اسلام آباد ہائیکورٹ میں پارلیمنٹ لاجز کے 120 رہائشی مکانوں کے فرنیچر کیلئے سی ڈی ..
بند کریں
تازہ ترین ایڈ یشن کے لیے ابھی کلک کریں
ہفتہ فروری

مزید قومی خبریں

تاریخ اشاعت: 2015-02-21
تاریخ اشاعت: 2015-02-21
تاریخ اشاعت: 2015-02-21
تاریخ اشاعت: 2015-02-21
تاریخ اشاعت: 2015-02-21
تاریخ اشاعت: 2015-02-21
تاریخ اشاعت: 2015-02-21
تاریخ اشاعت: 2015-02-21
تاریخ اشاعت: 2015-02-21
تاریخ اشاعت: 2015-02-21
تاریخ اشاعت: 2015-02-21
پچھلی خبریں - مزید خبریں

اسلام آباد

اسلام آباد شہر میں شائع کردہ مزید خبریں

وقت اشاعت: 17/01/2017 - 11:10:36 وقت اشاعت: 17/01/2017 - 11:10:38 وقت اشاعت: 17/01/2017 - 11:10:39 وقت اشاعت: 17/01/2017 - 10:35:10 وقت اشاعت: 17/01/2017 - 11:10:41 وقت اشاعت: 17/01/2017 - 11:10:41 اسلام آباد کی مزید خبریں

تلاش کیجئے

اسلام آباد ہائیکورٹ میں پارلیمنٹ لاجز کے 120 رہائشی مکانوں کے فرنیچر کیلئے سی ڈی اے کے سنگل ٹینڈر جاری کرنے والے افسران کی انکوائر ی رپورٹ عدالت میں جمع،رپورٹ میں سی ڈی اے کے ڈائریکٹر پارلیمنٹ لاجز سردار نواز ،سابق ڈائریکٹر پارلیمنٹ لاجزکو ذمہ دار ٹھہرایا گیا،چیئرمین معروف افضل نے افسران کے خلاف کارروائی کیلئے ممبر پلاننگ وسیم احمدپر مشتمل انکوائری کمیٹی تشکیل دیدی

اسلام آباد (اُردو پوائنٹ اخبارآن لائن۔ 21فروری۔2015ء)اسلام آباد ہائیکورٹ میں پارلیمنٹ لاجز کے 120 رہائشی مکانوں کے فرنیچر کیلئے وفاقی ترقیاتی ادارہ (سی ڈی اے) کی جانب سے جاری کئے گئے سنگل ٹینڈر 67ملین جاری کرنے والے افسران کی انکوائر ی رپورٹ عدالت میں جمع،سی ڈی اے کے ڈائریکٹر پارلیمنٹ لاجز سردار نواز ،سابق ڈائریکٹر پارلیمنٹ لاجزکو ذمہ دار ٹھہرایا گیاہے۔ چیئرمین سی ڈی اے نے افسران کے خلاف کاروائی کرنے کیلئے انکوائر ی کمیٹی ممبر پلاننگ وسیم احمدپر تشکیل دیدی ہے۔

اسلام آباد ہائیکورٹ کے حکم پر پارلیمنٹ لاجز کے 120 رہائشی سوئٹس کیلئے جاری کیے گئے 67 ملین کا ٹینڈر من پسند کمپنی کو دینے کا انکشاف ،چیئرمین سی ڈی اے کے حکم پر افسران کے خلاف ہونے والی انکوائر ی رپورٹ میں پیپراورولز کے بے دردی سے خلاف ورزی سے بھی پردہ اٹھایا گیاہے۔ اسلام آبا دہائیکورٹ میں پارلیمنٹ لاجز کے 120 رہائشی سوئٹس کیلیے جاری کے گئے سنگل ٹینڈر کے خلا ف ایک آئینی رٹ پیٹشن دائر کرتے ہوئے ٹینڈر کو چیلنج کیا گیاتھا۔

جسٹس شوکت عزیز صدیقی نے کیس کی سماعت کرتے ہوئے چیئرمین سی ڈی اے کو ذاتی طور پر عدالت میں طلب کرکے 67 ملین کے جاری کیے گئے سنگل ٹینڈر کو منسوخ کرنے کا حکم دیتے ہوئے ذمہ داران افسران کے خلاف انکوائر ی کرنے کا حکم دیاتھا اور عدالت نے رپورٹ بھی طلب کی تھی۔ اسلام آبادہائیکورٹ میں جمع کرائی گئی رپورٹ میں کہا گیاہے کہ پارلیمنٹ لاجز کے 120 رہائشی سوئٹس کے لیے سی ڈی اے کے سال 2014 کیلئے فرنیچر کی خرید وفروخت اور اراکین پارلیمنٹ کے کمروں میں

اس خبر کی تفصیل پڑھنے کیلئے یہاں پر کلک کیجئے

21-02-2015 :تاریخ اشاعت

:متعلقہ عنوان