صولت مرزا کی ویڈیو ریلیز کرنے پر وزیراعظم سمیت ذمہ داران کے خلاف پرچہ کٹوانا چاہتے ..
بند کریں
تازہ ترین ایڈ یشن کے لیے ابھی کلک کریں
جمعہ مارچ

مزید اہم خبریں

تاریخ اشاعت: 2015-03-27
تاریخ اشاعت: 2015-03-27
تاریخ اشاعت: 2015-03-27
تاریخ اشاعت: 2015-03-27
تاریخ اشاعت: 2015-03-27
تاریخ اشاعت: 2015-03-27
تاریخ اشاعت: 2015-03-27
تاریخ اشاعت: 2015-03-27
تاریخ اشاعت: 2015-03-27
تاریخ اشاعت: 2015-03-27
تاریخ اشاعت: 2015-03-27
- مزید خبریں

اسلام آباد

تلاش کیجئے

صولت مرزا کی ویڈیو ریلیز کرنے پر وزیراعظم سمیت ذمہ داران کے خلاف پرچہ کٹوانا چاہتے ہیں، الطاف حسین ،کراچی میں کسی کالعدم تنظیم کا سربراہ نہیں پکڑا گیا،میرے اوپر عمران فاروق قتل کا کوئی مقدمہ نہیں،منی لانڈرنگ کا کیس چل رہا ہے،وزیراعلیٰ سندھ سے مذاکرات خانہ پری ہیں اصل مذاکرات زرداری صاحب سے ہوں گے،فوج کے کسی جرنیل کو میری کوئی بات بری لگی ہے تو بڑا پن دکھا کر مجھے معاف کردیں،نجی ٹی وی کو انٹرویو

اسلام آباد(اُردو پوائنٹ اخبارآن لائن۔27 مارچ۔2015ء)ایم کیو ایم کے قائد الطاف حسین نے کہا ہے کہ صولت مرزا کی ویڈیو ریلیز کرنے پر وزیراعظم سمیت ذمہ داران کے خلاف پرچہ کٹوانا چاہتے ہیں،کراچی میں کسی کالعدم تنظیم کا سربراہ نہیں پکڑا گیا،میرے اوپر عمران فاروق قتل کا کوئی مقدمہ نہیں،منی لانڈرنگ کا کیس چل رہا ہے،وزیراعلیٰ سندھ سے مذاکرات خانہ پری ہیں اصل مذاکرات زرداری صاحب سے ہوں گے،فوج کے کسی جرنیل کو میری کوئی بات بری لگی ہے تو بڑا پن دکھا کر مجھے معاف کردیں۔

نجی ٹی وی کے پروگرام میں اظہار خیال کرتے انہوں نے کہا کہ جب تک زرداری صاحب تحریری یقین دہانی نہیں کراتے معاہدہ نہیں ہوگا۔انہوں نے کہا کہ مجھ سے الجھنے والا کبھی اس دنیا میں خوش نہیں رہا،1992ء میں بھی آپریشن کا رخ ایم کیو ایم کی طرف موڑ دیاگیا۔انہوں نے کہا کہ چوہدری نثار اسٹبلشمنٹ کے خلاف ایک جملہ بھی نہیں بولتے،نوازشریف نے لندنمیں میرے گھر آکر1992ء کے آپریشن سے متعلق معافی مانگی تھیں۔

انہوں نے کہا کہ سینیٹ الیکشن کے موقع پر شہبازشریف نے فون کرکے تعاون کرنے کو کہا تھا،میں نے جواب میں کہا کہ بہت دیر کردی مہربان آتے آتے۔انہوں نے کہا کہ صولت مرزا کی ریڈیو ریلیز کرنے والے وزیراعظم سمیت جتنے بھی ذمہ داران میں پرچہ کٹوانا چاہتا ہوں،میرے وکلاء ابھی تک کسی نتیجے پر نہیں پہنچے ہیں۔صولت مرزا کا بیان باہر کیسے آیا۔رانا ثناء اللہ مجھے قانون کی وہ شق بتا دیں جس

اس خبر کی تفصیل پڑھنے کیلئے یہاں پر کلک کیجئے

27-03-2015 :تاریخ اشاعت