موبائل فون کے ذریعے ماوٴں اور نومولود بچوں کی زندگی کی جنگ
بند کریں
تازہ ترین ایڈ یشن کے لیے ابھی کلک کریں
بدھ مارچ

مزید بین الاقوامی خبریں

تاریخ اشاعت: 2015-03-18
تاریخ اشاعت: 2015-03-18
تاریخ اشاعت: 2015-03-18
تاریخ اشاعت: 2015-03-18
تاریخ اشاعت: 2015-03-18
تاریخ اشاعت: 2015-03-18
تاریخ اشاعت: 2015-03-18
تاریخ اشاعت: 2015-03-18
-

تلاش کیجئے

موبائل فون کے ذریعے ماوٴں اور نومولود بچوں کی زندگی کی جنگ

نئی دہلی(اُردو پوائنٹ اخبارآن لائن۔18 مارچ۔2015ء)بھارت میں ہزاروں مائیں زچگی کے دوران ہلاک ہو جاتی ہیں جبکہ لاکھوں بچے پانچ برس کی عمر تک پہنچنے سے قبل ہی انتقال کر جاتے ہیں۔ اس صورتحال سے نمٹنے کے لیے موبائل فون پیغامات پر مبنی آگاہی کا ایک پروگرام شروع کیا جا رہا ہے۔ اس موبائل فون سروس کے ذریعے حاملہ ماوٴں کو ویکسینیشن اور خوراک کے حوالے سے بھی آگاہی دی جائے گی۔بھارت کی قریب ایک ارب 25 کروڑ آبادی کے لیے ڈاکٹرز اور ہسپتالوں کی سہولیات انتہائی ناکافی ہیں۔

اسی باعث بھارت کا شمار ان ممالک میں ہوتا ہے جہاں زچگی کے دوران ماوٴں اور نومولود بچوں کی ہلاکت کی شرح سب سے زیادہ ہے۔اس صورتحال میں ایسے دْور دراز علاقوں میں موجود حاملہ اور نومولود بچوں کی ماوٴں کو صحت سے متعلق معاملات اور مشوروں کے لیے بھارت نے اپنے موبائل فون نیٹ ورک سے فائدہ اٹھانے کا فیصلہ کیا ہے، جس کے 950 ملین صارفین ہیں اور یہ دنیا کا دوسرا سب سے بڑا نیٹ ورک ہے۔بھارتی وزرات صحت کے ایک اہلکار منوج جھلانی کے مطابق، ”یہ ہمارے لیے ایک بہت اہم ترجیح ہے۔

“ ان کا مزید کہنا تھا کہ یہ سروس ملک کے آٹھ ہندی بولنے والے صوبوں میں 15 اگست سے شروع کر دی جائے گی۔ اس سروس کے ذریعے ویکسینیشن اور حاملہ ماوٴں کو خوراک کے حوالے سے بھی آگاہی دی جائے گی۔’قِلقاری‘ یعنی بچے کا کھلھلا کر ہنسنا، نامی اس پراجیکٹ کے سپروائرز منوج جھلانی کے مطابق، اس پروگرام

اس خبر کی تفصیل پڑھنے کیلئے یہاں پر کلک کیجئے

18-03-2015 :تاریخ اشاعت

:متعلقہ عنوان