قومی اسمبلی میں سانحہ یوحنا آباد لاہور کی مذمت،، اقلیتوں پر حملہ انتہائی افسوسناک ..
بند کریں
تازہ ترین ایڈ یشن کے لیے ابھی کلک کریں
منگل مارچ

مزید اہم خبریں

تاریخ اشاعت: 2015-03-17
تاریخ اشاعت: 2015-03-17
تاریخ اشاعت: 2015-03-17
تاریخ اشاعت: 2015-03-17
تاریخ اشاعت: 2015-03-17
تاریخ اشاعت: 2015-03-17
تاریخ اشاعت: 2015-03-17
تاریخ اشاعت: 2015-03-17
تاریخ اشاعت: 2015-03-17
تاریخ اشاعت: 2015-03-17
پچھلی خبریں -

اسلام آباد

تلاش کیجئے

قومی اسمبلی میں سانحہ یوحنا آباد لاہور کی مذمت،، اقلیتوں پر حملہ انتہائی افسوسناک ہے،اس طرح کے واقعات سے پاکستان کا امیج پوری دنیا میں خراب ہورہا ہے، سانحہ کے بعد کا ردعمل بہت ہی خطرناک اور افسوسناک عمل ہے سکیورٹی ایجنسیوں کی ذمہ داری ہے کہ وہ ان واقعات کو روکیں اور اس پر صوبائی اور وفاقی حکومت ایکشن لے،اراکین قومی اسمبلی ، دہشتگردی کا مسئلہ اب صرف صوبائی نہیں بلکہ یہ قومی مسئلہ بن گیا ہے، سب کو مل بیٹھ کر اس دہشتگردی کی بلا سے نجات پانا ہوگا ورنہ مصر کی حالت ہوگی ، نوید قمر،آسیہ ناصر، عبدالرحیم مندوخیل ،نعیمہ کشور،آصف حسینن، روشن لال،عائشہ سید،سنجے گورمانی،غلام بلور، جی جی جمال اور دیگر کا نکتہ اعتراض پر اظہار خیال

اسلام آباد( اُردو پوائنٹ اخبارآن لائن۔17 مارچ۔2015ء )قومی اسمبلی میں سانحہ یوحنا آباد لاہور کی مذمت کرتے ہوئے کہا گیا ہے کہ اقلیتوں پر حملہ انتہائی افسوسناک ہے، اس طرح کے واقعات سے پاکستان کا امیج پوری دنیا میں خراب ہورہا ہے،یہ واقعات پوری دنیا میں اٹھائے جاتے ہیں جس سے پورے ملک کی بدنامی ہوتی ہے، سانحہ کے بعد دو افرادکا تشدد سے قتل اور سرکاری املاک کو جو نقصان پہنچانا بہت ہی خطرناک اور افسوسناک عمل ہے سکیورٹی ایجنسیوں کی ذمہ داری ہے کہ وہ ان واقعات کو روکیں اور اس پر صوبائی اور وفاقی حکومت ایکشن لے، دہشتگردی کا مسئلہ اب صرف صوبائی نہیں بلکہ یہ قومی مسئلہ بن گیا ہے، سب کو مل بیٹھ کر اس دہشتگردی کی بلا سے نجات پانا ہوگا ورنہ مصر کی حالت ہوگی ۔

ان خیالات کا اظہار اراکین قومی اسمبلی نے پیر کے روز قومی اسمبلی کے اجلاس میں نکتہ اعتراض پر اظہار خیال کرتے ہوئے کیا ۔ پیپلز پارٹی کے رکن قومی اسمبلی نوید قمر نے کہا ہے کہ سانحہ لاہور اقلیتوں پر حملہ انتہائی افسوسناک ہے اس طرح کے واقعات پوری دنیا میں اٹھائے جاتے ہیں جس سے پورے ملک کی بدنامی ہوتی ہے اس طرح کے واقعات سے پاکستان کا معیار دنیا کی نظروں میں مزید گر جاتا ہے ابھی تک دہشتگردوں کو قابو کرنے میں ناکام ہیں اس سلسلے میں صوبوں اور وفاق کو اپنی کارکردگی مزید بہتر کرنے کی ضرورت ہے ۔

جمعیت علماء اسلام (ف) آسیہ ناصر نے کہا کہ سانحہ لاہور کے حملے پر اقلیتوں سے اظہار یکجہتی اور افسوس کا اظہار کرتی ہوں اس وقت پاک فوج بہت اہم آپریشن کررہی ہے اس وقت ملک کا دشمن بالکل واضح ہے جو پوری قوم کا دشمن ہے اس طرح کے واقعات ہونے سے پاکستان کا امیج پوری دنیا میں خراب ہورہا ہے اقلیتوں پر حملہ کرنا انتہائی افسوسناک واقعہ ہے حکومت کو گرجا گھروں اور امام بارگاہوں اور مساجد کی حفاظت پر اپنی توجہ مرکوز کرنی چاہیے۔

پختونخواہ ملی عوامی پارٹی کے عبدالرحیم مندوخیل نے کہا کہ ہم یہ غیر مغربی واقعہ ہے اور انسانیت کیخلاف ہے ایک انسان اور مسلمان کا ایسا عمل نہیں ہوسکتا ہے اس کی شدید مذمت کرتے ہیں انہوں نے کہا کہ دہشتگردی اور اس کی جو ٹریننگ ہورہی ہے اس کو ختم کیاجائے ہاؤس میں تمام جماعتوں کا ایک موقف ہونا چاہیے اور پارلیمنٹ کو اس حوالے سے اپنا کردار ادا کرنا چاہیے ۔ جمعیت علمائے اسلام (ف) کی نعیمہ کشور نے کہا کہ لاہور کا سانحہ ملک کو بدنام کرنے کی سازش ہے اور اس کا مقصد ہے کہ ملک کو باہر کی دنیا میں بدنام کیا جائے اور ملک کے اندر انتشار پھیلایا جائے ۔

انہوں نے کہا کہ دہشتگردی سے اسلام کو بدنام کیا جارہا ہے اور اس واقعہ سے ایک ہی بات سامنے آتی ہے کہ وہ تشدد جو کہ قابل مذمت ہے ۔ انہوں نے کہا کہ لاہور سانحہ کے بعد سرکاری املاک کو جو نقصان پہنچایا گیا ہے یہ بہت ہی خطرناک اور افسوسناک عمل ہے سکیورٹی ایجنسیوں کی ذمہ داری ہے کہ وہ ان واقعات کو روکیں اور اس پر صوبائی اور وفاقی حکومت ایکشن لے ۔ نواز لیگ کے اقلیتی رکن قومی اسمبلی ڈاکٹر روشن لال نے کہا کہ اس واقعہ میں جو بھی ملوث ہے اس کو کیفرے کردار تک پہنچایا جائے اس کی امید کرتے ہیں حکومت عمل کرے گی میں عیسائی بھی بھی ہوں سے اپیل کرتا ہوں کہ تشدد نہ کرے اور ان کیخلاف سازش ہورہی ہے اور وہ اس سازش کو سمجھیں ۔

انہوں نے کہا کہ گرجا گھروں ،مندروں اور دیگر مذاہب کی عبادت گاہوں کے لیے موثر سکیورٹی کا انتظام کیا جائے ۔ ایم کیو ایم کے آصف حسنین نے کہا کہ ہم سانحہ یوحنا آباد کی شدید مذمت کرتے ہیں جبکہ

اس خبر کی تفصیل پڑھنے کیلئے یہاں پر کلک کیجئے

17-03-2015 :تاریخ اشاعت