سیاسی و مذہبی جماعتوں نے جوئے کی مد میں تیتروں، بٹیروں کی لڑائی کو حرام قرار دیا ..
بند کریں
تازہ ترین ایڈ یشن کے لیے ابھی کلک کریں
اتوار فروری

مزید اہم خبریں

تاریخ اشاعت: 2015-02-22
تاریخ اشاعت: 2015-02-22
تاریخ اشاعت: 2015-02-22
تاریخ اشاعت: 2015-02-22
تاریخ اشاعت: 2015-02-22
تاریخ اشاعت: 2015-02-22
تاریخ اشاعت: 2015-02-22
تاریخ اشاعت: 2015-02-22
تاریخ اشاعت: 2015-02-22
تاریخ اشاعت: 2015-02-22
تاریخ اشاعت: 2015-02-22
پچھلی خبریں - مزید خبریں

اسلام آباد

اسلام آباد شہر میں شائع کردہ مزید خبریں

وقت اشاعت: 19/01/2017 - 11:05:05 وقت اشاعت: 19/01/2017 - 11:05:06 وقت اشاعت: 19/01/2017 - 11:05:09 وقت اشاعت: 19/01/2017 - 11:05:16 وقت اشاعت: 19/01/2017 - 11:11:11 وقت اشاعت: 19/01/2017 - 11:11:13 اسلام آباد کی مزید خبریں

تلاش کیجئے

سیاسی و مذہبی جماعتوں نے جوئے کی مد میں تیتروں، بٹیروں کی لڑائی کو حرام قرار دیا ہے؛حیدر عباس رضوی

اسلام آباد (اُردو پوائنٹ اخبارآن لائن۔ 22فروری۔2015ء)ملک بھر کی سیاسی و مذہبی جماعتوں اور آئینی ماہرین نے جوئے کی مد میں کتوں ،تیتر وں، بٹیروں اور مرغوں کی لڑائی کو حرام قرار دیا ہے، پارلیمنٹ کی قائمہ کمیٹی برائے قواعد و ضوابط کی جانب سے ایک ممبر اسمبلی کو بچانے کیلئے اسے جائز قرار دینے پر سخت مذمت کی گئی ہے۔ وزیراعظم نواز شریف سے مداخلت کی اپیل کی گئی ہے‘ غیر شرعی اور آئین و قانون کے خلاف کسی غیر قانونی اقدام کو تسلیم نہیں کیا جائے گا۔

ایم کیو ایم کے رہنماء حیدر عباس رضوی نے کہا کہ قومی اسمبلی کی قائمہ کمیٹی کی جانب سے ایک ممبر اسمبلی کو بچانے کیلئے تیتروں ‘ مرغوں اور بٹیروں کی لڑائی کو جائز قرار دینا بدترین ظلم ہے ‘ معصوم پرندوں کو لڑا کر اس می مد میں حاصل ہونے والی رقم جوئے کے زمرے میں آتی ہے انہوں نے کہا کہ آئین کے آرٹیکل 226 کے تحت جرم ہے اور 1973 ء کے آئین کے تحت یہ کمار بازی کا ایکٹ ہے اور اس میں گرفتار ہونے والوں کے خلاف ایکشن ہونا چاہیے ۔

انہوں نے کہا کہ ایم کیو ایم ہمیشہ طبقاتی نظام کے خلاف لڑتی رہی ہے ۔ غریب کو اس کا حق ملنا چاہیے آئین سے کوئی بالاتر نہیں ہونا چاہیے‘ پی پی پی کے سینٹرل ایگزیکٹو کمیٹی کے رکن فرحت الله بابر بے کہا کہ یہ پیپلزپارٹی کیلئے انتہائی حیرت انگیز انکشاف ہے اور کسی بھی طرح یہ جائز نہیں ہے اس کی سزا ان لوگوں کو ملنی چاہیے جو اسمیں ملوث پائے گئے ہیں۔ جمعیت علمائے اسلام کے مرکزی رہنماء حافظ حسین احمد نے کہا کہ 1973 ء کا آئین ایک اسلامی اور جمہوری آئین ہے ۔

کوئی کتنا ہی طاقتور کیوں نہ ہو اس کے خلاف قانون کے مطابق ایکشن

اس خبر کی تفصیل پڑھنے کیلئے یہاں پر کلک کیجئے

22-02-2015 :تاریخ اشاعت