سرفراز کو نہ کھلانا سمجھ سے بالاترہے، ٹیم مینجمنٹ سرفراز کو اوپنر نہیں کھلانا ..
تازہ ترین : 1
سرفراز کو نہ کھلانا سمجھ سے بالاترہے، ٹیم مینجمنٹ سرفراز کو اوپنر نہیں ..

سرفراز کو نہ کھلانا سمجھ سے بالاترہے، ٹیم مینجمنٹ سرفراز کو اوپنر نہیں کھلانا چاہتی تو کسی اور نمبر پر ہی کھلادے، جاوید میاں داد

کراچی(اُردو پوائنٹ اخبار تازہ ترین۔06مارچ۔2015ء)پاکستان کرکٹ ٹیم کے سابق کپتان وکوچ جاوید میاں داد نے وکٹ کیپر بلے باز سرفراز احمد کو ڈراپ کیے جانے کی ہیڈ کوچ وقار یونس کی منطق پر سوالیہ نشان اٹھادیا۔نجی ٹی وی سے گفتگو کرتے ہوئے میں جاوید میانداد کا کہنا تھا کہ ابتدائی میچز میں سرفراز کو نہ کھلانے پر انہیں حیرانی نہیں ہوئی کیوں کہ ٹیم مینجمنٹ انہیں صرف وکٹ کیپر کے طور پر دیکھ رہی ہے۔

انہوں نے کہا کہ وہ وقار یونس کی منطق سے متفق نہیں اور سرفراز کو قابل بلے باز سمجھتے ہیں، اگر ٹیم مینجمنٹ سرفراز کو اوپنر نہیں بھی کھلانا چاہتی تو کسی ان فارم بلے باز سے اوپن کرواکر سرفراز کو کسی نیچے کے نمبر پر کھلایا جاسکتا ہے۔انہوں نے کہا کہ وقار کو سرفراز کی وکٹ کیپنگ پر شکوک و شبہات نہیں ہونے چاہئیں، وہ یقیناً وکٹ کیپنگ میں عمر اکمل سے بہتر چوائس ہیں۔

انہوں نے کہا کہ ناصر جمشید بری طرح آوٴٹ آف فارم ہیں اور کسی بھی بلے باز کے لیے تین مواقع کافی ہوتے ہیں اور اب کسی دوسرے بیٹسمین کو موقع دینے کا وقت آگیا ہے۔انہوں نے کہا کہ ناصر جمشید کا معاملہ ٹیم مینجمنٹ کیلئے سر کا درد بن چکا ہے، وہ بار بار ایک ہی طرح کا شاٹ مار کر آوٴٹ ہورہے ہیں، جب یونس خان سے بھارت کے خلاف اوپننگ کروائی جاسکتی ہے تو کسی دیگر آپشن کو کیوں نہیں آزمایا جاسکتا۔

محمد عرفان کے بارے میں ان کا کہنا تھا کہ سات فٹ طویل قد کے حامل باوٴلر کو متحدہ عرب امارات کے خلاف آرام کا موقع دیکر یاسر شاہ کو ٹیم میں شامل کرنا چاہیے تھا جبکہ بینچ پر احسان عادل بھی موجود تھے۔جاوید میانداد نے کہا کہ عرفان اگر جنوبی افریقہ کے خلاف نہ کھیلے تو انہیں حیرت نہیں ہوگی، جن کی جنوبی افریقہ کے خلاف میچ میں شدید ضرورت پڑسکتی ہے۔انہوں نے کہا کہ جنوبی افریقہ کے خلاف یاسر شاہ کو ٹیم میں شامل کرنا چاہیے اور جنوبی افریقہ کے بلے بازوں کے خلاف اسپنرز سے جارحانہ باوٴلنگ کروانا ہوگی۔سابق کپتان نے کہا کہ جنوبی افریقہ کو مختلف حکمت عملی کے ساتھ حیرت زدہ کرنا ہوگا، پاکستان میچ میں انڈرڈوگ ضرور ہے تاہم اس کے پاس کھونے کو کچھ نہیں۔

وقت اشاعت : 06/03/2015 - 11:40:38

اپنی رائے کا اظہار کریں