پاکستان نے متحدہ عرب امارات کو 129رنز سے شکست دے کر ورلڈ کپ میں دوسری کامیابی حاصل ..
بند کریں
تازہ ترین ایڈ یشن کے لیے ابھی کلک کریں
جمعرات مارچ

مزید کھیلوں کی خبریں

تاریخ اشاعت: 2015-03-05
تاریخ اشاعت: 2015-03-05
تاریخ اشاعت: 2015-03-05
تاریخ اشاعت: 2015-03-05
تاریخ اشاعت: 2015-03-05
-

تلاش کیجئے

پاکستان نے متحدہ عرب امارات کو 129رنز سے شکست دے کر ورلڈ کپ میں دوسری کامیابی حاصل کرلی ، کینگروز نے اپنے کمزور حریف افغانستان کو 275 رنز سے ہرا دیا،احمد شہزاد نروس نائٹنیز کا شکار ،93رنز بنا کر آؤٹ ، میچ کے بہترین کھلاڑی قرار پائے ،آفریدی کی آخری اوورز میں جارحانہ بیٹنگ ،7گیندوں پر 21رنز بنا کر اپنے کیریئر کے 8ہزار رنز مکمل کرکے پاکستان کے چوتھے اور دنیا کے 27کھلاڑی بننے کا اعزاز حاصل کرلیا ، بڑے مارجن سے فتح کے بعد رن ریٹ بہتر ہوگیا ، ٹورنامنٹ میں پاکستان کی چار میچوں میں دوسری فتح ہے اور اس کی اگلے مرحلے تک رسائی کی امید برقرار

نیپیر، پرتھ(اُردو پوائنٹ اخبارآن لائن۔5 مارچ۔2015ء) پاکستان نے متحدہ عرب امارات کو 129 رنز سے شکست دے کر ورلڈ کپ میں لگاتار دوسری کامیابی حاصل کر لی، کینگروز نے اپنے کمزور حریف افغانستان کو 275 رنز سے ہرا دیا،،آسٹریلیا نے 5 وکٹوں کے نقصان پر417 رنز بنا کر ورلڈ کپ میں کسی بھی ٹیم کی جانب سے سب سے زیادہ رنز کی نئی تاریخ رقم کردی،افغانستان کی ٹیم 418 رنز کے پہاڑ جیسے ہدف کے تعاقب میں لڑکھڑا گئی اور پوری ٹیم 38ویں اوور میں 142 رنز پر ڈھیر ہوگئی، اوپنر ڈیوڈ وارنر نے دھواں دھار بلے بازی کا مظاہرہ کیا اور 133 گیندوں میں 19 چوکوں اور 5 چھکوں کی مدد سے 178 رنز کی جارحانہ اننگز کھیلی اور میچ کے بہترین کھلاڑی قرار پائے ۔

متحدہ عرب امارات نے ٹاس جیت کر پہلے پاکستان کو بیٹنگ کی دعوت دی تو ناصر جمشید ایک بار پھر ٹیم میں مشکلات کے بھنور میں پھنسا کر پویلین پہنچ گئے، انہوں نے صرف چار رنز بنائے۔اس موقع پر احمد شہزاد اور حارث سہیل نے دوسری وکٹ کے لیے 160 رنز کی پارٹنر شپ قائم کر کے پاکستان کے بڑے اسکور کی راہ ہموار کی۔ شہزاد 93 اور حارث 70 رنز بنا کر آؤٹ ہوئے۔وکٹیں گرنے کے باوجود مصباح الحق اور صہیب مقصود نے اسکور بڑھانے کا سلسلہ جاری رکھا، صہیب نے آؤٹ ہونے سے قبل 45 رنز بنائے جبکہ مصباح الحق نے 65 رنز کی اننگ کھیلی۔

اختتامی اوورز میں عمر اکمل اور شاہد آفریدی کی جارحانہ بلے بازی کیشاہد آفریدی نے آخری چند اوورز میں کچھ جارحانہ شاٹس کھیلیں اور سات گیندوں پر 21 رنز بنانے کے ساتھ ساتھ ایک روزہ کرکٹ میں اپنے آٹھ ہزار رنز مکمل کیے۔ وہ یہ اعزاز حاصل کرنے والے چوتھے پاکستانی بلے باز ہیں۔ بدولت پاکستان نے 339 رنز کا مجموعہ اسکور بورڈ پر سجا کر متحدہ عرب امارات کو جیت کے لیے 340 رنز کا بڑا ہدف دیا۔جواب میں متحدہ عرب امارات کی ٹیم شروع سے مشکلات کا شکار ہو گئی اور 25 رنز پر تین وکٹیں گنوا بیٹھی۔

