تازہ ترین : 1
dehshat gardi ke khilaf Pakistan Russian ittehad

دہشت گردی کے خلاف پاک روس اتحاد

پاک روس فوجی تعاون کمیشن کا قیام واشنگٹن پر یشان ”دوستی“فوجی مشقوں کو جاری رکھنے کا اعلان

امتیاز الحق
روس اور پاکستان نے خطے میں داعش دہشتگرد گروہوں عسکریت پسندی کے خطرے کا مقابلہ کرنے کے لئے فوجی تعاون کا ایک کمشن قائم کرنے کا فیصلہ کیا ہے روس کے وزیر خارجہ سرگئی لاروف نے اپنے پاکستانی ہم منصب خواجہ محمد آصف کے ساتھ مذاکرات کے بعد اعلان کیا ،لاروف نے یہ بھی کہا کہ ماسکو اسلام آباد کے خلاف ہونے والی دہشتگردی کے بارے میں اس کی صلاحیت بڑھانے میں مزید مدد کے لئے تیار ہے جو اس خطہ کے مفاد میں ہوگا اس موقع پر انہوں نے یاد دھائی بھی کرائی کہ 2017 میں روس نے چار ایم آئی جنگی ہیلی کاپٹر پاکستان کے حوالے کردئیے جو دہشتگردی کے خلاف آپریشنز میں اہم کردار ادا کررہے ہیں علاوہ ازیں انہوں نے کہا کہ فریقین نے ”دوستی“نامی مشترکہ فوجی مشقوں کا سلسلہ جاری رکھنے کا فیصلہ کیا ہے جن کا مقصد پہاڑی علاقوں میں دہشتگردی کا مقابلہ کرنا ہے لاروف نے مزید کہا کہ دو طرفہ معاشی و تجارتی بالخصوص توانائی میں تعاون کے امکانات بھی روشن ہیں خواجہ آصف نے اس موقع پر کہا کہ پاکستان روس کے اس موقف کا خیرمقدم کرتا ہے کہ مسئلہ افغانستان کو حل کرنے کے عمل میں خطے کے ممالک کو شامل کیا جائے فوجی تعاون کی منصوبہ بندی اس وقت کی گئی ہے جب افغانستان میں داعش ایسے خطرناک گروپ کی قوت بڑھ رہی ہے بلکہ اس قوت کو بڑھانے میں پس پردہ اس امریکی جنگجو اشرافیہ کا ہاتھ ہے جو خطے میں واضح طور پر اپنی موجودگی رکھنا چاہتی ہے اسی مقصد کے تحت شام اور عراق میں داعش کو منظم کیا گیا لیکن دونوں ملکون میں بدترین خون خرابے اور جنگ کے بعد اس گروہ کے ارکان کو افغانستان منتقل کیا گیا ہے روس کے پاس وسط ایشیائی ریاستوں کی انٹیلی جنس رپورٹ میں کہا کہ داعش کے ارکان کو جعلی علاقائی پاسپورٹ سکیورٹی حکام کی مہروں جعلی اجازت نامہ مہاجرین کے روپ میں ان ملکوں میں منتقل کیا جارہا ہے افغانستان اور پاکستان میں انکے اڈے اور خفیہ کیبن گاہوں کی ساتھ ساتھ نیٹ ورک بھی تشکیل دئیے گئے جس کے باعث روس کا کہنا ہے کہ پاکستان کی صلاحیت بڑھانے کا مقصد داعش کے دہشتگردوں کے پاس اعلیٰ ترین ٹیکنالوجی ہے جو ظاہری بات ہے کہ سی آئی اے پینٹاگون کی مدد کے بغیر ممکن نہیں ہے حالیہ بلوچستان میں دہشتگردوں کی کاروائیوں میں ایسے جدید آلات،تکنیک ٹیکنالوجی استعمال کی گئی ہے جو یا تو امریکہ کے پاس ہے یا اس بارے میں روس معلومات رکھتا ہے اس ضمن میں ذرائع ابلاغ میں ایسی اطلاعات آچکی ہے کہ افغانستان میں بغیر رنگ کے ہیلی کاپٹر داعش کے ارکان کو اسلحہ فراہم کررہے ہیں مزید یہ کہ پاکستان میں متعدد ہونیوالی دہشتگردی کی کاروائیوں بارے میں داعش نے ذمہ داری بھی قبول کی ہے گزشتہ دنوں ماسکو میں