کوٹ رادھا کشن میں اینٹوں کے بھٹے میں مسیحی جوڑے کو زندہ جلانے کے مقدمے میں آئی ..
بند کریں
تازہ ترین ایڈ یشن کے لیے ابھی کلک کریں
جمعہ فروری

مزید قومی خبریں

تاریخ اشاعت: 2015-02-27
تاریخ اشاعت: 2015-02-27
تاریخ اشاعت: 2015-02-27
تاریخ اشاعت: 2015-02-27
تاریخ اشاعت: 2015-02-27
تاریخ اشاعت: 2015-02-27
تاریخ اشاعت: 2015-02-27
تاریخ اشاعت: 2015-02-27
پچھلی خبریں -

اسلام آباد

تلاش کیجئے

کوٹ رادھا کشن میں اینٹوں کے بھٹے میں مسیحی جوڑے کو زندہ جلانے کے مقدمے میں آئی جی پنجاب کی رپورٹ مسترد ،سپر یم کورٹ کا برہمی کا اظہار، 9 مارچ کو مقدمے کے تفتیشی افسر اور پراسیکیورٹر کو تمام تر ریکارڈ کے ساتھ عدالت میں پیش ہونے کا حکم جاری

اسلام آباد (اُردو پوائنٹ اخبارآن لائن۔ 27فروری۔2015ء) سپریم کورٹ نے کوٹ رادھا کشن میں اینٹوں کے بھٹے میں مسیحی جوڑے کو زندہ جلانے کے مقدمے میں آئی جی پنجاب کی رپورٹ مسترد کرتے ہوئے برہمی کا اظہار کیا ہے اور 9 مارچ کو مقدمے کے تفتیشی افسر اور پراسیکیورٹر کو تمام تر ریکارڈ کے ساتھ عدالت میں پیش ہونے کا حکم جاری کیا ہے یہ حکم جمعرات کو جسٹس انور ظہیر جمالی کی سربراہی میں جسٹس عظمت سعید اور جسٹس مشیر عالم پر مشتمل 3 رکنی بنچ نے جاری کیا ہے۔

جسٹس انور ظہیر جمالی نے ریمارکس دیئے ہیں کہ پولیس چاہے تو پتھروں کو بھی زبان دے دے اور بڑے بڑے مجرموں کو تھانے طلب کر لے مگر یہاں تو ذمہ داروں کو تاحال گرفتار نہیں کیا جا سکا۔ جبکہ جسٹس شیخ عظمت سعید نے ریمارکس دیئے ہیں کہ ریاست عوام کے بنیادی حقوق کی محافظ ہے جن کا مقدمے میں کوئی مدعی نہ ہو اس کی مدعی ریاست ہوتی ہے۔ مسیحی جوڑے کو زندہ جلا دیا گیا اور پولیس 2 گھنٹے تاخیر

اس خبر کی تفصیل پڑھنے کیلئے یہاں پر کلک کیجئے

27-02-2015 :تاریخ اشاعت

:متعلقہ عنوان