تین وکٹیں گرنے کے بعد یو اے ای نے ہدف کے تعاقب کے بجائے 50 اوورز کھیلنے کی حکمت عملی بنائی جو کامیاب رہی۔خرم خان اور شیمان انور نے چوتھی وکٹ کے لیے 83 رنز جوڑے، خرم 45 اور شیمان 62 رنز بنا کر آؤٹ ہوئیپاکستان نے آغاز میں ہی یو اے ای کے تین کھلاڑی آوٴٹ کر لیے تھے لیکن پھر چوتھی وکٹ کے لیے شیمان انور اور خرم خان نے 83 رنز کی شراکت قائم کی۔اننگز کے آخر میں امجد علی اور سواپنل پٹیل کی 68 رنز کی شراکت نے یو اے ای کا سکور بڑھانے میں اہم کردار ادا کیا۔

۔یو اے ای کے بلے بازوں نے پاکستانی باوٴلرز کا جواں مردی سے سامنا کیا اور انہیں آل آؤٹ نہ کرنے دیا۔مقررہ اوورز میں متحدہ عرب امارات کی ٹیم نے 210 رنز بنائے اور اس طرح پاکستان نے 129 رنز کے بڑے مارجن سے فتح حاصل کر لی۔شاہد آفریدی ، سہیل خان اور وہاب ریاض دو دو وکٹیں لے کر سب سے کامیاب باوٴلر رہے جبکہ راحت علی اور صہیب مقصود نے ایک ایک وکٹ حاصل کی۔احمد شہزاد کو میچ کا بہترین کھلاڑی قرار دیا گیا۔

بڑے مارجن سے فتح کے بعد رن ریٹ بہتر ہوگیا دوسری ورلڈکپ کے ایک اور میچ میں آسٹریلیا نے افغانستان کو 275 رنز کے بڑے مارجن سے شکست دے دی پرتھ کے کرکٹ ایسوسی ایشن گراوٴنڈ میں کھیلے گئے میچ میں افغانستان نے ٹاس جیت کر آسٹریلیا کو پہلے بیٹنگ کی دعوت دی جس کا اس نے خوف فائدہ اٹھایا اور مقررہ 50 اوورز میں 5 وکٹوں کے نقصان پر 417 رنز بنا کر ورلڈ کپ میں کسی بھی ٹیم کی جانب سے سب سے زیادہ رنز کی نئی تاریخ رقم کردی، اوپنر ڈیوڈ وارنر نے دھواں دھار بلے بازی کا مظاہرہ کیا اور 133 گیندوں میں 19 چوکوں اور 5 چھکوں کی مدد سے 178 رنز کی جارحانہ اننگز کھیل کر افغان بولروں کو دن میں تارے دکھا دیئے، اسٹیون اسمتھ نے بھی ڈیوڈ وارنر کا بھرپور ساتھ دیا اور اوپنر کے ساتھ 260 رنز کی شاندار شراکت قائم کرتے ہوئے 98 رنز کی ذمہ دارانہ اننگز کھیلی۔

رنز کی بہتی گنگا میں گلین میکس ویل بھی کسی سے پیچھے نہ رہے اور 39 گیندوں میں 88 رنز کی برق رفتار اننگز کھیلتے ہوئے ٹیم کے اس ریکارڈ ساز اسکور میں اہم کردار ادا کیا، دیگر کھلاڑیوں میں ایرن فنچ 4، جیمز فالکنر 7 اور مچل مارش 8 رنز بنا کر آوٴٹ ہوئے۔ افغانستان کے دولت زادران اور شپور زادرن نے 2،2 جب کہ حامد حسان اور نوروز منگل نے ایک، ایک کھلاڑی کو آوٴٹ کیا۔افغانستان کی ٹیم 418 رنز کے پہاڑ جیسے ہدف کے تعاقب میں لڑکھڑا گئی اور پوری ٹیم 38ویں اوور میں 142 رنز پر ڈھیر ہوگئی، 30 رنز پر پہلی وکٹ گرنے کے بعد افغانستان کا کوئی بلے باز آسٹریلوی بولروں کے وار جھیل نہ پایا اور آسٹریلیا نے یہ میچ 275 رنز سے اپنے نام کرلیا، نوروز منگل افغان ٹیم کے سب سے کامیاب بلے باز تھے جنہوں نے 33 رنز اسکور کئے نجیب اللہ زادران 24 رنز کے ساتھ دوسرے نمایاں بلے باز رہے، دیگر کھلاڑیوں میں جاوید احمدی 13، عثمان غنی 12، اصغر سانکزئی 4، سمیع اللہ شینواری 17، کپتان محمد نبی 2، نجیب اللہ زادران 24، افسر زازئی 10 اور حامد حسان 7 رنز بنا کر آوٴٹ ہوئے۔

آسٹریلیا کے مچل جانسن نے شاندار بولنگ کا مظاہرہ کرتے ہوئے 4 کھلاڑیوں کو پویلین کی راہ دکھائی، مچل اسٹارک اور جوش ہیزلووڈ نے 2،2 جب کہ مائیکل کلارک اور گلین میکس ویل نے ایک، ایک وکٹ حاصل کی۔ بہترین بلے بازی کا مظاہرہ کرنے پر ڈیوڈ وارنر کو مین آف دی میچ قرار دیا گیا۔

05-03-2015 :تاریخ اشاعت

:متعلقہ عنوان