جاسوسی کے الزام میں ایرانی جوہری سائنس دان کو دس سال قید کی سزا
بند کریں
تازہ ترین ایڈ یشن کے لیے ابھی کلک کریں
پیر مارچ

مزید بین الاقوامی خبریں

تاریخ اشاعت: 2015-03-16
تاریخ اشاعت: 2015-03-16
تاریخ اشاعت: 2015-03-16
تاریخ اشاعت: 2015-03-16
تاریخ اشاعت: 2015-03-16
تاریخ اشاعت: 2015-03-16
تاریخ اشاعت: 2015-03-16
تاریخ اشاعت: 2015-03-16
-

تلاش کیجئے

جاسوسی کے الزام میں ایرانی جوہری سائنس دان کو دس سال قید کی سزا

تہرا ن (اُردو پوائنٹ اخبارآن لائن۔16 مارچ۔2015ء)ایران کی ایک فوج داری عدالت نے ملک کے سرکردہ ایٹمی سائنس دان اور ماضی کے ’ہیرو‘ کو ایک دشمن ملک کے لیے جاسوسی کے الزام میں دس سال قید اور رہائی کے بعد دس سال تک صوبہ بلوچستان کے شہر”خاش“ میں نظر بند رہنے کی سزا سنائی ہے۔العربیہ ڈاٹ نیٹ کے مطابق ایرانی میڈیا میں آنے والی اطلاعات میں بتایا گیا ہے کہ جوہری سائنس دان شہرام امیری پر ایک 'دشمن' ملک کے لیے جاسوسی کا الزام عاید کیا گیا ہے۔

وہ اسی الزام کے تحت گذشتہ 20 ماہ سے تہران کی ایک بدنام زمانہ فوجی جیل میں پابند سلاسل ہیں۔ایران کے فارسی نیوز ویب پورٹل”صبح امروز“ کی رپورٹ کے مطابق شہرام امیری کو بیس ماہ پہلے ملٹری پراسیکیوٹر جنرل کی ہدایت پر حراست میں لیا گیا تھا۔پچھلے سال مئی میں ایرانی میڈیا نے اطلاع دی تھی کہ زیر حراست جوہری سائنس دان شہرام امیری نے جیل میں بھوک ہڑتال کر رکھی ہے۔ انہوں نے جیل میں تقریباً ایک ماہ تک بھوک ہڑتال کی تھی۔

گرفتاری کے بعد سے وہ مسلسل تہران کی ”حشمتیہ“ نامی ایک جیل میں قید ہیں۔ قیدیوں کے ساتھ بدسلوکی کے حوالے سے یہ جیل ایران کی بدنام ترین جیلوں میں شمار کی جاتی ہے۔خیال رہے کہ شہرام امیری ایران کے ایٹمی پروگرام میں شامل

اس خبر کی تفصیل پڑھنے کیلئے یہاں پر کلک کیجئے

16-03-2015 :تاریخ اشاعت