پاک چین اقتصادی راہداری کے پرانے روٹ کو بحال کیا جائے ایسا نہ کیا گیا تو احتجاج ..
بند کریں
تازہ ترین ایڈ یشن کے لیے ابھی کلک کریں
ہفتہ فروری

مزید اہم خبریں

تاریخ اشاعت: 2015-02-28
تاریخ اشاعت: 2015-02-28
تاریخ اشاعت: 2015-02-28
تاریخ اشاعت: 2015-02-28
تاریخ اشاعت: 2015-02-28
تاریخ اشاعت: 2015-02-28
تاریخ اشاعت: 2015-02-28
تاریخ اشاعت: 2015-02-28
تاریخ اشاعت: 2015-02-28
تاریخ اشاعت: 2015-02-28
تاریخ اشاعت: 2015-02-28
- مزید خبریں

اسلام آباد

تلاش کیجئے

پاک چین اقتصادی راہداری کے پرانے روٹ کو بحال کیا جائے ایسا نہ کیا گیا تو احتجاج کرینگے ، ذمہ داری حکومت پر عائد ہوگی،متحدہ اپوزیشن ، فینڈریشن کو متحد رکھنے کے لیے پاک چین اقتصادی راہداری کے پرانے روٹ کو بحال رکھنا ناگزیر ہے ۔ سینٹ کے اجلاس کے بعد متحدہ اپوزیشن رہنماوں کی پارلیمنٹ ہاؤس کے باہر میڈیا سے گفتگو

اسلام آباد(اُردو پوائنٹ اخبارآن لائن۔ 28فروری۔2015ء) متحدہ اپوزیشن نے حکومت سے مطالبہ کیا ہے کہ پاک چین اقتصادی راہداری کے پرانے روٹ کو بحال کیا جائے اگر ایسا نہ کیا گیا تو ہم احتجاج کرینگے جس کی تمام تر ذمہ داری حکومت پر عائد ہوگی ۔ فینڈریشن کو متحد رکھنے کے لیے پاک چین اقتصادی راہداری کے پرانے روٹ کو بحال رکھنا ناگزیر ہے ۔ جمعہ کے روز سینٹ کے اجلاس کے بعد پارلیمنٹ ہاؤس کے باہر میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے نیشنل پارٹی کے رہنما میر حاصل بزنجو نے کہا کہ پاک چین اقتصادی راہداری کا روٹ تبدیل نہیں کیا گیا تو پسماندہ علاقوں کے عوام پسماندہ رہ جائینگے لہذا اس کا اصل روٹ بحال رکھا جائے عوامی نیشنل پارٹی کے رہنما افراسیاب خٹک نے کہا کہ حکومت ایک طرف دعویٰ کرتی ہے کہ پاک چین اقتصادی راہداری کا روٹ تبدیل نہیں کیا جارہا تو پھر بتائیں کہ صنعتی پارک کہاں پر بن رہا ہے حکومت حقائق چھپا رہی ہے اصل روٹ کو بحال رکھا جائے انہوں نے کہا کہ پاک چین اقتصادی راہداری کا اصل روٹ فاٹا ، کے پی کے اور بلوچستان سے گزرتا تھا اس کو پسماندہ علاقوں سے گزرا جائے تاکہ وہاں پر اقتصادی

اس خبر کی تفصیل پڑھنے کیلئے یہاں پر کلک کیجئے

28-02-2015 :تاریخ اشاعت

:متعلقہ عنوان