جوقوتیں ایم کیوایم کوختم کرنا چاہتی ہیں، سن لیں تاقیامت ان کاخواب پورانہیں ہوگا،الطا ..
بند کریں
تازہ ترین ایڈ یشن کے لیے ابھی کلک کریں
اتوار مارچ

مزید اہم خبریں

تاریخ اشاعت: 2015-03-29
تاریخ اشاعت: 2015-03-29
تاریخ اشاعت: 2015-03-29
تاریخ اشاعت: 2015-03-29
تاریخ اشاعت: 2015-03-29
تاریخ اشاعت: 2015-03-29
تاریخ اشاعت: 2015-03-29
تاریخ اشاعت: 2015-03-29
تاریخ اشاعت: 2015-03-29
تاریخ اشاعت: 2015-03-29
تاریخ اشاعت: 2015-03-29
پچھلی خبریں - مزید خبریں

تلاش کیجئے

جوقوتیں ایم کیوایم کوختم کرنا چاہتی ہیں، سن لیں تاقیامت ان کاخواب پورانہیں ہوگا،الطا ف حسین،عمران خان نے فوج کے جرنیلوں کے بارے میں جوگستاخی کی ہے وہ عمران خان کو بالواسطہ یابلاواسطہ سپورٹ کرنے والے جرنیلوں کیلئے لمحہ فکریہ ہے ،حکومت پاکستان کے مفاد کو سامنے رکھ کر فیصلے کرے،یمن اور سعودی عرب کی اس جنگ میں پاکستان کونہ دھکیلیں، کارکنان کے ہنگامی اجلاس سے ٹیلی فون پر خطاب

لندن (اُردو پوائنٹ اخبارآن لائن۔29 مارچ۔2015ء )متحدہ قومی موومنٹ کے قائد الطا ف حسین نے کہاہے کہ جوقوتیں ایم کیوایم کوختم کرنا چاہتی ہیں وہ سن لیں کہ انشاء اللہ تاقیامت ان کاخواب پورانہیں ہوگا۔انہوں نے کہاکہ عمران خان نے فوج کے جرنیلوں کے بارے میں جوگستاخی کی ہے وہ عمران خان کو بالواسطہ یابلاواسطہ سپورٹ کرنے والے جرنیلوں کیلئے لمحہ فکریہ ہے ۔ انہوں نے پاکستان کے جرنیلوں ، وزیراعظم اوروفاقی حکومت کومخاطب کرتے ہوئے کہاکہ وہ یمن، شام، عراق،ایران اورسعودی عرب کے معاملات میں پاکستان کے مفادکواولیت دیں اوراس کے دورس نتائج اوراثرات کوسامنے رکھ کرفیصلہ کریں، یمن اور سعودی عرب کی اس جنگ میں پاکستان کونہ دھکیلیں۔

ان خیالات کا اظہار انہوں نے جمعہ اور ہفتہ کی درمیانی شب نائن زیروعزیزآباد کراچی اور حیدرآباد میں کارکنان کے ہنگامی اجلاس سے ٹیلی فون پر خطاب کرتے ہوئے کیا۔صبح کے ساڑھے تین بجنے کے باوجود کراچی اور حیدرآباد میں منعقدہ اجلاسوں میں کارکنان نے ہزاروں کی تعداد میں شرکت کی جس میں خواتین کارکنان بھی بہت بڑی تعداد میں شریک تھیں۔ اس موقع پر کارکنان نے الطاف حسین سے اپنی روایتی والہانہ عقیدت ومحبت اور جوش وخروش کا مظاہرہ کیااور ان کے حق میں فلک شگاف نعرے لگائے ۔

اپنے خطاب میں الطاف حسین نے کہاکہ 11، مارچ 2015ء کوایم کیوایم کے کارکن وقاص علی شاہ کی شہادت کے بعد رینجرز نے نائن زیرو کے اطراف اہل محلہ کے ڈیڑھ سو سے زائد افراد کی گرفتاری اور لائسنس یافتہ اسلحہ کی نمائش کرکے یہ تاثر دینے کی کوشش کی ایسا اسلحہ کہیں اور دستیاب نہیں ہے ۔ اللہ اور اس کا رسول بہتر جانتے ہیں کہ یہ دعوے سراسر جھوٹ پرمبنی ہیں ، رینجرز کے ایک افسر نے میڈیا کے سامنے کہاکہ ایم کیوایم کے رہنماء عامر خان کو گرفتار نہیں کیاجارہا ہے بلکہ یہ ہمارے مہمان ہیں اور انہیں پوچھ گچھ کیلئے ساتھ لے جارہے ہیں لیکن دوسرے دن عامر خان کو دیگر گرفتارشدگان کے ہمراہ آنکھوں پر پٹیاں باندھ کر جنگی قیدیوں کی طرح عدالت میں پیش کیا گیا۔

