ملک میں احتساب بنانے اور ملک سے کرپشن کے مکمل خاتمہ کیلئے ملک میں نیا آزادخودمختار ..
بند کریں
تازہ ترین ایڈ یشن کے لیے ابھی کلک کریں
بدھ مارچ

مزید اہم خبریں

تاریخ اشاعت: 2015-03-25
تاریخ اشاعت: 2015-03-25
تاریخ اشاعت: 2015-03-25
تاریخ اشاعت: 2015-03-25
تاریخ اشاعت: 2015-03-25
تاریخ اشاعت: 2015-03-25
تاریخ اشاعت: 2015-03-25
تاریخ اشاعت: 2015-03-25
تاریخ اشاعت: 2015-03-25
تاریخ اشاعت: 2015-03-25
تاریخ اشاعت: 2015-03-25
پچھلی خبریں - مزید خبریں

اسلام آباد

اسلام آباد شہر میں شائع کردہ مزید خبریں

وقت اشاعت: 17/01/2017 - 11:10:36 وقت اشاعت: 17/01/2017 - 11:10:38 وقت اشاعت: 17/01/2017 - 11:10:39 وقت اشاعت: 17/01/2017 - 10:35:10 وقت اشاعت: 17/01/2017 - 11:10:41 وقت اشاعت: 17/01/2017 - 11:10:41 اسلام آباد کی مزید خبریں

تلاش کیجئے

ملک میں احتساب بنانے اور ملک سے کرپشن کے مکمل خاتمہ کیلئے ملک میں نیا آزادخودمختار احتساب ادارہ کے قیام کیلئے آئینی بل قومی اسمبلی میں پیش ، بل کے تحت موجودہ احتساب آرڈیننس 2000 ختم کرکے احتساب کا نیا ادارہ بنے گا جو وزیراعظم سے لیکر ہر سرکاری افسر کا احتساب کرسکے گا۔نئے ادارے کا سربراہ الیکشن کے ذریعے چنا جائے گا،نئے بل کے تحت (سرکاری خزانہ بل2015ء) نام ہوگا،ہمیں کرپشن کو ابتداء سے حتم کرنا ہوگا عوام کو سبز باغ نہیں دکھائیں گے۔رضا حیات ہراج ، کرپشن نے ملک کا بیڑا غرق کردیا ہے،اس بل کو قائمہ کمیٹی میں جانا چاہئے وہاں ضروری ترامیم کرلی جائیں گی،ملک سے کرپشن کو ختم کرنا ہوگا،خورشید شاہ

اسلام آباد(اُردو پوائنٹ اخبارآن لائن۔25 مارچ۔2015ء)ملک میں احتساب بنانے اور ملک سے کرپشن کے مکمل خاتمہ کیلئے ملک میں نیا آزادخودمختار احتساب ادارہ کے قیام کیلئے آئینی بل قومی اسمبلی میں پیش کیا گیا،یہ بل(ن) لیگ کے ایم این اے رضاحیات ہراج نے پیش کیا،بل کے تحت موجودہ احتساب آرڈیننس 2000 ختم کرکے احتساب کا نیا ادارہ بنے گا جو وزیراعظم سے لیکر ہر سرکاری افسر کا احتساب کرسکے گا۔نئے ادارے کا سربراہ الیکشن کے ذریعے چنا جائے گا،نئے بل کے تحت (سرکاری خزانہ بل2015ء) نام ہوگا۔

رضا حیات ہراج نے بل پر اظہار خیال کرتے ہوئے کہا کہ الزام ہے کہ سیاستدان ملک کو آگے نہیں لے کر جانا چاہتے میں یہ اہم موڑ ہے کہ ہر ملک سیاسی لوگوں نے بنایا،سیاسی لوگوں کو آگے بڑھنا ہوگا،ملک کا مستقبل پارلیمنٹ ہے فیصلے اس فورم پر ہونا چاہئے۔نیب کے بارعے میں امیج لے کر یہ ادارہ سیاستدانوں کیلئے ہے،ملک کے کرپٹ افراد ہوں،انہیں غدار اور بغاوت کے قانون کے تحت ٹرائل ہونا چاہئے۔انہوں نے کہا کہ حکومت کے اندر جو عوامی ٹیکس سے فائدہ ملتا ہے وہ جواب دہ ہے،بل کے اندر سکروٹنی کمیٹی بنائی جائے گی جو چےئرمین نیب کو چنے گی۔

ٹیکس کی ادائیگی ہم پر فرض ہے،ٹیکس عوام کے مفاد پر خرچ ہونے چاہئے،کسی کا نام انصاف رکھنے سے انصاف نہیں ہوتا ہمیں کرپشن کو ابتداء سے حتم کرنا ہوگا عوام کو سبز باغ نہیں دکھائیں گے۔ملک کے ادارہ احتساب کا خود مختار ادارہ ہونا چاہئے جو آزاد ہوگا،اس کا اپنا الیکشن کمیشن ہوگا جو منتحب ہوگا،9ریجنل آفس ہوں گے ڈیپوٹیشن پر تعینات نہیں ہوں گے،نئے احتساب ادارہ کا ملازم کہیں اور نہیں جائے گا۔وزیرپارلیمانی امور شیخ آفتاب نے کہا کہ ملک سے کرپشن کا خاتمہ اہم عنصر ہے،(ن) لیگ حکومت کا منشور بھی کرپشن کا خاتمہ

اس خبر کی تفصیل پڑھنے کیلئے یہاں پر کلک کیجئے

25-03-2015 :تاریخ اشاعت