آرمی چیف جنرل راحیل شریف سے افغانستان میں اتحادی فوج کے کمانڈرجنرل جان کیمپل ،برطانوی ..
بند کریں
تازہ ترین ایڈ یشن کے لیے ابھی کلک کریں
جمعہ مارچ

مزید اہم خبریں

تاریخ اشاعت: 2015-03-20
تاریخ اشاعت: 2015-03-20
تاریخ اشاعت: 2015-03-20
تاریخ اشاعت: 2015-03-20
تاریخ اشاعت: 2015-03-20
تاریخ اشاعت: 2015-03-20
تاریخ اشاعت: 2015-03-20
تاریخ اشاعت: 2015-03-20
تاریخ اشاعت: 2015-03-20
تاریخ اشاعت: 2015-03-20
تاریخ اشاعت: 2015-03-20
پچھلی خبریں - مزید خبریں

راولپنڈی

تلاش کیجئے

آرمی چیف جنرل راحیل شریف سے افغانستان میں اتحادی فوج کے کمانڈرجنرل جان کیمپل ،برطانوی آرمی چیف آف آرمی سٹاف جنرل سرکولس کارٹر کی ملاقات، پاک افغان سرحدپرسیکورٹی اورباہمی دلچسپی کے امورپرتبادلہ خیال ،برطانیہ کے آرمی چیف کی یادگار شہداء پر حاضری ، پھولوں کی چادر چڑھائی

راولپنڈی(اُردو پوائنٹ اخبارآن لائن۔20 مارچ۔2015ء)آرمی چیف جنرل راحیل شریف سے افغانستان میں اتحادی فوج کے کمانڈرجنرل جان کیمپل کی ملاقات میں پاک افغان سرحدپرسیکورٹی اورباہمی دلچسپی کے امورپرتبادلہ خیال کیاگیا۔آئی ایس پی آرکے مطابق افغانستان میں تعینات اتحادی افواج کے کمانڈرجنرل جان کیمپل پاکستان کے دورے پرجمعرات کواسلام آبادپہنچے ۔انہوں نے جی ایچ کیومیں آرمی چیف جنرل راحیل شریف سے ملاقات کی ،دونوں رہنماوٴں کے درمیان ملاقات میں باہمی دلچسپی کے امورپاک افغان سرحدپرسیکورٹی کی صورتحال پرتبادلہ خیال کیاگیا۔

ادھربرطانوی آرمی چیف آف آرمی سٹاف جنرل سرکولس کارٹر کا پاک آرمی کے ہیڈ کوارٹر کا دورہ اس موقع پر آرمی چیف جنرل راحیل شریف نے برطانوی ہم منصب کا استقبال کیا ۔ جنرل کرکولس کارٹر کے اعزاز میں گارڈ آف آنر بھی پیش کیا گیا ہے آئی ایس پی آڑ کے مطابق جمعرات کے روز برطانیہ کے چیف آف آرمی سٹاف نے آرمی ہیڈ کوارٹر کا دورہ کیا ہے آرمی ہیڈکوارٹر کے دورے کے درمیان برطانیہ کے آرمی چیف اور جنرل راحیل شریف کے درمیان ون ٹو ون ملاقات بھی ہوئی ہے جس میں دونوں رہنماؤں نے پاک برطانیہ کے باہمی امور خطے کی مجموعی صورت حال پر تبادلہ خیال کیا اس کے علاوہ دونوں رہنماؤں نے دونوں ممالک کے درمیان سیکورٹی تعاون بڑھانے پر بھی غور کیا ہے برطانوی ہم منصب کو پاک آرمی کے آپریشنل اور تربیتی امور پر تفصیلی بریفنگ بھی دی گئی ہے بعد ازاں برطانیہ کے آرمی چیف جنرل سرکولس کارٹر نے یادگار شہداء پر حاضری دی اور پھولوں کی چادر چڑھائی ہے ۔

20-03-2015 :تاریخ اشاعت