عملے کی غفلت کے باعث نیشنل ہیلتھ سروسز میں تیرہ لاکھ ڈالر کی ویکسین خراب ہوگئی
بند کریں
تازہ ترین ایڈ یشن کے لیے ابھی کلک کریں
جمعرات مارچ

مزید اہم خبریں

تاریخ اشاعت: 2015-03-12
تاریخ اشاعت: 2015-03-12
تاریخ اشاعت: 2015-03-12
تاریخ اشاعت: 2015-03-12
تاریخ اشاعت: 2015-03-12
تاریخ اشاعت: 2015-03-12
تاریخ اشاعت: 2015-03-12
تاریخ اشاعت: 2015-03-12
تاریخ اشاعت: 2015-03-12
تاریخ اشاعت: 2015-03-12
تاریخ اشاعت: 2015-03-12
پچھلی خبریں - مزید خبریں

اسلام آباد

تلاش کیجئے

عملے کی غفلت کے باعث نیشنل ہیلتھ سروسز میں تیرہ لاکھ ڈالر کی ویکسین خراب ہوگئی

اسلام آباد (اُردو پوائنٹ اخبارآن لائن۔12 مارچ۔2015ء) نیشنل ہیلتھ سروسز (این ایچ ایس) کے سوئچ روم میں 13 لاکھ ڈالر کی پانچ مہلک بیماریوں کے خلاف رکھی گئی ویکسین عملے کی غفلت کے نتیجے میں خراب ہوگئی ویکسین کے خراب ہونے پر تین جونیئر افسران کو معطل کردیا گیا وزارت نیشنل ہیلتھ سروسز کے ذرائع کے مطابق سٹور روم میں تیرہ لاکھ ڈالر کی خراب ہونے والی ویکسین کی اطلاع ایک جعلی میل کے ذریعے سینیٹر عائشہ رضا فاروق کو دی گئی جعلی میل کی نقول عالمی ادارہ صحت، یونیسکو اور عالمی امداد دینے والے اداروں کو بھی ارسال کی گئی وزیراعظم پولیو پروگرام سیل کے فوکل پرسن جو کہ سینیٹر بھی ہیں انہیں یہ میل بائیس فروری کو نیشنل ایکسپینڈڈ پروگرام برائے امیونیزیشن کے منیجر رانا محمود کی جانب سے بھیجی گئی اس ہوالے سے جب سینیٹر نے رانا محمود سے پوچھا کہ ویکسین

اس خبر کی تفصیل پڑھنے کیلئے یہاں پر کلک کیجئے

12-03-2015 :تاریخ اشاعت

:متعلقہ عنوان