شادی کو عمر کے ساتھ مشروط نہ کیا جائے لڑکی جب عاقل اور بالغ ہو جائے تو شادی کر دینی ..
بند کریں
تازہ ترین ایڈ یشن کے لیے ابھی کلک کریں
اتوار مارچ

مزید قومی خبریں

تاریخ اشاعت: 2015-03-08
تاریخ اشاعت: 2015-03-08
تاریخ اشاعت: 2015-03-08
تاریخ اشاعت: 2015-03-08
تاریخ اشاعت: 2015-03-08
تاریخ اشاعت: 2015-03-08
تاریخ اشاعت: 2015-03-08
تاریخ اشاعت: 2015-03-08
تاریخ اشاعت: 2015-03-08
تاریخ اشاعت: 2015-03-08
تاریخ اشاعت: 2015-03-08
پچھلی خبریں - مزید خبریں

اسلام آباد

تلاش کیجئے

شادی کو عمر کے ساتھ مشروط نہ کیا جائے لڑکی جب عاقل اور بالغ ہو جائے تو شادی کر دینی چاہیے ،اسلام میں شادی کیلئے عمر کا تعین نہیں ہے ،لڑکی اگر بلوغت کو 15یا 16سال کی عمر میں پہنچ جائے تو شادی کر دینی چاہیے،شرعی طور پر کوئی پابندی نہیں ،مولویوں کو ٹارگٹ کیا جا رہا ہے اگر ایسا ہوا تو کیانکاح خواں نکاح نہیں پڑھائے گا تواسکی جگہ حکومت کے وزراء پڑھائیں گئے،علماء اور سیاسی رہنماؤں کی گفتگو

اسلام آباد(اُردو پوائنٹ اخبارآن لائن۔8 مارچ۔2015ء)گزشتہ روز پنجاب اسمبلی میں کم عمر ی میں شادی پر نکاح خواں اور سرپرست کو سزا دینے پر جو بل منظور کیا گیا اس پر علماء اور سیاسی رہنماؤں کا کہنا ہے کہ شادی کو عمر کے ساتھ مشروط نہ کیا جائے لڑکی جب عاقل اور بالغ ہو جائے تو شادی کر دینی چاہیے ، اسلام میں شادی کیلئے عمر کا تعین نہیں ہے ،لڑکی اگر بلوغت کو 15یا 16سال کی عمر میں پہنچ جائے تو شادی کر دینی چاہیے،شرعی طور پر کوئی پابندی نہیں ،مولویوں کو ٹارگٹ کیا جا رہا ہے اگر ایسا ہوا تو کیانکاح خواں نکاح نہیں پڑھائے گا تواسکی جگہ حکومت کے وزراء پڑھائیں گئے ،ان خیا لات کا اظہار علماء اور سیاسی رہنماؤں نے خبر رساں ادارے سے بات کرتے ہوئے کیااس موقع پر پاکستان علماء کونسل کے چیئر مین علامہ طاہر اشرفی کا کہنا تھا کہ اگر کوئی عاقل بالغ نہیں ہے تو اسکا نکاح پڑھا کر رخصتی کردی

اس خبر کی تفصیل پڑھنے کیلئے یہاں پر کلک کیجئے

08-03-2015 :تاریخ اشاعت