اگر کرکٹرز اپنے ہی ملک میں محفوظ نہیں تو پھر دوسرے ممالک سے ٹیمیں آکر یہاں کیوں ..
تازہ ترین : 1
اگر کرکٹرز اپنے ہی ملک میں محفوظ نہیں تو پھر دوسرے ممالک سے ٹیمیں آکر ..

اگر کرکٹرز اپنے ہی ملک میں محفوظ نہیں تو پھر دوسرے ممالک سے ٹیمیں آکر یہاں کیوں کھیلیں گی ‘ عمر اکمل ، انٹر نیشنل ٹیموں کا فیصلہ درست ہے ،ٹریفک وارڈن نے پہچاننے کے باوجود منہ پر تھپڑے مارے‘ گفتگو

لاہور( اُردو پوائنٹ تازہ ترین اخبار۔ 1 فروری 2014ء)کرکٹر عمر اکمل نے کہا ہے کہ اگر کرکٹرز اپنے ہی ملک میں محفوظ نہیں تو پھر دوسرے ممالک سے ٹیمیں آکر یہاں کیوں کھیلیں گی اور میرے خیال میں یہ انکا درست فیصلہ ہے ،ٹریفک وارڈن نے مجھے پہچاننے کے باوجود میرے منہ پر تھپڑ مارے اس پرحکومتی ذمہ داران کو سخت نوٹس لینا چاہیے ۔ گلبر گ میں ٹریفک وارڈن سے جھگڑے کے بعد لبرٹی تھانے میں نجی ٹی وی سے گفتگو کرتے ہوئے عمراکمل نے کہا کہ ٹریفک وارڈنز کا رویہ بالکل بھی ٹھیک نہیں ۔

اور میں نے درخواست میں اس حوالے سے بھی لکھا ۔ انہوں نے کہا کہ ٹریفک وارڈن نے مجھے پہچاننے کے باوجود میرے منہ پر تھپڑ مارے ۔ اگر کرکٹرز اپنے ہی ملک میں محفوظ نہیں تو پھر دوسرے ممالک سے ٹیمیں یہاں آ کر کیوں کھیلیں گی اور میرے خیال میں انکا یہ فیصلہ درست ہے ۔ حکومتی ذمہ داران کو اس کا نوٹس لینا چاہیے اورانہیں سنجیدگی کہ وہ ایسے حالات میں دوسری ٹیموں کو کھلانے کے لئے کیسے پاکستان لائیں گے۔

وقت اشاعت : 01/02/2014 - 16:01:37

قارئین کی رائے :

  • naveedullah Says : 02/02/2014 - 15:31:37

    law is equal for all.but traffic warden has no authority to slap some one if he has ability then he should fine umar akmal insteaded of slape or should choose other legal way to punish him.

    Reply to this comment
  • Malik Muhammad Ashiq Says : 02/02/2014 - 10:16:30

    Law sub kay leye Equal hota hia. yeh umar akmal ko aisa bayan detyee hoyee sharm annie chayee thie. aik admi agar traffic law kie pabandie nahi kiryee gha too kon keryee gha.

    Reply to this comment
  • Naveed Nawaz Says : 01/02/2014 - 21:31:30

    Umer Akmal is one of my favourite players but sorry to say that his statement clearly shows his weak ethical stance as in law everyone should be treated equally (if you think you are superior than others than it means you have more responsibilities as people follow you). If Warden really slapped then its not good on his side too.

    Reply to this comment
  • Sultan Says : 01/02/2014 - 20:56:21

    main poora waqeya nhi janta aur kisi baat ko jane baghair us k bare mein faisla karna gunah hai ....jesa k Humare Piyare Nabi (SAWW) ne farmaya jis ka matlab yeh hai k kisi baat ko jane baghair us ko agy ghalti minor thi aur Traffiv Police ne us par esa behave kia to us ko sakht punish karna chaiye kyu k sari baaton ke saath ek yeh baat hai k aur acha player hai Umar Akmal humare Mulk ka sacha phailana gunah.lekin agar Akmal ki

    Reply to this comment
  • waheed malik Says : 01/02/2014 - 20:02:17

    warden waly bht batameez hty hain ager ya umeer akmal jysi personelty ko rokain gy jo mulk k lia fight krty hain to in k sath ic se b ziada bura sulooq kia jy ..............!!!!

    Reply to this comment
  • shoaib mansoor Says : 01/02/2014 - 16:12:36

    i think chahay koi crickter ho ya politocian ya koi or har koi qanoon se opar nahi umar akmal ko traffic rules ki pabandi karni chahiye thi.

    Reply to this comment
  • Adnan Arshad Malik Says : 01/02/2014 - 16:07:39

    its a totally drama

    Reply to this comment

اپنی رائے کا اظہار کریں