یوم پاکستان پیریڈ میں حصہ لینے والے اسلام آباد پولیس کے 145افسران و اہلکاروں کا ..
بند کریں
تازہ ترین ایڈ یشن کے لیے ابھی کلک کریں
جمعرات فروری

مزید قومی خبریں

تاریخ اشاعت: 2015-02-19
تاریخ اشاعت: 2015-02-19
تاریخ اشاعت: 2015-02-19
تاریخ اشاعت: 2015-02-19
تاریخ اشاعت: 2015-02-19
تاریخ اشاعت: 2015-02-19
تاریخ اشاعت: 2015-02-19
تاریخ اشاعت: 2015-02-19
تاریخ اشاعت: 2015-02-19
تاریخ اشاعت: 2015-02-19
تاریخ اشاعت: 2015-02-19
- مزید خبریں

اسلام آباد

اسلام آباد شہر میں شائع کردہ مزید خبریں

وقت اشاعت: 18/01/2017 - 10:58:14 وقت اشاعت: 18/01/2017 - 10:58:15 وقت اشاعت: 18/01/2017 - 10:58:18 وقت اشاعت: 18/01/2017 - 10:58:19 وقت اشاعت: 18/01/2017 - 10:59:54 وقت اشاعت: 18/01/2017 - 10:59:56 اسلام آباد کی مزید خبریں

تلاش کیجئے

یوم پاکستان پیریڈ میں حصہ لینے والے اسلام آباد پولیس کے 145افسران و اہلکاروں کا سروس ریکارڈخفیہ اداروں نے مانگ لیا ،جوانوں کوریہرسل کے دوران کھانے پینے پراٹھنے والے اخراجات جیب سے دینے پڑ گئے،بلائے جانے کے باوجود ریہرسل میں شرکت نہ کرنیوالے پولیس ملازمین کو شوکاز نوٹس جاری

اسلام آباد(اُردو پوائنٹ اخبارآن لائن۔ 19فروری۔2015ء )سیکورٹی خدشات کے باعث عرصہ سات سال کے طویل وقفہ کے بعد 23مارچ کوہونے والی پیریڈ میں حصہ لینے والے اسلام آباد پولیس کے 145افسران و اہلکاروں کا سروس ریکارڈخفیہ اداروں نے مانگ لیا ہے جبکہ پیپریڈ میں شریک ہونے والے جوانوں کوریہرسل کے دوران کھانے پینے پراٹھنے والے اخراجات جیب سے دینے پڑ گئے،بلائے جانے کے باوجود ریہرسل میں شرکت نہ کرنے والے پولیس ملازمین کو شوکاز نوٹس جاری کر دئیے گئے،اس سلسلے میں ایس پی ہیڈ کوارٹر رانا طاہر رحمن نے رابطہ پر بتایا کہ پولیس ملازموں کا دیگر سیکورٹی اداروں کی طرح کھانا فری نہیں ہوتا اس لیے ان سے دو ہزار روپے طلب کیے گئے ہیں اور آرمی کا ریکارڈ طلب کرنے پر ان کا کہنا تھا کہ سیکورٹی کلیئرنس کے لیے ریکارڈ طلب کیا گیا ہے ۔

ذرائع کے مطابق سات سال کے طویل وقفہ کے بعد شکر پڑیاں گراؤنڈ میں ہونے والی 23مارچ کی پیریڈ کی ریہرسل اسلام آباد پولیس کے جوانوں سے پولیس لائن ہیڈ کوارٹر میں کرائی جا رہی ہے جس میں دو سو کے قریب پولیس ملازم شامل ہیں۔ذرائع کا کہنا ہے کہ پیریڈ میں اسلام آباد پولیس کے 144ملازم حصہ لیں گئے جن میں 35پروبیشنل

اس خبر کی تفصیل پڑھنے کیلئے یہاں پر کلک کیجئے

19-02-2015 :تاریخ اشاعت