کے درمیان تجارت کو فروغ دینے کیلئے طویل المدت اور قلیل المدت حکمت ..
تازہ ترین : 1

اسلامی ممالک کے درمیان تجارت کو فروغ دینے کیلئے طویل المدت اور قلیل المدت حکمت عملی مرتب کرنیکی ضرورت ہے‘ گورنر پنجاب،او آئی سی کے سفارتکاروں کی کانفرنس سے پاکستان میں اسلامی ممالک کی سرمایہ کاری بڑھے گی ‘ چوہدری محمد سرور کا خطاب

لاہور(اُردو پوائنٹ اخبار تازہ ترین۔19 فروری ۔2014ء)گورنر پنجاب چوہدری محمد سرورنے کہا ہے کہ اسلامی ممالک کے درمیان تجارت کو فروغ دینے کے لیے طویل المدت اور قلیل المدت حکمت عملی مرتب کرنے کی ضرورت ہے ،او آئی سی کے سفارتکاروں کی کانفرنس سے پاکستان میں اسلامی ممالک کی سرمایہ کاری بڑھے گی ۔ان خیالات کا اظہار انہوں نے بدھ کے روز لاہور چیمبر میں مختلف بینکوں کے صوبائی سراہان کے اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کیا ۔

گورنر پنجاب نے لاہور ایوان صنعت و تجارت کے زیر اہتمام اپریل میں منعقد ہونے والی کانفرنس کے انتظامات کے حوالے سے بھی جائزہ لیا ۔ لاہور چیمبر کے صدر انجینئر سہیل لاشاری، نائب صدر کاشف انور، سابق صدر شاہد حسن شیخ سمیت دیگر بھی اس موقع پر موجود تھے ۔ گورنر پنجاب چوہدری محمد سرورنے کہا کہ پاکستان اسلامی دنیا سے تجارت بڑھانے کی صلاحیت رکھتا ہے لیکن موثر رابطوں کے فقدان کی وجہ سے اس میں پیشرفت نہیں ہو رہی ۔

پاکستان کا دیگر ممالکل کی نسبت او آئی سی ممالک سے باہمی تجارت کا حجم بہت کم ہے جسے بڑھانے کے لیے انہیں نزدیک لانا ہوگا۔سہیل لاشاری نے کہا کہ او آئی سی کے اراکین ممالک کی مشترکہ آبادی دنیا کی کل آبادی کا ایک چوتھائی ہے مگر عالمی تجارت میں ان کا حصہ دس فیصد سے بھی کم ہے جو انتہائی مایوس کن ہے ۔او آئی سی کے اراکین ممالک باہمی تجارت کو فروغ دیکر غربت میں خاتمے، معاشی نشوونما اور سرمایہ کاری کے اہداف حاصل کرسکتے ہیں۔

مزید متعلقہ خبریں پڑھئیے‎ :

وقت اشاعت : 19/02/2014 - 21:24:21

متعلقہ عنوان :

اپنی رائے کا اظہار کریں