سپریم کورٹ نے چترال میں اخروٹ کے درخت کا تنازعہ 36 سال بعد نمٹا دیا، والد کی موجودگی ..
بند کریں
تازہ ترین ایڈ یشن کے لیے ابھی کلک کریں
بدھ مارچ

مزید قومی خبریں

تاریخ اشاعت: 2015-03-04
تاریخ اشاعت: 2015-03-04
تاریخ اشاعت: 2015-03-04
تاریخ اشاعت: 2015-03-04
تاریخ اشاعت: 2015-03-04
تاریخ اشاعت: 2015-03-04
تاریخ اشاعت: 2015-03-04
تاریخ اشاعت: 2015-03-04
پچھلی خبریں -

اسلام آباد

تلاش کیجئے

سپریم کورٹ نے چترال میں اخروٹ کے درخت کا تنازعہ 36 سال بعد نمٹا دیا، والد کی موجودگی میں اولاد بات نہیں کرتی اور جب ان کی وفات ہو جائے تو مسائل کھڑے ہو جاتے ہیں‘ 36 سال بعد بھائی نے بھائی کے ساتھ تنازعہ کا معاملہ اٹھایا کیا پہلے وہ سو رہا تھا،جسٹس سرمد جلال عثمانی

اسلام آباد (اُردو پوائنٹ اخبارآن لائن۔4 مارچ۔2015ء) سپریم کورٹ نے چترال میں اخروٹ کے درخت کا تنازعہ 36 سال بعد نمٹا دیا‘ شاہ مظفر کے حق میں فیصلہ دے دیا‘ جبکہ دوسرے بھائی اللہ دینو کی درخواست خارج کر دی۔ جسٹس جواد ایس خواجہ نے ریمارکس دیئے ہیں کہ جب الٹی گنگا بہنے لگتی ہے تو کہتے ہیں کہ بڑی آفتیں آتی ہیں۔ جبکہ جسٹس سرمد جلال عثمانی نے ریمارکس دیئے ہیں کہ والد کی موجودگی میں اولاد بات نہیں کرتی اور جب ان کی وفات ہو جائے تو مسائل کھڑے ہو جاتے ہیں۔

36 سال بعد بھائی نے بھائی کے ساتھ تنازعہ کا معاملہ

اس خبر کی تفصیل پڑھنے کیلئے یہاں پر کلک کیجئے

04-03-2015 :تاریخ اشاعت

:متعلقہ عنوان