قومی اسمبلی میں سپیکر ایاز صادق اور نفیسہ شاہ کے درمیان قواعد کی تشریح کے معاملے ..
بند کریں
تازہ ترین ایڈ یشن کے لیے ابھی کلک کریں
جمعرات مارچ

مزید قومی خبریں

تاریخ اشاعت: 2015-03-26
تاریخ اشاعت: 2015-03-26
تاریخ اشاعت: 2015-03-26
تاریخ اشاعت: 2015-03-26
تاریخ اشاعت: 2015-03-26
تاریخ اشاعت: 2015-03-26
تاریخ اشاعت: 2015-03-26
تاریخ اشاعت: 2015-03-26
تاریخ اشاعت: 2015-03-26
تاریخ اشاعت: 2015-03-26
تاریخ اشاعت: 2015-03-26
پچھلی خبریں - مزید خبریں

اسلام آباد

اسلام آباد شہر میں شائع کردہ مزید خبریں

وقت اشاعت: 19/01/2017 - 11:05:05 وقت اشاعت: 19/01/2017 - 11:05:06 وقت اشاعت: 19/01/2017 - 11:05:09 وقت اشاعت: 19/01/2017 - 11:05:16 وقت اشاعت: 19/01/2017 - 11:11:11 وقت اشاعت: 19/01/2017 - 11:11:13 اسلام آباد کی مزید خبریں

تلاش کیجئے

قومی اسمبلی میں سپیکر ایاز صادق اور نفیسہ شاہ کے درمیان قواعد کی تشریح کے معاملے پر جھڑپ، (ن) لیگی نو منتخب رکن شذرہ منصب علی کو قواعد کے منافی فلور دیاگیا ،پی پی کی رکن کاسپیکر پر الزام ، اعلیٰ تعلیم بھی خاتون رکن کا کچھ نہیں بگاڑ سکی، وفاقی وزیرخواجہ آصف کے ریمارکس

اسلام آباد (اُردو پوائنٹ اخبارآن لائن۔26 مارچ۔2015ء)قومی اسمبلی میں سپیکر ایاز صادق اور پی پی کی رکن اسمبلی نفیسہ شاہ کے درمیان قواعد کی تشریح کے معاملے پر جھڑپ، سپیکر نے وزارت پٹرولیم بارے توجہ دلاؤ نوٹس پر بحث کے دوران وزیر پانی و بجلی کو فلور دینا چاہا تو نفیسہ شاہ اپنی نشست پر اٹھ کھڑی ہوئیں اور سپیکر پر ایوان کی کارروائی قواعد کے منافی چلانے کا الزام عائد کر دیا اور کہا کہ سپیکر نے گزشتہ روز بھی (ن) لیگی نو منتخب رکن شذرہ منصب علی کو قواعد کے منافی فلور دیا، اس موقع پر وزیر پانی و بجلی خواجہ آصف نے بھی نفیسہ شاہ پر چڑھائی کر دی اور کہا کہ اعلیٰ تعلیم بھی خاتون رکن کا کچھ نہیں بگاڑ سکی، نفیسہ شاہ کو خاتون رکن کہنے پر بھی اعتراض کیا اور کہا کہ وزیر صرف ممبر کہہ کر مخاطب کریں،خواجہ آصف نے جملہ کسا کہ انہیں لیڈی ممبر کی بجائے فیڈرل ممبر کہہ کر مخاطب کریں ۔

بدھ کو قومی اسمبلی میں اس وقت ماحول ناخوشگوار ہو گیا جب نفیسہ شاہ اور شازیہ مری نے سپیکر کی جانب سے خواجہ آصف کو فلور دینے کو خلاف قواعد قرار دے دیا۔ سپیکر نے کہا کہ وہ قواعد کے مطابق ایوان چلا رہے ہیں اور آئندہ زیادہ سختی سے قواعد

اس خبر کی تفصیل پڑھنے کیلئے یہاں پر کلک کیجئے

26-03-2015 :تاریخ اشاعت