پبلک اکاؤنٹس کمیٹی نے پیپلز پارٹی دورحکومت میں گوادر بندرگاہ سے 115ٹرک یوریا کھاد ..
بند کریں
تازہ ترین ایڈ یشن کے لیے ابھی کلک کریں
جمعرات مارچ

مزید قومی خبریں

تاریخ اشاعت: 2015-03-05
تاریخ اشاعت: 2015-03-05
تاریخ اشاعت: 2015-03-05
تاریخ اشاعت: 2015-03-05
تاریخ اشاعت: 2015-03-05
تاریخ اشاعت: 2015-03-05
تاریخ اشاعت: 2015-03-05
تاریخ اشاعت: 2015-03-05
تاریخ اشاعت: 2015-03-05
تاریخ اشاعت: 2015-03-05
-

اسلام آباد

اسلام آباد شہر میں شائع کردہ مزید خبریں

وقت اشاعت: 18/01/2017 - 10:58:14 وقت اشاعت: 18/01/2017 - 10:58:15 وقت اشاعت: 18/01/2017 - 10:58:18 وقت اشاعت: 18/01/2017 - 10:58:19 وقت اشاعت: 18/01/2017 - 10:59:54 وقت اشاعت: 18/01/2017 - 10:59:56 اسلام آباد کی مزید خبریں

تلاش کیجئے

پبلک اکاؤنٹس کمیٹی نے پیپلز پارٹی دورحکومت میں گوادر بندرگاہ سے 115ٹرک یوریا کھاد کی چوری کی تحقیقات کیلئے معاملہ نیب کو بھیج دیا

اسلام آباد(اُردو پوائنٹ اخبارآن لائن۔5 مارچ۔2015ء)پبلک اکاؤنٹس کمیٹی نے پیپلز پارٹی دور حکومت میں گوادر بندرگاہ سے کراچی ترسیل کے دوران 115ٹرک یوریا کھاد کی چوری اور غائب ہونے کی تحقیقات اورذمہ داروں کو کیفر کردار تک پہنچانے کے لیے معاملہ نیب کو بھیج دیا ہے ۔ وزارت پیداوار کے ذیلی ادارے نیشنل فرٹیلائزر کارپوریشن کے کرپٹ افسران نے ٹھیکیدار سے ملی بھگت کرکے 22ہزار میٹرک ٹن یوریا کو کسانوں کو سستی اور کنٹرول قیمت پر فروخت کرنے کی بجائے بلیک مارکیٹنگ میں فروخت کردیا ۔

واپڈا حکام نے وزارت پیداوار کو دبئی سکوک بانڈز فروخت کرکے 12کروڑ کا ٹیکہ لگانے کے معاملہ کی بھی اعلیٰ پیمانے پر تحقیقات کا حکم دے دیا ہے پی اے سی نے فریٹ چارجز کی مد میں وزارت پیداوار میں ایک ارب 20 کروڑ کی کرپشن کی تحقیقات کا حکم دیا ہے ۔ پی اے سی کا اجلاس گزشتہ روز خورشید شاہ کی صدارت میں ہوا ۔ اجلاس میں وزارت صنعت و پیداوار کے مالی سال 2010-11ء کے مالی حسابات کا جائزہ لیا گیا اجلاس میں آڈیٹر جنرل بلند اختر رانا ، سیکرٹری پیداوار نے پی اے سی کو آڈٹ پیراؤں بارے بریف کیا ۔

پبلک اکاؤنٹس کمیٹی نے تمام وزارتوں کو ہدایت کی ہے کہ ہر مہینہ میں محکمانہ اکاؤنٹس آڈٹ کمیٹی کااجلاس بلایا جائے اور جو وزارت عمل نہ کرے اس کیخلاف کارروائی کی جائے گی ۔ پی اے سی نے کہا کہ وزارت کے سیکرٹری اپنے معاملات سے مکمل طور پر لاعلم ہیں اور ہمیں فضول کاموں میں الجھائے رکھتے ہیں ۔ ڈی اے سی کا اجلاس بارے آڈیٹر جنرل آف پاکستان بلند اختر رانا

اس خبر کی تفصیل پڑھنے کیلئے یہاں پر کلک کیجئے

05-03-2015 :تاریخ اشاعت

:متعلقہ عنوان