کم سن بچوں کو ہتھکڑیاں لگانے اور خواتین ملزمان کی تصاویر اتارنے پر ہیو مین رائٹس ..
بند کریں
تازہ ترین ایڈ یشن کے لیے ابھی کلک کریں
پیر مارچ

مزید قومی خبریں

تاریخ اشاعت: 2015-03-30
تاریخ اشاعت: 2015-03-30
تاریخ اشاعت: 2015-03-30
تاریخ اشاعت: 2015-03-30
تاریخ اشاعت: 2015-03-30
تاریخ اشاعت: 2015-03-30
تاریخ اشاعت: 2015-03-30
تاریخ اشاعت: 2015-03-30
تاریخ اشاعت: 2015-03-30
تاریخ اشاعت: 2015-03-30
تاریخ اشاعت: 2015-03-30
- مزید خبریں

پشاور

تلاش کیجئے

کم سن بچوں کو ہتھکڑیاں لگانے اور خواتین ملزمان کی تصاویر اتارنے پر ہیو مین رائٹس پر کام کرنے والی بارہ این جی اوز نے صوبائی حکومت سے رابطہ

پشاور (اُردو پوائنٹ اخبارآن لائن۔30 مارچ۔2015ء) کم سن بچوں کو ہتھکڑیاں لگانے اور خواتین ملزمان کی تصاویر اتارنے پر ہیو مین رائٹس پر کام کرنے والی بارہ این جی اوز نے صوبائی حکومت سے رابطہ کر لیا ہے ۔ ہیو مین رائٹس پر کام کرنے والے ملکی اور غیر ملکی این جی اوز نے موقف اختیار کیا ہے کہ کیپٹل سٹی پولیس سمیت خیبر پختونخوا پولیس مختلف جرائم میں پکڑے جانے والے ملزمان جن میں کم سن بچے بھی ہوتے ہیں کو حکومتی ہدایات کے باوجود انہیں ہتھکڑیاں لگا کر پیش کیا جاتا ہے ۔

اس خبر کی تفصیل پڑھنے کیلئے یہاں پر کلک کیجئے

30-03-2015 :تاریخ اشاعت

:متعلقہ عنوان