پاکستان اور روسی حکام کی بات چیت ملاقاتوں مذاکرات میں روسی وزیر خارجہ سرگئی لاروف نے کہا کہ دونوں ملکوں کے درمیان تعاون میں دہشتگردی کیخلاف جنگ کو اولیت حاصل ہے انہوں نے بتایا کہ روس اور پاکستان کی سپیشل فورسز کے درمیان 2016 سے فوجی مشقیں ہورہی ہے جو رواں سال بھی جاری رہیں گی لاروف نے کہا کہ افغانستان میں نیٹو کی قیادت کے اتحاد کی جانب سے داعش کے خطرہ کو کچلنے کی کوششوں پر ماسکو کو سنجیدہ نوعیت کے شکوک و شہبات ہیں روس اور پاکستان کو حاصل ہونے والی معلومات اور اعدادوشمار کے مطابق افغانستان کے مشرقی اور شمالی سرحدی علاقوں میں داعش کے گروہ موجود ہیں اور ان کی تعداد میں مسلسل اضافہ ہورہا ہے ایسے اشارے بھی ملے ہیں کہ وسط ایشیائی ریاستوں سے انہیں پاکستان روس میں داخل کیا جاسکتا ہے پاکستان کے وزیر خارجہ خواجہ آصف نے روس کے ہم منصب کے خدشات سے اتفاق کیا اور کہا کہ افغانستان میں داعش کی موجودگی اور اضافے کو نظر انداز نہیں کیا جارہا ہے اسی طرح کا الزام ہمسایہ ایران بھی لگا چکاہے کہ امریکی عراق اور شام سے فرار ہونے والے داعش کے جنگجوﺅں کو شورش زدہ علاقہ افغانستان میں محفوظ ٹھکانے بنانے میں مدد دے رہے ہیں اسی صورتحال بارے خواجہ آصف کا کہنا تھا کہ واشنگٹن اور کابل اس خطرہ کا نوٹس نہیں لے رہے ان کی کاروائیاں وسط ایشیا پاکستان چین اور روسی وفاق کے لیے خطرہ بن رہی ہے اور یہ بات بہت الارمنگ ہے داعش کے دہشتگردوں کی مشرق وسطیٰ سے آمد کی وجہ سے ان کی تعداد افغانستان میں طالبان کے کئی گروہوں کے مقابلے میں بڑھ گئی ہے۔
گزشتہ عرصہ میں افغانستان کے سابق صدر حامد کرزئی نے ایک پریس کانفرس میں واضح طورپر امریکی افواج پر الزام لگایا تھا کہ وہ اپنے ہیلی کاپٹروں کا رنگ بدل کا داعش کو اسلحہ فراہم کررہے ہیں طالبان کے مختلف لڑاکا گروہوں نے بھی الزام عائد کیا تھا کہ تورابورا کے علاقے میں جب انہوں نے داعش کے لڑاکوں کو گھیرے میں لے لیا تھا تو عین امریکی طیاروں نے طالبان کی پوزیشن پر فائرنگ اور بمباری کرکے داعش کے لڑاکوں کو فرار کرانے میں مدددی مزید برآں داعش کے مالی اخراجات پورے کرنے کے لیے افیون کے پوست کی کاشت اور ہیروئن سمگلنگ کرنے کے لئے داعش کو پیچیدہ و افغان وسطیٰ ایشیائی پہاڑی علاقوں میں جدید سازو سامان فراہم کرکے سہولت فراہم کی جارہی ہے جس کے باعث اس کے لڑاکے آسانی کیساتھ اپنے اخراجات اٹھارہے ہیں ایسی صورتحال می ہمسایہ ملکوں روس چین ایران کے رابطوں می مزید تیزی آئی ہے اسی طرح امریکی دباﺅ میں بھی اضافہ ہوگیا ہے پاکستان کو ایسے کسی اتحاد سے دور رکھا جائے جو امریکی خطے کی حکمت عملی اور پالیسی کیخلاف ہے تاہم پاکستان کی عسکری قیادت کو حالات کے ادراک پر دسترس حاصل ہے یہی وجہ ہے کہ روس پاک فوجی مشقوں کو جنگی مشقوں کا نام بھی دیا جارہا ہے گزشتہ سال پاکستان کے ایک سو کمانڈر نے روسی سپیشل فورسز کیساتھ روس میں فوجی مشقیں کیں پاکستان فوجی دستہ کاپرتپاک خیر مقدم کای گیا پاکستان فوجیوں کیساتھ روسی فوجیوں نے پاکستانی ثقافتی گانوں کی دھنوں پر رقص کرکے دونوں ملکوں کے عوام اور دنیا کو پیغام دیا کہ ہمسایہ تعلقات اس وقت مزید اہم ہوجاتے ہیں جب وہ مشترکہ طور پر خطرہ محسوس کرتے ہیں کہ ان کی سلامتی خود مختاری کو تباہ کرنے کی کوششیں کی جارہی ہیں یہی وجہ ہے کہ خطے کے ممالک بالخصوص پاکستان روس امریکی مستقل قیام اور ان ملکوں میں افراتفری بحران پیدا کرنے کی امریکی سازش کے خلاف تعاون اور اسے اتحاد میں بدل رہے ہیں جہاں دونوں ممالک نے امریکی سازش کا حصہ بن کر تقریباً دس سالوں میں 13833 سوویت فوجی ہلاک کرائے پانچ ہزار زخمی ہوئے6669 معذور ہوگئے312 سوویت فوجی لاپتہ ہوئے اب تک پاکستان 62 ہزار پاکستانی شہید نصف سے زائد زخمی اور معذور کراچکا ہے ہنوزیہ سلسلہ جاری ہے اور امریکی بیرونی امداد کا سوویت افواج کیخلاف یہ نتیجہ نکل رہا ہے کہ مالی لحاظ سے ایک کھرب ڈالرز سے زائد کا نقصان اٹھایا جاچکا ہے کمیو نزم کا قبرستان افغانستان افغانستان کا نعرہ لگواکر مذہب کے نام پر سرخ کافر کو بھگانے والے آج بھی موجود ہیں اور اس خونریزی کا حصہ ہے لیکن کافر نہیں ہے یہ لوگ اس بات پر شرمسار نہیں ہونگے کہ اب وہ روس شمالی و جنوبی وزیر ستان میں پاکستان کی بہادر افواج کے تجربہ سے دہشتگردوں کا قبرستان وزیر ستان بنارہا ہے اور پاکستان کی سلامتی کو یقینی بھی بنارہا ہے مذہبی بنیاد پرست دن بدن کمزور ہورہے ہیں وہ فرار ہوکر پاکستان روس چین ایران میں انہی امریکی حکام سے مدد لے رہے ہیں اور ان ملکوں میں امریکی ایجنڈے پر انسانی قتل و غار تگری میں مصروف عمل ہے لیکن اس کے برعکس پاکستان روس خطہ کے عوام امن کا علم بلند کررہے ہیں پولینڈ کے مفکر کو لادسکی کا قول ہے کہ زندگی کی دو حقیقتیں ہمیشہ یاد رکھنا چاہئے پہلی حقیقت اگر ورثے میں ملنے والی قدیم روایات کے خلاف نئی نسل علم بلند نہ کرتی تو ہم آج بھی تاریک غاروں میں بسیرا کررہے ہوتے دوسری حقیقت اگر یہ تحاریک ہمیشہ تباہ کاری اور قتل و غارت کی ترغیب دیتیں تو ہم واپس تاریک غاروں میں پہنچ جاتے افغانستان کا اپریل انقلاب،انقلاب نہیں فوجی انقلاب تھا جو غریب قبائلی پرانے نظام اور آسودہ زندگی کے لئے پڑھے لکھے نوجوانوں کی قبل از وقت بغاوتی غلطی تھی داﺅر نے قتل کرنے کی کوشش کی تو جان بچانے کے لیے انقلاب لانا پڑا جس کا فائدہ امریکہ نے پاکستان کیساتھ ساتھ ضیاءالحق کو آگے رکھ کر اٹھایا لیکن نقصان روس پاکستان افغانستان کا ہوا وگرنہ افغان انقلاب سوشل ڈیمو کریٹک انقلاب میں بدل سکتا تھا جس کا مقصد مفت صحت تعلیم رہائشی سستی خوراک انسانوں کو سہولیات کی ذمہ دار ریاست ہوتی افغانستان کے انقلاب اپریل کو بھی انہی تناظر میں دیکھنے کی ضرورت ہے۔

وقت اشاعت : 2018-03-13

(0) ووٹ وصول ہوئے

اپنی رائے کا اظہار کریں