مقابلے کے اس دور میں صرف وہی فارماسیوٹیکل کمپنیاں اپنا بزنس بڑھا سکیں گی جن کی ..
تازہ ترین : 1

مقابلے کے اس دور میں صرف وہی فارماسیوٹیکل کمپنیاں اپنا بزنس بڑھا سکیں گی جن کی ادویات کا معیار بہتر اور قیمت مناسب ہو گیوزیر صحت پنجاب ڈاکٹر طاہر علی جاوید کاپلاننگ اینڈ ڈویلپمنٹ ڈیپارٹمنٹ کی جانب سے منعقدہ سیمینار کی افتتاحی نشست سے خطاب

لاہور( آئی این پی) وزیر صحت پنجاب ڈاکٹر طاہر علی جاوید نے کہا ہے کہ وزیراعلیٰ پنجاب نے فارمیسی کے شعبے کی ترقی کے لئے تاریخی نوعیت کے اہم اقدامات کئے ہیں ان سے فارمیسی سروسز اور ہیلتھ کے شعبے پر مثبت اثرات مرتب ہوں گے۔ انہوں نے کہا کہ ماضی میں فارمیسی کے شعبے کو نظر انداز کیا گیاتاہم موجودہ حکومت کے صحت کے شعبہ کے لئے شروع کئے گئے پروگرام کے تحت فارماسسٹس کے تمام مطالبات کو منظو رکر لیا گیا ہے اور فارمیسی کی صنعت کو متعدد مراعات دی گئی ہیں-انہوں نے کہا کہ پاکستان میں فارماسیوٹیکل سیکٹر کے لئے ترقی کے وسیع مواقع ہیں اور حکومت پنجاب صنعتی اسٹیٹس میں فارماسیوٹیکل کمپنیوں کو جگہ مہیا کرنے کے ساتھ ساتھ ہر ممکن تعاون فراہم کر رہی ہے ۔

تاہم انہوں نے کہا کہ ڈبلیو ٹی او کے نفاذ اور مقابلے کے اس دور میں صرف وہی فارماسیوٹیکل کمپنیاں اپنا بزنس بڑھا سکیں گی جن کی ادویات کا معیار بہتر اور قیمت مناسب ہو گی۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے پلاننگ اینڈ ڈویلپمنٹ ڈیپارٹمنٹ کی جانب سے منعقدہ ایک روزہ سیمینار ” پاکستان میں ڈبلیو ٹی او کے تحت فارماسیوٹیکل سیکٹر کے لئے مواقع “ کی افتتاحی نشست سے خطاب کرتے ہوئے کیا جبکہ سیکرٹری پی اینڈ ڈی سہیل احمد ،ایڈوائزر ڈبلیو ٹی او سیل انعام الحق، لاہور چیمبر آف کامرس اینڈ انڈسٹری کے کنوینئر ڈبلیو ٹی او اکبر شیخ نے بھی اس موقع پر خطاب کیا ۔

وزیر صحت نے کہا کہ حکومت نے فارما سیوٹیکل سیکٹر کی بہتری کیلئے انقلابی اقدامات اٹھائے ہیں اب انہیں بھی چاہیے کہ وہ عوام کو معیاری و موثر ادویات کی فراہمی کے لئے اپنا موثر کردار ادا کر یں -انہوں نے کہا کہ صوبائی حکومت نے عوام کو صحت کی معیاری و جدید سہولیات کی فراہمی کے لئے میگا پراجیکٹس شروع کئے ہیں جن میں ملتان ، فیصل آباداور وزیر آباد میں امراض قلب کے ادارے ، ملتان ، فیصل آباد اور لاہور میں برن ہسپتالوں کا قیام اور لاہور میں ایشیا ء کے سب سے بڑے کینسر ہسپتال کے قیام جیسے بڑے منصوبے شامل ہیں - انہوں نے کہا کہ ایسے اداروں کے قیام سے فارما سیوٹیکل سیکٹر کو بھی ترقی کے مواقع ملے ہیں اور انہوں نے امید ظاہر کی کہ فارما سیوٹیکل سیکٹر عوام کو جدید و معیاری ادویات کی مناسب قیمت پر فراہمی کو یقینی بنائے گا-وزیر صحت نے کہا کہ صوبے میں لوگوں کو علاج معالجہ کی سہولتیں فراہم کرنے کے لئے وزیر اعلی پنجاب کا ہیلتھ سیکٹر ریفارمز پروگرام شروع کیا گیا ہے اس پروگرام کے تحت ایک سال کے اندر دیہی مراکز صحت جبکہ دو سالوں میں بنیادی مراکز صحت میں تمام عدم دستیاب سہولتوں کی فراہمی یقینی بنائی جائے گی جبکہ ان مراکز صحت میں سٹاف، عمارت ، پانی ، گیس ، بجلی اور دیگر ضروری سہولتوں کی فراہمی پر دو برسوں میں 5.5 ارب روپے خرچ کئے جائیں گے اور صوبہ کے 295 رورل ہیلتھ سنٹروں میں جدید سہولیات کی فراہمی کے لئے اضلاع کو ایک ارب روپے فراہم کر دیئے گئے ہیں-وزیر صحت نے بتایا کہ صوبے بھر میں ان مراکز کے لئے تقریباً 6 سو میڈیکل آفیسرز ، 141 خواتین میڈیکل آفیسرز ، 90ڈینٹل سرجنز کی پرکشش مشاہرہ پر بھرتی مکمل کر لی گئی ہے اور بنیادی مراکز صحت کے ڈاکٹروں کو پوسٹ گریجوایٹ کورس میں ترجیح دینے کے ساتھ ساتھ ان مراکز میں دو سال تک کام کرنے والے ڈاکٹر کو پبلک سروس کمیشن کے تحت ریگولر سلیکشن کیلئے 25 اضافی نمبر دیئے جائیں گے-

مزید متعلقہ خبریں پڑھئیے‎ :

وقت اشاعت : 20/09/2006 - 18:09:00

اس خبر پر آپ کی رائے‎

متعلقہ عنوان :