داعش کے زیر قبضہ تمام علاقے واپس لیکر اسے شکست دی جائے گی’جان کیری کا عزم ،اس کا ..
بند کریں
تازہ ترین ایڈ یشن کے لیے ابھی کلک کریں
پیر فروری

مزید بین الاقوامی خبریں

تاریخ اشاعت: 2015-02-23
تاریخ اشاعت: 2015-02-23
تاریخ اشاعت: 2015-02-23
تاریخ اشاعت: 2015-02-23
تاریخ اشاعت: 2015-02-23
تاریخ اشاعت: 2015-02-23
تاریخ اشاعت: 2015-02-23
تاریخ اشاعت: 2015-02-23
تاریخ اشاعت: 2015-02-23
-

تلاش کیجئے

داعش کے زیر قبضہ تمام علاقے واپس لیکر اسے شکست دی جائے گی’جان کیری کا عزم ،اس کا مواصلاتی نظام اور سپلائی لائن بھی کاٹ دی گئی ہیں،60سے زائد ممالک نے داعش کے خلاف اتحاد قائم کردیا ہے ، آئندہ ہفتے صدر اوبامہ ایک عالمی کانفرنس کا انعقاد کریں گے، یوکرائن میں لڑائی کے باعث روس پر ”سخت پابندیاں“ لگانے پر غور ہورہا ہے،امریکی وزیر خارجہ کی میڈیا سے گفتگو

لندن(اُردو پوائنٹ اخبارآن لائن۔ 23فروری۔2015ء)امریکی وزیرخارجہ جان کیری نے اس اعتماد کا اظہار کیا ہے کہ داعش کے زیر قبضہ تمام علاقے واپس لیکر اسے شکست دی جائے گی’اس کا مواصلاتی نظام متاثر کردیاگیا ہے اور سپلائی لائن بھی کاٹ دی گئی ہیں’60سے زائد ممالک نے داعش کے خلاف اتحاد قائم کردیا ہے جبکہ آئندہ ہفتے صدر اوبامہ ایک عالمی کانفرنس کا انعقاد کریں گے۔متشدد انتہا پسندی میں اضافہ ایک عالمی مسئلہ ہے،دہشتگردی کے خلاف جنگ سے متاثرہ ممالک سے بھرپور تعاون کریں گے۔

گزشتہ روز لندن سے جنیوا روانگی سے قبل میڈیا سے بات چیت کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ ہم نے داعش کے حوصلے پست کردئیے ہیں اور کسی کو اس میں شک نہیں ہونا چاہئے کہ ہم اسے جلد شکست دیں گے۔داعش کو عراق میں کوبانی کے علاقے میں شکست ہوئی ہے اور اب اس سے تمام علاقے واپس کئے جائیں گے۔عراقی فوج اٹھ کھڑی ہوئی ہے،داعش کا مواصلاتی نظام اور سپلائی لائن منقطع کردی گئی ہے۔انہوں نے کہا کہ ابھی ہمیں بہت کچھ کرنا ہوگا،مشترکہ مقصد کے حصول کیلئے صدر اوبامہ اس ہفتے واشنگٹن میں ایک سربراہ اجلاس منعقد کررہے ہیں جس میں تمام طبقوں اور ممالک سے نمائندے شریک ہوں گے،برطانیہ کا وفد وزیر داخلہ تھریسامے کی سربراہی میں شریک ہوگا۔

انہوں نے کہا کہ ہمیں ایک دوسرے کے تجربات سے فائدہ اٹھاتے ہوئے مشترکہ لائحہ عمل تیار کرنا ہوگا تاکہ ہم متشدد انتہا پسندی کا مقابلہ کرسکیں،ہم نے ان ملکوں کی بھی مدد کرنے کا عزم کیا ہے جو اس کا براہ راست شکار ہیں۔ہم دہشتگردوں کو مالی وسائل کا بہاؤ روکیں گے تاکہ وہ اپنانظریہ اور پروگرام آگے نہ بڑھا سکیں،ہم

اس خبر کی تفصیل پڑھنے کیلئے یہاں پر کلک کیجئے

23-02-2015 :تاریخ اشاعت

:متعلقہ عنوان