پان ،چھالیہ،گٹکا اور تمباکو کے استعمال کو ترک کر کے منہ کے کینسر سے محفوظ رہا جا ..
تازہ ترین : 1

پان ،چھالیہ،گٹکا اور تمباکو کے استعمال کو ترک کر کے منہ کے کینسر سے محفوظ رہا جا سکتا ہے‘ پارلیمانی سیکرٹری صحت پنجاب

لاہور ( اُردو پوائنٹ تازہ ترین اخبار۔ 10جنوری 2014ء)پارلیمانی سیکرٹری صحت پنجاب خواجہ عمران نذیر نے کہا ہے کہ حکومت علاج کے ساتھ بیماریوں کی روک تھام پر خصوصی توجہ دے رہی ہے،پان ،چھالیہ،گٹکا اور تمباکو کا استعمال منہ اور چہرے کے سرطان کا باعث بن رہا ہے جس کی روک تھام کیلئے بھر پور آگاہی مہم چلانے کی ضرورت ہے،انہوں نے عوام سے اپیل کی کہ وہ 2روپے کی سپاری پیکٹ کے عوض کینسر جیسا جان لیوا مرض نہ خریدیں۔

ان خیالا ت کا اظہار انہوں نے جمعہ کے روز کنگ ایڈورڈ میڈیکل یونیورسٹی/میو ہسپتال کے زیر اہتمام منہ او ر چہرے کے سرطان سے آگاہی کیلئے میو ہسپتال سے مال روڈ تک واک کی قیادت کے بعد میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہی ۔اس موقع پر ڈائریکٹر جنرل ہیلتھ ڈاکٹر زاہد پرویز ،پروفیسر نبیلہ ،پروفیسر ساجد عبیداللہ ،پروفیسر حافظ شاکر،پروفیسر صداقت علی ،ایم ایس میو ہسپتال ڈاکٹر عبدالمجید چوہدری،ڈاکٹر عفت نیازی کے علاوہ میو ہسپتال کے ڈاکٹرز اور نرسز کی کثیر تعداد نے شرکت کی۔

اس موقع پر ڈی جی ہیلتھ ڈاکٹر زاہد پرویز نے کہا کہ پان ،چھالیہ ،نسوار ،گٹکا اور تمباکو کے استعمال سے منہ اور چہرے کا کینسر تیزی سے پھیل رہا ہے اور پاکستان میں کینسر کے مریضوں میں سے 40فیصد منہ کے سرطان میں مبتلا ہیں۔ انہوں نے کہا کہ منہ کا سرطان جنوبی ایشیا کا دوسرا بڑا سرطان کا مرض بن چکا ہے اور اس کی وجہ سے ہر سال لاکھوں لوگ موت کے منہ میں چلے جاتے ہیں ۔

خواجہ عمران نذیر نے اس موقع پر کہا کہ بیماریوں کے خلاف بھر پور عوامی آگاہی مہم چلانا حکومت اور سول سوسائٹی کی مشترکہ ذمہ داری ہے اور اس کیلئے کمیونٹی ،سرکاری اداروں اور ذرائع ابلاغ کو مشترکہ کوششیں کرنا ہوں گی ۔ ایک سوال کے جواب میں خواجہ عمران نذیر نے کہا کہ جلد ہی سٹی ڈسٹرکٹ گورنمنٹ کے تعاون سے پان ،چھالیہ اور گٹکا کے استعمال اور بھارت سے ان اشیاء کی سمگلنگ کے خلاف بھر پور مہم چلائی جائے گی جس کیلئے متعلقہ سرکاری محکموں کا تعاون بھی حاصل کیا جائے گا ۔

پروفیسر ڈاکٹر نبیلہ اور حافظ شاکر نے منہ کے کینسر کی علامات کے حوالے سے بتایا کہ اگر دوہفتے تک کسی شخص کے منہ کا زخم ٹھیک نہ ہو تو اسے ڈاکٹر سے فوری رجوع کرنا چاہیے ۔انہوں نے کہا کہ منہ میں چھالہ یا زخم ہونے کی صورت میں ڈاکٹر سے مشورہ ضرور کریں ،منہ کا کم کھولنا یا نگلنے میں دشواری کو کسی صورت نظر انداز نہ کیا جائے کیونکہ یہ علامات آگے چل کر کسی مہلک بیماری کا باعث بھی بن سکتی ہیں ۔اس موقع پر خواجہ عمران نذیر اور واک کے دیگر شرکاء نے مال روڈ سے گزرنے والے لوگوں میں کینسر کی علامات اور احتیاطی تدابیر پر مبنی پمفلٹس بھی تقسیم کئے۔

مزید متعلقہ خبریں پڑھئیے‎ :

وقت اشاعت : 10/01/2014 - 14:44:10

متعلقہ عنوان :

اپنی رائے کا اظہار کریں