کار سرکار مداخلت مقدمہ،نو منتخب سینیٹر شبلی فراز اور اعظم خان سواتی کے جاری کئے ..
بند کریں
تازہ ترین ایڈ یشن کے لیے ابھی کلک کریں
اتوار مارچ

مزید قومی خبریں

تاریخ اشاعت: 2015-03-29
تاریخ اشاعت: 2015-03-29
تاریخ اشاعت: 2015-03-29
تاریخ اشاعت: 2015-03-29
تاریخ اشاعت: 2015-03-29
تاریخ اشاعت: 2015-03-29
تاریخ اشاعت: 2015-03-29
تاریخ اشاعت: 2015-03-29
تاریخ اشاعت: 2015-03-29
تاریخ اشاعت: 2015-03-29
تاریخ اشاعت: 2015-03-29
- مزید خبریں

اسلام آباد

تلاش کیجئے

کار سرکار مداخلت مقدمہ،نو منتخب سینیٹر شبلی فراز اور اعظم خان سواتی کے جاری کئے گئے وارنٹ گرفتاری عدالت میں حاضر ہونے پر منسوخ ،فرد جرم عائد، آئندہ سماعت اٹھارہ اپریل تک ملتوی

اسلام آباد(اُردو پوائنٹ اخبارآن لائن۔29 مارچ۔2015ء)جوڈیشل مجسٹریٹ ویسٹ اسلام آباد محمد نوید خان کی عدالت نے کار سرکار مداخلت مقدمہ میں پاکستان تحریک انصاف کے نو منتخب سینیٹر شبلی فراز اور خیبر پختونخواہ کے سابق صوبائی صدر اعظم خان سواتی کے جاری کئے گئے وارنٹ گرفتاری عدالت میں حاضر ہونے پر منسوخ کردی ۔ ہفتہ کے روز جوڈیشل مجسٹریٹ محمد نوید خان کی عدالت میں پاکستان تحریک انصاف کے دھرنے کے دوران کارکنوں کی گرفتاری کرنے پر بنائے گئے مقدمہ کیس کی سماعت ہوئی ۔

پاکستان تحریک انصاف کے نو منتخب سینیٹر شبلی فراز اور سابق صوبائی صدر کے پی کے اعظم خان سواتی عدالت میں پیش ہوئے جبکہ پی ٹی آئی کے وکیل سابق صدر اسلام آباد بار ایسوسی ایشن نیاز اللہ خان نیازی عدالت میں پیش ہوئے۔ابتدائی سماعت کے دوران پی ٹی آئی کے وکیل نے عدالت کو بتایا کہ پاکستان تحریک انصاف کے آزادی مارچ دھرنے کے دوران کارکنوں کو گرفتار کیا گیا اور ان کو جیلوں میں بھیجا گیا جس پر بعد ازاں حکومت کی جانب سے پاکستان تحریک انصاف کے سینئر رہنماؤں پر کارسرکار مداخلت میں دفعہ427کے تحت مختلف مقدمات قائم کئے گئے ۔

انہوں نے عدالت کو بتایا کہ پاکستان تحریک انصاف کے سینیٹر اعظم خان سواتی اور شبلی فراز وغیرہ نے قبل ازگرفتاری درخواست ضمانت کروالی تھی لیکن بعد میں نامعلوم وجوہات کی بناء پر عدالت نے حاضری دینے کیلئے تاریخ کا تعین نہیں ہوسکا جس پر عدالت کی

اس خبر کی تفصیل پڑھنے کیلئے یہاں پر کلک کیجئے

29-03-2015 :تاریخ اشاعت

:متعلقہ عنوان