امریکا، آزادی اظہار کی آڑ میں گستاخانہ خاکوں کی نمائش کا اعلان ، ٹیکساس میں مقامی ..
بند کریں
تازہ ترین ایڈ یشن کے لیے ابھی کلک کریں
اتوار مارچ

مزید بین الاقوامی خبریں

تاریخ اشاعت: 2015-03-22
تاریخ اشاعت: 2015-03-22
تاریخ اشاعت: 2015-03-22
تاریخ اشاعت: 2015-03-22
تاریخ اشاعت: 2015-03-22
تاریخ اشاعت: 2015-03-22
تاریخ اشاعت: 2015-03-22
تاریخ اشاعت: 2015-03-22
تاریخ اشاعت: 2015-03-22
-

تلاش کیجئے

امریکا، آزادی اظہار کی آڑ میں گستاخانہ خاکوں کی نمائش کا اعلان ، ٹیکساس میں مقامی تنظیم کا 3 مئی کو گستاخانہ خاکوں کی نمائش کا اعلان ، آ ن لائن مقابلے میں انعام بھی دیا جائے گا،رپورٹ

ڈیلاس (اُردو پوائنٹ اخبارآن لائن۔22 مارچ۔2015ء) امریکی ریاست ٹیکساس میں ایک مقامی تنظیم نے گارلینڈ سینٹر میں 3 مئی کو گستاخانہ خاکوں کی نمائش کا اعلان کیا ہے۔ آ ن لائن مقابلے میں انعام بھی دیا جائے گا۔میڈیارپورٹ کے مطابق امریکامیں اظہار آزادی کی آڑ میں مسلمانوں کے خلاف نفرت پر مبنی پروگرام اور مظاہرے اور نفرت انگیز تحریر و تقریر کے پروگرام تشکیل دینے میں سرگرم عمل امریکا کی غیر سرکاری تنظیم امریکن فریڈم ڈفیس انسٹیٹیوٹ ہے۔

خفیہ طور پر ریپبلکن پارٹی کی ذیلی تنظیم ٹی پارٹی سے تعلق رکھنے والی پامیلا گیلر جو اس تنظیم کی صدربھی ہے، 14 جون 1958ء کو نیو یارک کے علاقے لانک آلینڈ کے ایک یہودی گھرانے میں پیدا ہوئی ،اس نینمائش کا مقام ”کرسٹی کالی ویل سینٹر“ رکھا ہے جبکہ اس کا عنوان بھی ”اظہار رائے کی آزادی کے لئے کھڑے رہو“ کے نام سے موسوم کیا ہے۔واضح رہے کہ یہ وہ ہی مقام ہے جہاں مقامی امریکن مسلم تنظیم نے ایک ماہ قبل کانفرنس بعنوان ”نبی کے ساتھ کھڑے رہو“ منعقد

اس خبر کی تفصیل پڑھنے کیلئے یہاں پر کلک کیجئے

22-03-2015 :تاریخ اشاعت