آئل کمپنیزایڈوائزری کمیٹی کے بعدپی ایس اونے بھی پیٹرولیم مصنوعات کی قلت کا خدشہ ..
تازہ ترین : 1
آئل کمپنیزایڈوائزری کمیٹی کے بعدپی ایس اونے بھی پیٹرولیم مصنوعات کی ..

آئل کمپنیزایڈوائزری کمیٹی کے بعدپی ایس اونے بھی پیٹرولیم مصنوعات کی قلت کا خدشہ ظاہر کر دیا

پیٹرولیم مصنوعات کی درآمد کیلئے جہازوں کی فراہمی میں مسلسل تاخیر کی جارہی ہے،پورٹ قاسم پر جہازوں کی بیک وقت آمد سے جہازوں کے جیٹی تک آنے میں دشواری کا بھی سامنا

کراچی (اُردو پوائنٹ اخبار تازہ ترین۔10 اپریل۔2015ء)آئل کمپنیزایڈوائزری کمیٹی کے بعد پاکستان اسٹیٹ آئل (پی ایس او)نے بھی پیٹرولیم مصنوعات کی قلت کا خدشہ ظاہر کر دیا۔میڈیا رپورٹس کے مطابق پی ایس او نے خدشہ ظاہر کیا ہے کہ پیٹرولیم مصنوعات کی درآمد کیلئے پی این ایس سی کی جانب سے جہازوں کی فراہمی میں مسلسل تاخیر کی جارہی ہے۔ اس سے نہ صرف درآمد میں تعطل آرہا ہے بلکہ پورٹ قاسم پر جہازوں کی بیک وقت آمد سے جہازوں کے جیٹی تک آنے میں دشواری کا بھی سامنا ہے۔

جہازوں کی بروقت آف لوڈنگ نہ ہونے کے باعث سپلائرز کی جانب سے پچیس لاکھ ڈالر ڈیمریج چارجز کے کلیم آچکے ہیں۔اس صورت حال میں پی ایس او نے فوری طور پر وزارت پورٹس اینڈ شیپنگ سے معاملے کی جانچ پڑتال کرنے کیلئے کہا ہے۔چند روز پہلے آئل کمپنیزایڈوائزری کمیٹی نے بھی اسی خدشے کا اظہار کرتے ہوئے بحران سے بچنے کیلئے ایل این جی اور خام تیل لانے والے جہازوں کے شیڈول کو ضروری قرار دیا تھا۔

وقت اشاعت : 10/04/2015 - 21:28:51

متعلقہ عنوان :

اپنی رائے کا اظہار کریں