تازہ ترین : 1
Tumhara Faisala Kiya Hai

تمھارا فیصلہ کیا ہے ؟

ابھی کل ہی ڈی جی آئی ایس پی آر میجر جنرل عاصم باجوہ نے پہلی بار کھلے ،دوٹوک اور واضح الفاظ میں کہا تھا کہ دشمن سرحد اور پاکستان کے اندر خطرناک کھیل کھیل رہا ہے۔اور پھر دشمن نے آج ہماری پیٹھ میں خنجر گھونپ دیا

مصنف : سبوخ سید
ابھی کل ہی ڈی جی آئی ایس پی آر میجر جنرل عاصم باجوہ نے پہلی بار کھلے ،دوٹوک اور واضح الفاظ میں کہا تھا کہ دشمن سرحد اور پاکستان کے اندر خطرناک کھیل کھیل رہا ہے۔اور پھر دشمن نے آج ہماری پیٹھ میں خنجر گھونپ دیا۔ ایک بار پھر اس نے ہمیں تڑپانے کے لیے مقتل گاہ پشاور کا رخ کیااور سجدہ گاہ کوبے گناہ نمازیوں کے خون سے لہو لہان کر دیا ۔
یہ کوئی ایک دن کہانی نہیں ۔
روزانہ میری مادر وطن کی آغوش سے دشمن بچوں کو چھینتے ہیں اور پھر انہیں چن چن کر قتل کر دیتے ہیں۔میری ماں دھرتی پر روزانہ بے گناہوں کا لہو بہتا ہے۔اور روزانہ یہ زمین تڑپ کر رہ جاتی ہے۔
کوئی گھر، محلہ ،مسجد ،حجرہ ،مکتب ،مدرسہ،امام بارگاہ ،شاہراہ ،دربار ،مزار ،خانقاہ،گرجا، گورداوارہ، کلیسا، مندر محفوظ نہیں۔
کوئی شیعہ ،سنی ،دیوبندی ،بریلوی ،اہل حدیث، ہندو، سکھ ،عیسائی ،مہاجر، پختون ،سندھی ، بلوچی ،سرائیکی ،پنجابی ،کشمیری اور بلتی محفوظ نہیں۔یہاں مسلم لیگ ن،پیپلز پارٹی ،اے این پی ،جے یوآئی، مجلس وحدت مسلمین ، تحریک جعفریہ، سپاہ صحابہ ،عالمی مجلس تحفظ ختم نبوت، جے یو پی بھی محفوظ نہیں۔یہاں کوئی فوجی ،سول ،بچہ ،بوڑھا ،خاتون ،مرد ،ملکی ،غیر ملکی بھی محفوظ نہیں۔

وجہ صرف ایک ہے اور وہ یہ ہے کہ تم ٹکڑوں میں بٹے ہو اور وہ ایک ہیں۔وہ تم پر حملہ کر تے ہیں ،تمھیں قتل کر دیتے ہیں۔تم مرجاتے ہو ،قتل ہو جاتے ہو اور پھر ایک دوسرے پر اپنے قتل کا الزام لگا نا شروع کر دیتے ہو۔ہمارا دشمن شیطان کی طرح ہمیں باہم لڑا کر قہقے لگا رہا ہوتا ہے کیونکہ وہ اپنے مقصد میں کامیاب ہو جاتا ہیں۔اس کی کامیابی کا راز تمھاری تقسیم میں ہے۔
جس دن تم نے اپنے عقیدوں ،عبادت گاہوں اور سیاسی نظریات کو پس پشت ڈال کر پاکستانی اور انسان ہونے کی حیثیت سے سوچنا شروع کر دیا۔جس روز تم نے ہر لاش کو اپنے بھائی اور باپ کی لاش سمجھا ،جس شب تم نے ریپ ہونے والی ہر لڑکی کو اپنی ماں ،بہن اور بیٹی سمجھنا شروع کر دیا ، اس دن تمھارے دشمن کا آخری دن ہوگا ،،تمھارے دشمن مر جائیں گے اور تم جینا شروع کر دوگے۔
۔
اب فیصلہ تم نے کرنا ہے۔۔ بتاؤ۔۔۔یہ فیصلہ آج کرو گے۔۔ یا۔۔مزید لاشیں اٹھانے کے بعد کرو گے ؟؟اور کتنی لاشیں اٹھانے کے بعد کرو گے ؟؟اگر آج کرنا چاہتے ہو تو پھر ایک کام کرو۔۔
پشاور میں قتل ہونے والوں کے لیے ہر اسکول ،ہر عبادت گاہ اور ہر دفتر میں اجتماعی دعا کراؤ۔۔ جس دن تمھارے ہاتھ مذہب ،مسلک ،زبان ، سیاست ،رنگ اور نسل کی قید سے آزاد ہو کر خلوص نیت کے ساتھ دعا کے لیے اٹھیں گے۔۔ اسی دن۔۔ اللہ تمھاری سن لے گا۔۔
تم خود کو ایک بار بدل کر دیکھو تو سہی۔۔خدا۔۔تمھاری قسمت بدلنے کا فیصلہ کرنا چاہتا ہے۔۔ اگر تم کامیاب ہو نا چاہتے ہو تو۔۔فیصلہ تم نے کرنا ہے۔۔ تو پھر زبانی نہیں ،عملا بتاؤ۔۔ تمھارا فیصلہ کیا ہے ؟؟؟
وقت اشاعت : 2015-02-14

(3) ووٹ وصول ہوئے

Sabookh Syed

مصنف کا نام : سبوخ سید

سبوخ سید بول ٹی وی سے منسلک ہیں۔ اس سے پہلے وہ دس برس جیو ٹیلی ویژن سے منسلک رہے۔ دی نیوز انٹرنیشنل ،روزنامہ جنگ اور اُردو پوائنٹ کیلئے خصوصی رپورٹس اور کالم لکھتے رہتے ہیں۔

سبوخ سید کی مزید تحریریں پڑھنے کیلئے یہاں پر کلک کیجئے-

اپنی رائے کا اظہار کریں