امریکہ بدترین معاشی جھٹکوں کے تلاطم میں گھر گیا، اگست 2009ء میں بحران پر بحران کا ..
بند کریں
تازہ ترین ایڈ یشن کے لیے ابھی کلک کریں
بدھ فروری

مزید بین الاقوامی خبریں

تاریخ اشاعت: 2015-02-18
تاریخ اشاعت: 2015-02-18
تاریخ اشاعت: 2015-02-18
تاریخ اشاعت: 2015-02-18
تاریخ اشاعت: 2015-02-18
تاریخ اشاعت: 2015-02-18
تاریخ اشاعت: 2015-02-18
تاریخ اشاعت: 2015-02-18
تاریخ اشاعت: 2015-02-18
پچھلی خبریں -

لاہور

تلاش کیجئے

امریکہ بدترین معاشی جھٹکوں کے تلاطم میں گھر گیا، اگست 2009ء میں بحران پر بحران کا سامنا کرنا پڑا،رپورٹ

لاہور(اُردو پوائنٹ اخبارآن لائن۔ 18فروری۔2015ء)امریکہ بدترین معاشی جھٹکوں کے تلاطم میں گھر گیا، اگست 2009ء میں بحران پر بحران کا سامنا کرنا پڑا، کانگریس کے بجٹ آفس نے اگلے 25 سال تک بجٹ میں تیزی سے کمی کی پشین گوئی کی ہے اور وارننگ جاری کی گئی ہے کہ اگر معاشی زوال کی رفتار یہی رہی تو 2023ء تک امریکہ کے وفاقی قرضے کل جی ڈی پی سے 100 فی صد بڑھ جائیں گے اور 2035ء تک بی ڈی پی سے 190 فیصد قرضے امریکی وفاق کو جکڑ لیں گے اور امریکہ دنیا کا بڑا مقروض ملک بن چکا ہے، 2001ء میں بش انتظامیہ تاریخی بجٹ سے اضافی رقم (سرپلس) کے ساتھ اقتدار میں آئی تھی، دو مہنگی جنگوں کو لڑنے کے بعد معیشت کا بیڑہ غرق ہونا شروع ہو گیا، بجٹ میں کمی خطرناک حد تک بڑھ گئی، 2007-09 میں سخت ترین مالی بحران کا سامنا کرنا پڑا جس کو پورا کرنے کیلئے بیل آؤٹ کے ذریعے وسیع پیمانے پر ٹیکس نافذ کئے

اس خبر کی تفصیل پڑھنے کیلئے یہاں پر کلک کیجئے

18-02-2015 :تاریخ اشاعت

:متعلقہ عنوان