اسٹبلشمنٹ 40سال سے ایم کیوایم سے ناراض ہے، الطاف حسین
تازہ ترین : 1

اسٹبلشمنٹ 40سال سے ایم کیوایم سے ناراض ہے، الطاف حسین

کراچی( اُردو پوائنٹ اخبار تازہ ترین۔06مارچ۔2015ء ) ایم کیو ایم کے قائد الطاف حسین نے کہا ہے کہ تمام سیاسی قیادت اپنے حقوق کی بات کرتی ہے لیکن مہاجروں پر اعتراض ہوتا ہے، اسٹیبلشمنٹ چالیس سال سے ایم کیو ایم سے ناراض ہے۔سینیٹ الیکشن میں ایم کیو ایم کے امیدواروں کی کامیابی کی خوشی میں نائن زیرو اکٹھے ہونے والے کارکنوں سے ٹیلیفونک خطاب کرتے ہوئے الطاف حسین نے کہا نواز شریف نے جاگ پنجابی جاگ کا نعرہ لگایا تھا، محمود اچکزئی بلوچستان کو دو حصوں میں تقسیم کرنے کی بات کر رہے ہیں، آصف زرداری اور بے نظیر خود کو سندھی کہنے میں فخر محسوس کرتے ہیں، کیا عمران خان اپنے آپ کو پٹھان نہیں بولتے۔

الطاف حسین کا کہنا تھا اپنے حقوق کی بات کریں تو غدار کہا جاتا ہے کارکنوں کو بلاجواز گرفتار کیا جا رہا ہے، عدالتوں میں جاتے ہیں لیکن انصاف نہیں ملتا۔الطاف حسین نے کہا اسٹیبلشمنٹ چالیس سال سے ایم کیو ایم سے ناراض ہے، سپریم کورٹ نے کہا تمام جماعتوں کے عسکری گروپس ہیں مہاجروں کا کیا قصور ہے۔الطاف حسین کا کہنا تھا کہ ایم کیو ایم کے کارکنوں کی لاشیں سڑکوں پر پھینکی جاتی ہیں،ایم کیو ایم کے کارکنوں کو بلاجواز گرفتار کیا جارہا ہے، آخر متحدہ قومی موومنٹ کے کارکنوں کا قصور کیا ہے، غلطی ہوجائے توکہاجاتا ہے ماروورنہ یہ دہشتگردبنیں گے۔

ان کا کہنا تھا کہ سرکاری ٹی وی پر حملہ کرنے والے خود کو بہادر کہتے ہیں جب حملہ کیا گیا تو کہا گیا کہ بچے ہیں انہیں مت مارو، جبکہ ہمارے کارکن اور بچے گرفتار اور لاپتہ ہیں۔

مزید متعلقہ خبریں پڑھئیے‎ :

وقت اشاعت : 06/03/2015 - 14:14:17

متعلقہ عنوان :

اپنی رائے کا اظہار کریں