الطاف حسین نے کہاکہ11، مارچ 2015ء کو نائن زیرو پر چھاپہ مار کر ایم کیوایم کو کرش کرنے کا باقاعدہ آغاز کردیا گیا جوکہ کراچی آپریشن کے کپتان وزیراعلیٰ سندھ قائم علی شاہ کی سربراہی میں کی گئی اورانہیں وزیراعظم میاں نواز شریف اور وفاقی وزیرداخلہ چوہدری نثارعلی خان کی مکمل آشیرباد حاصل ہے ۔نائن زیرو کے اردگردسے پولیس کومطلوب افراد کو پکڑ کر نائن زیرو لاکریہ ظاہر کیا گیا کہ انہیں نائن زیرو سے گرفتارکیا گیا ہے جوکہ سوفیصد جھوٹ ہے ۔

دوسرے ہی دن نائن زیرو سے حفاظتی بیرئیرز ہٹادی گئیں ۔انہوں نے کارکنان سے کہاکہ آپ قسمیہ بتائیں کہ کیا سپریم کورٹ نے کیایہ نہیں کہاتھاکہ جماعت اسلامی ، عوامی نیشنل پارٹی ، پیپلزپارٹی ، مسلم لیگ، سنی تحری، لشکرجھنگوی، لشکرطیبہ، سپاہ صحابہ اورایم کیوایم سمیت دیگرسیاسی ومذہبی جماعتوں کے عسکری ونگ ہیں ؟لیکن کیا ایم کیوایم کے علاوہ کسی اور جماعت کے مرکز اور اس کے قائد کے گھرپر چھاپہ مارا گیا؟ جس پر شرکاء نے بلند آواز سے جواب دیا”ہرگز نہیں“۔

الطاف حسین نے کہاکہ نائن زیرو پر چھاپہ مارنے اور وہاں سے رکاوٹیں ہٹانے کے بعد ایم کیوایم دشمنی میں دنیا کی تاریخ کی انوکھی مثال قائم کی گئی، پھانسی کی سزا کے قیدی کے ڈیتھ وارنٹ جاری ہونے اور رشتہ داروں سے آخری ملاقات کرانے کے بعد اس قیدی کو ڈیتھ سیل سے نکال کر غیرآئینی اور غیرقانونی طورپر وڈیو بیان لیا گیا جس کا نہ تو وزیراعظم پاکستان نے اور نہ ہی سپریم کورٹ نے نوٹس لیا ۔ آج بھی ایم کیوایم کے وفد سے ملاقات کے بعدوزیراعظم محمد نواز شریف نے کہاکہ کراچی آپریشن جرائم پیشہ افراد کے خلاف ہورہا ہے ، اگریہ درست ہے تو ضرور کیجئے لیکن گلو بٹ نامی مسلم لیگ (ن) کانامی گرامی کارکن کھلے عام گاڑیاں توڑے اور دکانوں کو لوٹے اس کی گرفتاری کیلئے پولیس نے میاں نوازشریف کے گھر پر چھاپہ کیوں نہیں مارا؟ الطاف حسین نے کہاکہ آج تحریک انصاف کے رہنماء عمران خان اور عارف علوی کی گفتگو کی ٹیپ منظرعام پر آئی تو عمران خان نے اس حوالہ سے صحافیوں کے سوال کا جواب دینے کے بجائے مجھے مغلظات دینی شرو ع کردیں، آخر میں نے عمران خان کا کیابگاڑا ہے ؟ نائن زیروپر چھاپہ کے بعد عمران خان ،شیریں مزاری صاحبہ اور پی ٹی آئی کے لوگوں نے سب سے پہلے خوشی کے شادیانے بجائے اور ایم کیوایم کو قانون پسندی کا درس دیا لیکن آج جب تحریک انصاف کے سینیٹر شبلی فراز اور رہنماء اعظم سواتی کی گرفتاری کیلئے ان کے گھروں پر چھاپہ ماراگیا تو وہ فرار ہوگئے اور عمران خان نے ان کے گھروں پر چھاپوں کی مذمت کی اورچھاپوں کو غیرجمہوری اور غیرقانونی قراردیا۔

الطاف حسین نے کہاکہ عمران خان اگر پولیس اہلکاروں کو تشدد کا نشانہ بنائے اورپولیس کی حراست سے اپنے کارکنان کو بمعہ اسلحہ چھڑا کر لے جائے تو اس عمل کے خلاف کوئی آوازنہیں اٹھاتا۔ الطاف حسین نے کہاکہ پاک فوج کے جوجرنیل بالواسطہ یابلاواسطہ عمران خان کی سپورٹ کرتے ہیں انہیں میں آج عمران خان کی ایک وڈیو دکھاتا ہوں، اس میں گفتگو کرتے ہوئے عمران خان نے فوج کے جرنیلوں کے بارے میں جوگستاخی

اس خبر کی تفصیل پڑھنے کیلئے یہاں پر کلک کیجئے

29-03-2015 :تاریخ اشاعت